ملک میں ڈیزا سٹر فنانسنگ کا مناسب نظام موجود نہیں: ڈاکٹر مرتضی مغل

        ملک میں ڈیزا سٹر فنانسنگ کا مناسب نظام موجود نہیں: ڈاکٹر مرتضی مغل

  

کراچی (اکنامک رپورٹر)ایف پی سی سی آئی مرکزی قائمہ کمیٹی برائے انشورنس کے کنوینر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے کہ انشورنس انڈسٹری نئے حالات کے مطابق ایڈجسٹ کرے تاکہ موجودہ تشویشناک حالات میں عوام کو بہتر انداز میں ریلیف فراہم کیا جا سکے۔انشورنس سیکٹر وباؤں اور آفات کی وجہ سے عوام اور کاروباری برادری کا نقصان بہتر انداز میں بانٹنے کے لئے نئی مصنوعات روشناس کروائے جس میں ریکولیٹر اور انشورنس ایسوسی ایشن آف پاکستان مل کر اپنا کردار ادا کریں۔ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ ایک سو سال کے دوران چند وبائیں آئی تھیں جسکی وجہ سے انشورنس انڈسٹری کے پاس کام کرنے کے لئے مناسب ماڈل موجود نہ تھا مگر اب کرونا وائرس کا ماڈل موجود ہے اس لئے تاخیر نہ کی جائے۔ کرونا وائرس کے بالواسطہ اور بلاواسطہ نقصانات کا اندازہ لگانے کے لئے ایک سٹڈی کی ضرورت ہے تاکہ حکومت ڈیٹا کی روشنی میں بہتر منصوبہ بندی کر سکے اور انشورنس سیکٹر بہتر انداز میں کدمات پیش کر سکے۔انھوں نے کہا کہ ملک میں ایک مناسب ڈیزازسٹر فنانسنگ مکینزم کی کمی محسوس کی جا رہی ہے جس کے لئے اقدامات کئے جائیں۔انشورنس سیکٹر نہ صرف عوام اور کاروباری برادری کے نقصانات میں کمی کا سبب بنتا ہے بلکہ انھیں کاروبار میں مناسب رسک لینے کی حوصلہ افزائی بھی کرتا ہے جس سے معاشی مواقع پیدا ہوتے ہیں جو ملک کی معاشی ترقی کے لئے بہت ضروری ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -