مردان اور نوشہرہ پولیس کی رشکئی انٹر چینج پر توڑ پھوڑ اور آگ لگانے کے واقعہ کی تحقیقات شروع

مردان اور نوشہرہ پولیس کی رشکئی انٹر چینج پر توڑ پھوڑ اور آگ لگانے کے واقعہ ...

مردان ( بیورورپورٹ)مردان او رنوشہرہ پولیس نے رشکئی انٹرچینج میں توڑپھوڑ اورآگ لگانے کے واقعہ کی مشترکہ تحقیقات شروع کردیں اور فوٹیج کی مدد سے ملزمان کی نشاندہی کی جارہی ہے جبکہ دھرنے کے دوران ٹریفک میں خلل ڈالنے اور روڈ بلاک کرنے کے الزام میں باقاعدہ مقدمات درج کرلئے گئے ہیں یہ باتیں ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سجاد خان مردان پریس کلب کے دورے کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کے دوران بتائیں پریس کلب کے صدر لطف اللہ لطف اورجنرل سیکرٹری ریاض مایار نے ڈی پی او کو پریس کلب کے حوالے سے بریفنگ دی انہوں نے مختلف دفاتر اور آڈیٹوریم کا معائنہ کیا ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے کہاکہ گذشتہ دنوں رشکئی انٹرچینج پر آگ لگانے اورتوڑ پھوڑ کرنے والوں کی نشاندہی کا عمل جاری ہے واقعہ کا مقدمہ نوشہرہ میں درج کیاگیاہے وقوعہ کے روز ایک جلوس مردان سے اسی مقام پر پہنچاتھا اور فوٹیج سے ان ملزمان کی تصاویر اتاری جارہی ہیں بہت جلد گرفتاریاں ہونگیں انہوں نے تھانہ سٹی کے علاقہ شریف آباد سے پراسرار طورپرلاپتہ ہونے والی کم سن بچی فرشتہ کے حوالے سے بتایاکہ چارسالہ فرشتہ کی پراسرار گمشدگی کیس کی روزانہ بنیاد پر تفتیش جاری ہے اوربہت جلد کم سن بچی کی گمشدگی کا معمہ حل کیاجائے گا ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ضلع میں امن امان کی بحالی کے لئے ترجیحات طے کردیئے گئے ہیں جرائم پیشہ افراد کے خلاف جلد کریک ڈاؤن ہوگا شہریوں سے روابط کو مضبوط کیاجائے گا جبکہ سود خوروں ،قبضہ مافیا ،منشیات اور جوابازوں کے خلاف آہنی ہاتھ سے نمٹاجائے گا ڈی پی او نے کہاکہ امن امان کی بحالی میں مصالحتی کمیٹیوں کا بنیادی رول ہے اوران کو مزید مضبوط اور سہولتیں فراہم کی جائیں گے ڈی پی او سجاد خان کاکہناتھاکہ ٹریفک کے نظام کی بہتری کے لئے اقدامات اٹھائے جائیں گے اوراس سلسلے میں تاجر تنظیموں سے بھی مدد لی جائے گی ا پولیس اور میڈیا کا چولی دامن کا ساتھ ہے ان کی مثبت تنقید کا خیرمقدم کیاجائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر