ماسکو یوکرین کیساتھ مذاکرات کیلئے تیارہے، پوٹن   

ماسکو یوکرین کیساتھ مذاکرات کیلئے تیارہے، پوٹن   

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ماسکو،واشنگٹن (این این آئی)  روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے کہا ہے کہ ماسکو یوکرین کیساتھ مذاکرات کیلئے تیار ہے،روس پر مغرب کی عائد پابندیوں نے صورتحال کو مزید خراب کردیا ہے۔دوسری جانبچینی سفارتخانہ نے بھی روس یوکرین تنازع پر امریکہ کے چین سے متعلق غلط بیانات کی تردید کردی ہے۔ روس میڈیا کے مطابق روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے فرانسیسی ہم منصب ایمانو یل ماکرون سے ٹیلی فون پرگفتگو کرتے ہوئے کہی۔ صدرپوٹن نے فرانسیسی صدر کیساتھ رابطے میں یوکرینی نمائندوں کے ساتھ مذاکرات کے اصولی طریقوں کا خاکہ پیش کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ کیف کی عدم مطابقت اور غیر سنجیدگی سے کام کرنے کے باوجود روسی فریق اب بھی بات چیت کو تیار ہے۔کریملن نے مزید کہا کہ صدر پوٹن نے ماکرون کو روس کے یوکرین میں خصوصی فوجی آپریشن یعنی حملے کی پیش رفت سے بھی آگاہ کیا۔انہوں نے مغرب سے مطالبہ کیا کہ وہ یوکرین کو ہتھیارمہیاکرنے کا سلسلہ بند کرے۔دوسری جانب امریکہ میں چینی سفارت خانے کے ترجمان نے امریکی محکمہ خارجہ کے اس بیان کی تردید کی کہ نام نہاد چینی حکام اور میڈیا روس کے پروپیگنڈے، سازشی نظریات اور غلط معلومات کو پھیلا رہے ہیں اور فروغ دے رہے ہیں۔ جمعرات کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق ترجمان نے کہا کہ یوکرین کے معاملے پر چین کا موقف منصفانہ، معروضی اور حقائق کے مطابق ہے۔ جب غلط معلومات پھیلانے کی بات آتی ہے تو امریکہ کو اس پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہیے۔ گزشتہ برسوں کے دوران امریکہ نے عراق، افغانستان اور شام میں جنگیں شروع کیں جن میں 3 لا کھ 35 ہزار عام شہری مارے گئے۔ترجمان نے کہا کہ نومبر 2021 میں امریکہ نے بائیولوجیکل ویپن کنونشن کے رکن ممالک کی کانفرنس میں ایک ورکنگ پیپر پیش کیا جس میں اس بات کو تسلیم کیا گیا کہ یوکرین میں امریکہ کی 26 حیاتیاتی لیبارٹریز اور دیگر کوآپریٹو تنصیبات موجود ہیں۔ مارچ 2022 میں، امریکی محکمہ دفاع کی طرف سے جاری کردہ "حقیقت کی دستاویز" سے پتہ چلتا ہے کہ یوکرین میں امریکہ کے 46 "کوآپریٹو تنصیبات" ہیں۔ یہ غلط معلومات نہیں ہیں۔ امریکہ کو اقوام متحدہ اور حیاتیاتی ہتھیاروں کے کنونشن کے فریم ورک کے تحت مشترکہ طور پر معائنہ قبول کرنا چاہئے۔
ولادیمیر پوٹن

مزید :

صفحہ اول -