بھارتی پبلک سروس کمیشن کے کمرہ امتحان میں پولیس اہلکاروں کا مسلمان طالبہ سے شرمناک سلوک ،پہلے حجاب اُتروایا، پھر دوپٹہ ہٹانے پرزور

بھارتی پبلک سروس کمیشن کے کمرہ امتحان میں پولیس اہلکاروں کا مسلمان طالبہ سے ...
بھارتی پبلک سروس کمیشن کے کمرہ امتحان میں پولیس اہلکاروں کا مسلمان طالبہ سے شرمناک سلوک ،پہلے حجاب اُتروایا، پھر دوپٹہ ہٹانے پرزور

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی ریاست راجستھان کے پبلک سروس کمیشن کے کمرہ امتحان میں ایک مسلمان طالبہ سے سرعام ایسا انتہائی شرمناک سلوک کیا گیا ہے کہ نریندری مودی کے سیکولربھارت کا ایک بار پھر پول کھل گیا ہے ۔ جب پولیٹیکل سائنس میں پوسٹ گریجویٹ صدف نعیم راجستھان پبلک سروس کمیشن کے زیر اہتمام راجستھان ایڈمنسٹریٹو سروسز (آر اے ایس )کا امتحان دینے کے لئے سینٹر پہنچیں اور جوابی پرچہ شروع ہی کیاتو بھارتی پولیس کے مرد اہلکاروں نے اسے حجاب اتارنے کا کہا ۔

بھارتی پولیس کے مطالبے پر مسلمان طالبہ حیران رہ گئی اور پوچھا کہ ایسا کیوں تو انہوں نے کہا کہ ہمیں شک ہے آپ کے پاس کوئی نقل کا سامان نہ ہو ۔ لڑکی نے وقت کے ضیاع سے بچنے کی خاطر ججکتے ہوئے حجاب اتار دیا لیکن اسوقت لڑکی کی حیرت کی انتہا نہ رہی جب پولیس اہلکاروں نے اسے دوپٹہ بھی اتارنے کو کہا ۔یہ شرمناک واقعہ 31اکتوبر کو پیش آیا ہے ۔ لڑکی نے بھارتی پولیس ، پبلک سروس کمیشن کی انتظامیہ کے شرمناک سلوک پر قانونی چورہ جوئی کا فیصلہ کر لیا ہے اور کہا ہے کہ میں اپنے وکلاءسے صلاح مشورہ کر رہی ہوں لہذا جلد کیس دائر کروں گی ۔ اقلیتوں کے لئے نیشنل کمیشن اور نیشنل کمیشن برائے خواتین کو بھی اس شرمناک سلوک کے بارے میں خط لکھوں گی۔
واضح رہے کہ صدف نے آخری ٹیسٹ میں نمایاں پوزیشن حاصل کی تھی تاہم نئی دلی میں منعقدہ حتمی ٹیسٹ میں بھارتی پولیس کے شرمناک سلوک کے باعث وہ امتحان میں شرکت نہ کرسکیں۔مسلمان طالبہ نے مزید کہا کہ خاتون پولیس اہلکار کی بجائے مرد اہلکاروں نے سیٹ سے اٹھا کر حجاب اتارنے پر مجبور کیا اور پھر دوپٹہ اتارنے پر زور دیا ، یہ شرمناک اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور خواتین کی تذلیل ہے ۔ ایک دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ بھارتی پبلک سروس کمیشن کی جانب سے امتحان سے قبل ایک ہدایت نامہ بھی جاری کیا گیا کہ لڑکیاں شلوار قمیض اور ساڑھیاں جبکہ لڑکے آدھے بازوﺅں والی قمیض اور بغیر موزوں کے چپل یا سینڈل پہنچیں گے ۔