شہدا جموں کی بیش بہا قربانیوں کو کسی بھی صورت میں نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ‘علی گیلانی

شہدا جموں کی بیش بہا قربانیوں کو کسی بھی صورت میں نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سری نگر(کے پی آئی) کل جماعتی حریت کانفرنس(گ) کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا کہ 7نومبر کو ٹی آر سی گراونڈ میں منعقد ہونے والا مجوزہ ملین مارچ ان لوگوں کے خلاف ایک واضح پیغام ہوگا جنہوں نے 1947میں جموں میں ہمارے بھائیوں کو موت کے گھاٹ اتار دیاتھا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوجنونیوں اور فرقہ پرست آر ایس ایس، شیوسینا اور دیگر متعصب قوتوں نے جموں کی سرزمین کو بے گناہ مسلمانوں کے خون سے نہلادیاتھا۔گیلانی نے کہا کہ اکتوبر نومبر کے مہینوں میں ان فرقہ پرستوں نے جموں کے مسلمانوں کے خون کے ساتھ ہولی کھیل کر پانچ لاکھ لوگوں کا جو قتل عام کیا یہ تاریخ انسانی کا بدترین اور سیاہ واقعہ ہے۔
گیلانی نے کہا نومبر 47میں بہایا گیا خون بھارتی فوجی قبضے سے آزادی کی جدوجہد کا جلی عنوان ہے اور ان بیش بہا قربانیوں کو کسی بھی صورت میں نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس سرزمین پر لاکھوں مسلمانوں کا خون بہایا گیا اس سرزمین پر غیروں کے جبری تسلط کو کسی بھی صورت میں قبول نہیں کیا جائے گا۔ گیلانی نے کہا جن ہاتھوں نے جموں میں 47میں مسلمانوں کا قتل عام کیا آج پھر وہی فرقہ پرست قوتیں مفتی محمد سعید اور اس قبیل کے دوسرے لوگوں کی مدد سے اب کشمیر کی سیاسی دہلیز پر دستک دے چکی ہیں، تاکہ وہ فوجی اور سیاسی قوت کے بل پر کشمیر میں کھلے عام قتل وغارت گری کا وہ کھیل کھیلیں جو انہوں نے 1947میں جموں میں کھیلا ہے۔گیلانی نے جموں کے مسلمانوں سے مخاطب ہوکر کہا ہمیں اس چیز کا بھرپور احساس اور ادراک ہے کہ آپ لوگ ہمیشہ فرقہ پرستوں کے نرغے میں رہے ہیں، جہاں ہندو فرقہ پرست جنونی آر ایس ایس، شیوسینا، بجرنگ دل اور 28ہزار وی ڈی ممبران موجود ہوں وہاں آپ لوگوں پر کیا گزررہی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنے جموں کے مسلم اور دینی بھائیوں کو یہ یقین دلاتے ہیں ہم آپ لوگوں کو کسی بھی صورت میں تنہا نہیں چھوڑیں گے۔گیلانی نے تمام ائمہ اور خطباحضرات سے اپیل کی کہ وہ اپنے جمعہ خطابات میں مجوزہ ملین مارچکی اہمیت اور افادیت پر روشنی ڈالنے کے ساتھ ساتھ لوگوں کو اس میں شرکت کی تاکید کریں۔ایک بیان میں علی گیلانی نے جامع مسجد سرینگر میں یومِ شہدائے جموں کی یاد میں منعقد ہونے والے اجتماعی پروگرام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے اور اسے کامیاب بنانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ جامع مسجد میں قائدین عوام سے 1947کے شہدائے کی قربانیوں پر روشنی ڈالیں گے اور مجوزہ ملین مارچ کے بارے ضروری ہدایات ان تک پہنچائیں گے۔انہوں نے 6نومبر 1947کو جموں میں لاکھوں مسلمانوں کے قتل عام کو ایک عظیم قومی سانحہ قرار دیتے ہوئے جمعہ کو وادی کے طول ارض میں شہداءِ جموں کی یاد میں تقریبات منعقد کرنے اور ریاستی انتظامیہ اور پولیس کی طرف سے 7نومبر کے مجوزہ ملین مارچ کے سلسلے میں وادی کے اطراف واکناف میں گرفتاریوں، چھاپوں اور خوف ودہشت کا ماحول پیدا کرنے کے خلاف پرامن اور بھرپور احتجاج کرنے کی اپیل کی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -