بجلی کی منافع بخش کمپنیوں کی نجکاری کے خلاف واپڈا ملازمین کا شدید احتجاج

بجلی کی منافع بخش کمپنیوں کی نجکاری کے خلاف واپڈا ملازمین کا شدید احتجاج

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(کامرس رپورٹر)واپڈا ملازمین بجلی کی منافع بخش کمپنیوں کی نجکاری کے خلاف ایک بار پھرلاہور سمیت ملک بھر کی سڑکوں پر آ گئے ہیں۔واضح رہے کہ واپڈا کے ایک لاکھ پچاس ہزار ملازمین نے یک نئی مزاحمتی تحریک کا آغاز کر دیا ۔گزشتہ روز یوم احتجاج منایا گیا۔دفاتر کی تالا بندی کرکے ریلیاں نکالی گئیں اور احتجاجی دھرنے دیئے گئے ۔ تالا بندی کے باعث لیسکو سیمت دیگر ڈسکوز کے ہیڈ آفس اور دیگر ڈویژنل آفس میں افسران داخل نہیں ہو سکے ۔ تفصیلات کے مطابق آل پاکستان واپڈا ہائیڈرو الیکٹرک ورکرز یونین کے مرکزی جنرل سیکرٹری خورشید احمد کی ہدایت پر گزشتہ روز ملک بھر میں یوم احتجاج منایا گیا ۔ صوبائی دارالحکومت میں واپڈا ملازمین نے لاہور پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ ملازمین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے ملازمین نے حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی بھی کی ۔مرکزی جنرل سیکرٹری خورشید احمد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے عالمی مالیاتی اداروں کی ہدایت پرقومی مفاد عامہ کے اداروں کی نج کاری تیز کر دی ہے ۔ پہلے مرحلہ میں آئیسکو ، فیسکو اور لیسکو کی نج کاری کی جا رہی ہے انہوں نے نج کار ی کی بھر پور مذاحمت کرتے ہوئے اس عوام دشمن اقدام کے خلاف شدید احتجاج کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ہم قومی مفاد میں انتہائی اقدام سے بھی گریز نہیں کریں گے ہمارے مطالبات پر کان نہ دھرا تو ملک بھر کی بجلی بند کر دیں گے انہوں نے کہا کہ نج کاری کمیشن نے فیسکو کے 75 فیصد حصص کے فروخت کے لئے دو نومبر کو اخبارات میں اشتہار دے دیا ہے انہوں نے کہا کہ وزیر نج کاری محمد زبیر اور وفاقی وزیر خواجہ آصف نے تا حال اپنے وعدوں کے مطابق وزیر اعظم نے واپڈا یونین کی قیادت کی ملاقات کا اہتمام نہیں کیا ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -