ڈاکٹروں پر قتل کا جھوٹا مقدمہ درج کرانیوالے مدعی پر 50کروڑ روپے ہرجانے کے دعویٰ

ڈاکٹروں پر قتل کا جھوٹا مقدمہ درج کرانیوالے مدعی پر 50کروڑ روپے ہرجانے کے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(نامہ نگار) سول عدالت نے 8ڈاکٹروں کے خلاف قتل کا جھوٹا مقدمہ درج کرانے والے مدعی سے 50کروڑ 10لاکھ روپے ہرجانے کی وصولی کے لئے دائر درخواست پر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیاہے۔سول عدالت کے جج افضال کھرل نے کیس کی سماعت کی۔ینگ ڈاکٹرز ایسویسی ایشن کے سیکرٹری ڈاکٹر سلمان کاظمی نے عدالت کو آگاہ کیا کہ افضل نامی شہری نے اپنی بیٹی کی ہلاکت کی ذمہ داری میو ہسپتال کے 8ڈاکٹروں پر ڈالتے ہوئے ان کے خلاف قتل کا جھوٹا اور بے بنیاد مقدمہ درج کرا دیا۔انہوں نے کہا کہ جھوٹے مقدمے کے باعث 8ڈاکٹروں کو لمبے عرصے کے لئے جیل میں رہنا پڑا اور عدالتی ٹرائل کا سامنا کرنا پڑا۔انہوں نے بتایا کہ ٹرائل عدالت نے ناکافی گواہوں اور ثبوتوں کی بنیاد پر مقدمے میں نامدز تمام ڈاکٹروں کو باعزت بری کر دیا۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹروں کے خلاف جھوٹا اور بے بنیاد مقدمہ درج کرانے والے شہری محمد افضل کے خلاف 50کروڑ 10لاکھ روپے ہرجانہ کی ڈگری جاری کی جائے۔






تاکہ ڈاکٹروں ،،انکے اہل خانہ اور دوستوں کو پہنچنے والے ذہنی صدمے کی تلافی ممکن ہو سکے۔جس پر عدالت نے فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا،اس کیس کی مزید سماعت 7دسمبر کو ہوگی ۔