طاہر القادری نے ایک معتدل اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے بے تحاشا علمی کام کر رکھا ہے:سیف الرحمان خان

طاہر القادری نے ایک معتدل اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے بے تحاشا علمی کام کر ...

راولپنڈی(سٹی رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک ضلع راولپنڈی کے صدر سیف الرحمان خان نے کہاہے کہ چند سال پہلے ملک سے دہشت گردی اور انتہاء پسندی کے خاتمے کیلئے فوجی و سیاسی قیادت نے نیشنل ایکشن پلان ترتیب دیا تھا ،جس میں پاک فوج نے دہشت گردوں کومسلح جبکہ حکومت نے نظریاتی محاذ پرشکست دینا تھی ، پاک فوج نے اپنی ذمہ داری احسن طریق پر پوری کی جبکہ حکومتی کارکردگی صرف مساجد سے سپیکرز اتارنے تک محدود رہی ، ڈاکٹر طاہر القادری نے ایک معتدل اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے بے تحاشا علمی کام کر رکھا ہے جسے ملکی سطح پر نافذ کرنے کی ضرورت ہے ، ان خیالات کااظہار انہو ں نے گزشتہ روز راول ٹاؤن میں مصطفوی سٹوڈنٹس موومنٹ کے زیراہتمام ایک تربیتی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر سہیل عباسی ،غلام ربانی ،منیر کھوکھر اور معروف ماہر تعلیم عصمت راجہ بھی موجود تھے ۔سیف الرحمان خان نے کہاکہ پاکستان میں بدعنوان اور نااہل حکمرانوں نے فرقہ واریت ،انتہاء پسندی اور دہشت گردی کو روکنے کی بجائے ہمیشہ فروغ دیاتاکہ عوام تقسیم رہیں اور ان کے اقتدار کیلئے کبھی خطرہ نہ بن سکیں،ڈاکٹر طاہر القادری کی علم ،امن اور محبت پر مبنی فکرکو ایک دنیاء نے سراہا ، ایک معتدل اور پرامن معاشرے کے قیام کیلئے آپ نے تصنیف و تالیف کابے تحاشا علمی کام کر رکھا ہے جسے اگر ملکی سطح پر نافذ کر دیاجائے تو سرزمین پاکستان امن کا گہوارہ بن سکتی ہے ۔سیف الرحمان خان نے مزید کہاکہ حالیہ احتجاج میں ن لیگ اور ملک دشمن عناصر کے ملوث ہونے کی خبریں ہیں،مظاہرین کو اس لئے بھی کھلی چھوٹ تھی کہ پولیس افسران کایہ خیال ہے کہ حکمران انہیں مذموم سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کر کے خود صاف بچ نکلتے ہیں جیساکہ سانحہ ماڈل ٹاؤن میں گولی چلانے کا حکم دینے والے بعد میں مکر گئے ،موجودہ حالات میں حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں مابین ہم آہنگی ناگزیرہے ، توڑ پھوڑ کرنے والوں کے خلاف کاروائی سے عوام میں احساس تحفظ بڑھے گا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر