مینڈک کو چاٹنے سے آدمی کو نشہ ہو جاتا ہے،سائنسدانوں کا انکشاف

مینڈک کو چاٹنے سے آدمی کو نشہ ہو جاتا ہے،سائنسدانوں کا انکشاف

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) مینڈک کو چاٹنے کا خیال ہی اگرچہ انتہائی کراہت آمیز ہے تاہم ایک عام تاثر پایا جاتا ہے کہ مینڈک کو چاٹنے سے آدمی کو نشہ ہو جاتا ہے۔ اب سائنسدانوں نے اس کا ایسا جواب دے دیا ہے کہ آپ کی حیرت کی انتہاء نہ رہے گی۔ میل آن لائن کے مطابق ڈینی ریبائیوٹی اور نک کیروسو نامی سائنسدانوں نے اپنی مشترکہ کتاب میں بتایا ہے کہ ’’واقعی مینڈک کو چاٹنے سے آدمی کو نشہ ہو جاتا ہے تاہم مینڈک کی اقسام سے نشے کی مقدار میں کمی بیشی ہو سکتی ہے۔‘‘سائنسدانوں کے مطابق کین ٹوڈ اور کولوریڈو ریور ٹوڈ کو چاٹنے سے بہت زیادہ نشہ ہوتا ہے۔ ان اقسام کے مینڈک کیمیکل 5میتھاکسی این (Chemical 5-methoxy-N)،این ڈی میتھائل ٹریپٹامین (N-dimethyltryptamine) پیدا کرتے ہیں۔ یہ کیمیکل ان مینڈکوں کو شکاری جانوروں کے لیے بدمزہ بنا دیتا ہے اور وہ ان کا شکار نہیں کرتے تاہم انسانوں میں یہ کیمیکل شدید قسم کے نشے کا سبب بنتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر