ہمارا مستقبل صحت مند تعلیم یافتہ محفوط خوشحال پاکستان پر منحصر ہے ،ممنون حسین

ہمارا مستقبل صحت مند تعلیم یافتہ محفوط خوشحال پاکستان پر منحصر ہے ،ممنون ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 اسلام آباد(آن لائن)صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ ملک کی آبادی میں تیزی سے اضافہ کے اہم مسئلہ کے ساتھ پاکستان غیر معمولی آبادیاتی تبدیلی سے گذر رہا ہے، ہمارا تابناک مستقبل صحت مند، تعلیم یافتہ، محفوظ اور خوشحال پاکستان پر منحصر ہے جہاں قانون کے تحت ہر شہری کے حقوق کو مکمل تحفظ حاصل ہو۔صدر مملکت نے یہ بات جمعرات کو یہاں کنونشن سینٹر میں قومی آبادی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان آبادی کے لحاظ سے دنیا کا چھٹا بڑا ملک ہے، یہ آبادی ہمارے لئے مواقع بھی فراہم کرتی ہے اور اس میں بہت سے چیلنجز بھی پوشیدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج کا دن اس اعتبار سے بہت تاریخی ہے کہ آبادی کے مسائل پر مکمل اتفاقِ رائے سے ایک قومی بیانیہ دنیا کے سامنے آ رہا ہے جسے پاکستان کے چاروں صوبے ، آزاد کشمیر ، تمام سیاسی جما عتوں اور مذہبی حلقوں کی حمایت حاصل ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ قومی بیانیہ پاکستان کے آبادیاتی مسائل پر قابو پانے اور پسماندہ اندازِ فکر کے خاتمے میں بھی مدد دے گا۔صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان کی موجودہ پالیسیوں اور قومی بیانئے کی بنیاد عوام ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ وڑن 2025ء4 میں عوامی ترقی کو قومی ترقی کا پہلا ستون قرار دیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں پہلی ترجیح کے طور پر خواتین کو خواندہ اور بااختیار بنانے کے لئے سرمایہ کاری پر توجہ دی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پرعزم ہے کہ ترقی کے ثمرات ہر شہری تک پہنچیں۔ اس حوالے سے حکومت آبادی کے حجم کے تعین کے لئے آئندہ برس مردم شماری کرائے گی۔ صدر مملکت نے کہا کہ آبادی کے مسئلہ پر درست طرز عمل اختیار کر کے پاکستان اس مسئلہ پر قابو پانے میں کامیاب اور عالمی برادری سے کئے گئے وعدے ایفا کر سکے گا۔ صدر ممنون حسین نے کہا کہ میں چاہتا ہوں کہ ہمیں 2020ء تک اس معاملے میں 50 فیصد پیشرفت ضرورکر لینی چاہئے۔ صدر نے کہا کہ زیادہ آبادی کم وسائل پر بوجھ میں اضافہ کرتی ہے جس سے ملک کو اپنے شہریوں کی دیکھ بھال میں دقت پیش آتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دینی طبقات بھی اسلام کی تعلیمات کو پیشِ نظر رکھتے ہوئے اس معاملے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔ صدر ممنون حسین نے آبادی کے مسئلہ پر قابو پانے کے لئے قومی قیادت اور صوبوں کی نمائندگی کی حامل ٹاسک فورس کے قیام کی تجویز پیش کی۔ انہوں نے کہا کہ یہ ٹاسک فورس ہر چھ ماہ بعد اجلاس منعقد کر کے ان معاملات میں پیش رفت کا جائزہ لے۔صدر ممنون حسین نے کہا کہ ماضی میں بدعنوانی اور بد انتظامی کی بناء پر پاکستان اپنے آباؤ اجداد کے خواب کو شرمندہ تعبیر نہیں کر سکا۔ انہوں نے عوام پر زور دیا کہ وہ بدعنوانی کے راستے میں حائل ہوں، بدعنوانی کے خاتمے اور ملک کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن کرنے کے لئے حکومت کی کوششوں میں ہاتھ بٹائیں۔

ممنون حسین