وزیراعظم لبرل پاکستان کی باتیں کر کے دو قومی نظریے کی نفی کر رہے ہیں: سراج الحق

وزیراعظم لبرل پاکستان کی باتیں کر کے دو قومی نظریے کی نفی کر رہے ہیں: سراج ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(خبر نگار خصوصی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہاہے کہ وزیراعظم لبرل پاکستان کی باتیں کر کے دو قومی نظریے کی نفی کر رہے ہیں ۔ آئین میں ملک کا نام اسلامی جمہوریہ پاکستان ہے خود کو دو قومی نظریے کی دعوے دار کہنے والی جماعت کے سربراہ دوقومی نظریے کی دھجیاں اڑا رہے ہیں ۔ ہماری خواہش ہے کہ حکومت اپنی مدت پوری کرے مگر حکمرانوں کو شاید گھر جانے کی جلد ی ہے ان کے رویے سے لگتاہے کہ انتخابات قبل از وقت کرانے کے لیے تحریک بھی اٹھ سکتی ہے ۔ حکمران اپنے منشور پر عمل کرنے میں بری طرح ناکام ہوچکے ہیں ۔ ملک و قوم بحرانوں کا شکار ہے ۔حکمران کسی مسئلے کو سنجیدگی سے نہیں لے رہے ۔ نجکاری کی بیماری نئی نہیں ، ہر حکمران نے مزدوروں کے منہ سے نوالہ چھیننے کی کوشش کی ہے ۔ ملک ادارے بیچنے سے نہیں نئے ادارے بنانے سے ترقی کرتے ہیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں منعقدہ نیشنل لیبر فیڈریشن کی مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر نائب امیر جماعت اسلامی اسد اللہ بھٹو ، نیشنل لیبر فیڈریشن کے صدر رانا محمود علی اور حافظ سلمان بٹ بھی موجود تھے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ وزیراعظم کو آئین سے متصادم باتوں سے پرہیز کرنا چاہیے ۔ قبل ازیں بھی وزیراعظم بھارت اور پاکستان کے کلچر کو ایک اور دونوں ممالک کے درمیان سرحدوں کو غیر ضروری قرار دے چکے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایک طرف بھارت آئے روز لائن آف کنٹرول پر بلاجواز گولہ باری کر کے معصوم پاکستانیوں کو قتل کررہاہے ، اور دوسری طرف بھارت میں اقلیتوں کیخلاف ہندو انتہا پسندی عروج پر ہے ۔ انہوں نے کہاکہ سود کے حق میں پٹیشن اور جمعہ کی چھٹی کا خاتمہ بھی نوازشریف کی ’’ مہربانیاں‘‘ ہیں ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ لیبر تنظیموں کو باہمی اختلافات ختم کر کے ظالم سرمایہ دار اور ظالم جاگیردار کے خلاف متحد ہو جاناچاہیے ۔ استحصالی اور ظالمانہ نظام زیادہ دیر نہیں چل سکتا ۔دریں اثنا ء جمعیت علمائے پاکستان کے صدر ابوالخیر ڈاکٹر محمد زبیر نے جے یو پی کے مرکزی ذمہ داران کے ہمراہ منصورہ میں سینیٹر سراج الحق سے ملاقات کی ۔ ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے ملک کے اسلامی تشخص کے خلاف ہونے والی سازشوں پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ ناموس رسالت ؐ قانون پر سختی سے عملددرآمد کو یقینی بنایا جائے ۔مزید برآں سراج الحق نے مسلم لیگ فنکشنل کے سربراہ پیر صدر الدین پگاڑا کو فون کر کے خیر پور واقعہ کی شدید مذمت کی اور فنکشنل لیگ کے کارکنان کی ہلاکت پر ان سے اظہار تعزیت کیا ۔
سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -