شہباز شریف فیملی اثاثے منجمد کیس 3 جون کو وکلا بحث کیلئے طلب

شہباز شریف فیملی اثاثے منجمد کیس 3 جون کو وکلا بحث کیلئے طلب

  

لاہور(نامہ نگار) احتساب عدالت کے جج جوادالحسن نے شہباز شریف فیملی کے اثاثے منجمد کرنے کے کیس میں 3 جون کو فریقین کے وکلاء کو بحث کے لئے طلب کر لیا۔گزشتہ روز کورونا وائرس کے خدشات کے باعث وکلاء عدالت میں پیش نہیں ہوئے،نیب کے پراسیکیوٹر کی جانب سے اثاثہ جات منجمدکئے جانے کی رپورٹ عدالت میں پیش کی جاچکی ہے۔ احتساب عدالت نے شہبازشریف،حمزہ شہباز،نصرت شہباز،تہمینہ درانی اور کمپنیوں کے اثاثے منجمد کرنے کا حکم دیا تھا جس پر حمزہ شہباز،نصرت شہباز سمیت 13 درخواست گزاروں کی جانب سے اثاثہ جات منجمدکئے جانے کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا ہے،درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ اثاثہ جات منجمد کرنے کا حکم درست نہیں،نیب حکام نے حقائق کے برعکس کاروائی کروائی،انکوائری سٹیج پر اثاثہ جات منجمد کروانا غیرقانونی ہے، اثاثہ جات منجمد کرنے کے احکامات کوکالعدم قراردیا جائے

،نیب پراسکیوٹر نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ شہباز شریف فیملیز کے اثاثہ جات قانون کے مطابق منجمد کئے گئے ہیں،عدالت فوری شہباز شریف سمیت دیگر کی درخواستوں کو مسترد کرے۔

مزید :

علاقائی -