ملتان قرنطینہ پرکرونا حملہ پسپا، 15افراد صحت یاب ہوکر گھروں کوروانہ

  ملتان قرنطینہ پرکرونا حملہ پسپا، 15افراد صحت یاب ہوکر گھروں کوروانہ

  

ملتان، مظفرگڑھ (نمائندہ خصوصی، نامہ نگار)ملتان میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران کورونا میں مبتلا 03 افراد دم توڑ گئے، نشتر ہسپتال میں کورونا کے باعث مجموعی ہلاکتوں کی تعداد 33 ہو گئی، تفصیل کیمطابق نشتر ہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈز میں کورونا کے شبہ میں زیر علاج 03 مریضوں نے دم توڑ دیا جن میں بعد از وفات منگل کی شام موصول ہونے والی رپورٹس میں (بقیہ نمبر8صفحہ6پر)

کورونا کی تصدیق ہو گئی،یوں یکم اپریل سے 4 مئی کے درمیان نشتر ہسپتال میں کورونا کے باعث دم توڑنے والے افراد کی مجموعی تعداد 33 ہو گئی ہے جبکہ کورونا وائرس میں مبتلا 41 اور شبہ میں 26 مریض تاحال زیر علاج ہیں۔ لیبر کمپلیکس قرنطینہ سنٹر میں کوروناوائرس پسپائی اختیار کرنے لگا۔کورونا وائرس کا شکار تبلیغی جماعت کے 15 اراکین صحت یاب ہونے کے بعداپنے گھروں کو روانہ ہو گئے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیوو فوکل پرسن قرنطینہ سنٹر محمد طیب خان نے تبلیغی جماعت کے اراکین کو الوداع کیا۔قرنطینہ مرکز میں کورونا کا شکار 130 تبلیغی جماعت کے اراکین کوآئسولیٹ کیا گیا تھا۔صحت یاب ہونے والے تبلیغی جماعت کے 115 اراکین پہلے ہی گھروں کو جا چکے ہیں۔پازیٹیو رزلٹ کے حامل زائرین بھی کورونا وائرس کو شکست دیکر گھروں کو جا چکے ہیں۔قرنطینہ مرکز میں بیرون ملک سے آنیوالے کورونا وائرس کا شکار 62 مسافر رہائش پذیر ہیں۔ محکمہ صحت ملتان کی جانب سے ضلعی انتظامیہ کو مراسلہ لکھا گیا ہے، جس میں انتظامیہ کو چار مثبت کیسز سامنے آنے کے بعد تین علاقوں ایم ڈی اے چوک، نیو ملتان اور بستی ملوک کے متعلقہ علاقوں کو سیل کرنے کے احکامات دیئے ہیں، جبکہ اسی طرح 14 روز پورے ہونے اور ڈس انفیکٹ کرنے پر تین علاقوں کو ڈٰ سیل کرنے کی درخواست ضلعی انتظامیہ کو کی ہے، سیل کیئے جانے والے علاقوں میں شہریوں کی سکریننگ بھی کی جائے گی ، جبکہ مشتبہ افراد کے کورونا ٹیسٹ بھی کیئے جائیں گے۔ نشتر ہسپتال انتظامیہ کے تمام اختیارات نشتر میڈیکل کالج کے پرنسپل نے اپنے پاس رکھے ہوئے ہیں جس کے باعث کورونا مریضوں کی منیجمنٹ پر سوالیہ نشان لگ چکا ہے،ایک ہفتے کے دوران گائنی وارڈ سولہ اور اٹھارہ میں دو خواتین مریضاوں کو لایا گیا جن کی زچگی کا آپریشن لیبر روم میں کیا گیا تاہم بعد ازاں خواتین کی حالت بگڑنے پر انہیں انتہائی نگہداشت وارڈ منتقل کیا گیا جہاں دونوں خواتین میں کورونا کی تصدیق ہو گئی ہے،تاہم اس حوالے سے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر فاران اسلم،ریفارمرز کے ڈاکٹر میاں عدنان کا کہنا تھا کہ آپریشن تھیٹر میں جس انیستھیزیا مشین سے پازیٹیو کورونا مریضوں کو انیستھیزیا دیا گیا اسی سے لاعلمی میں دیگر مریضوں کو بھی انیستھیزیا دیا جاتا رہا ہو گا انتظامیہ کو اس حوالے سے مربوط حکمت عملی بنانا ہو گی پہلے ہی ہسپتال کے 39 افراد پر مشتمل سٹاف کورونا سے متاثر ہو چکا ہے اب اس نااہلی کے بعد مزید کے متاثر ہونے کا خدشہ پیدا ہو چکا ہے۔نشتر ہسپتال ملتان میں زیرعلاج کورونا وائرس سے متاثرہ ایک اور مظفرگڑھ کا رہائشی جاں بحق ہوگیا تفصیل کے مطابق مظفرگڑھ کے نواحی علاقہ سنانواں کا رھائشی محمد امین کو کرونا وائرس سے متاثر ھونے پر نشتر ھسپتال ملتان میں داخل کرایا گیا تھا جانبر نہ ھو سکا اور گزشتہ شام نشتر ھسپتال میں جاں بحق ھو گیا یاد رھے کہ محمد امین کرونا وائرس سے جاں بحق ھونے والا سنانواں کا دوسرا شخص ھے اس سے قبل سنانواں ھی کے رھائشی عبد الزاق بھی کرونا وائرس میں مبتلا ھونے پر نشتر ھسپتال ملتان میں 10 اپریل کو جاں بحق ھو گئے تھے۔

کرونا حملہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -