این اے 249: الیکشن کمیشن کا بائیکاٹ کے باوجود ووٹوں کی گنتی جاری رکھنے کا اعلان

این اے 249: الیکشن کمیشن کا بائیکاٹ کے باوجود ووٹوں کی گنتی جاری رکھنے کا اعلان
این اے 249: الیکشن کمیشن کا بائیکاٹ کے باوجود ووٹوں کی گنتی جاری رکھنے کا اعلان

  

کراچی (ویب ڈیسک)الیکشن کمیشن نے قومی اسمبلی کی نشست این اے 249 پر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے معاملے پر امیدواروں کے بائیکاٹ کے باوجود گنتی کا عمل جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

نجی ٹٰی وی جیو نیوز کے مطابق الیکشن کمیشن نے تمام جماعتوں کے امیدواروں کو ریٹرننگ افسر کے دفتر پہنچنے کی ہدایت کی تھی جس پر (ن) لیگ کے امیدوار مفتاح اسماعیل اور پی پی امیدوار قادر مندوخیل سمیت 16 دیگر امیدوار الیکشن کمیشن کے دفتر پہنچے۔اس موقع پر صوبائی الیکشن کمیشن نے ڈی جی رینجرز اور آئی جی پولیس سے سکیورٹی کے لیے اضافی نفری طلب کی۔

ووٹوں کی گنتی کا عمل گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی میں قائم ریٹرننگ افسر کے دفتر میں ہورہا تھا  اور  اس دوران ضمنی انتخاب میں حصہ لینے والے تمام امیدوار موجود تھے۔ریٹرننگ افسر کے آفس میں دوبارہ گنتی کے دوران پیپلزپارٹی کے علاوہ تمام جماعتوں نے دوبارہ گنتی کابائیکاٹ کردیا۔تحریک انصاف نے بھی نتائج تسلیم نہ کرتے ہوئے دوباہ گنتی کا بائیکاٹ کردیا اور الیکشن کمیشن سے رجوع کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔امیدواروں نے الزام لگایا ہےکہ جو پولنگ بیگ لائے گئے وہ کھلے ہوئے تھے جس کی وجہ سے دوبارہ گنتی کا بائیکاٹ کررہے ہیں۔امیدواروں کے بائیکاٹ کےبعد الیکشن کمیشن میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا عمل فی الحال روک دیا گیا جسے دوبارہ شرو ع کردیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹی ایل پی سمیت دو آزاد امیدوار بھی گنتی کے عمل میں موجود ہیں۔الیکشن کمیشن نے بائیکاٹ کے معاملے پر کہا ہے کہ فیصلے کے مطابق ڈالے گئے اور مسترد شدہ ووٹ گننے کاحکم دیا گیا تھا، بائیکاٹ کے باوجود جاری فیصلےکے مطابق دوبارہ گنتی کا عمل مکمل کیاجائےگا، امیدواروں کی جانب سے ڈالے گئے تمام ووٹوں کا ڈیٹا دینے کا مطالبہ کیا گیاہے، امیدواروں کو کسی بھی قسم کا انتخابی ڈیٹا فراہم کرنا ممکن نہیں۔واضح رہےکہ 29 اپریل کو این اے 249 کے ضمنی الیکشن میں پیپلزپارٹی کے امیدوار قادر مندوخیل کامیاب ہوئے تھے  اور مفتاح اسماعیل دوسرے نمبر پر رہے تھے جب کہ دونوں کے ووٹوں میں 683 ووٹوں کا فرق ہے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -