حکومت کی معاشی پالیسیوں نے تاجر سمیت ہر طبقے کو متاثر کیا ہے: حافظ نعیم الرحمن 

حکومت کی معاشی پالیسیوں نے تاجر سمیت ہر طبقے کو متاثر کیا ہے: حافظ نعیم ...

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن سے تاجروں کے ایک وفد نے اسمال ٹریڈرز آرگنائزیشن کراچی کے صدر محمود حامد کی قیادت میں ادارہ نورحق میں ملاقات کی اور حکومتی پالیسیوں  چھوٹے تاجروں کے مسائل و مشکلات اور وفاقی حکومت اور تاجروں کے درمیان ہونے والے معاہدے کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا۔ وفد میں پاکستان آرگنائزیشن آف اسمال ٹریڈرز اینڈ کاٹیج انڈسٹریز کے  نائب صدور، لیاقت علی، نوید احمد، نازالیکٹرانکس مارکیٹ کے کامران اطہر صدیقی، ساجد، لیاقت  آباد مارکیٹ کے بابر بنگش، الیکٹرانکس مارکیٹ کیماڑی کے سجاد خان، اسمال ٹریڈرز فیڈریشن اورنگی ٹاؤن کے عبد اللہ بٹرا، گلشن اقبال کے تاجر رہنما جاوید اختر، عبد الماجد اور دیگر شامل تھے۔ ملاقات میں سیکریٹری کراچی عبد الوہاب اور سیکریٹری اطلاعات زاہد عسکری بھی موجود تھے۔ تاجروں کی جانب سے حافظ نعیم الرحمن کو تیسری مرتبہ جماعت اسلامی کا امیر منتخب ہونے پر ان کے لیے استقامت اور کامیابی کی دعا کی گئی اور اجرک کا تحفہ پیش کیا گیا۔ حافظ نعیم الرحمن نے تاجروں کے مطالبات کے لیے اسمال ٹریڈرز کی جدو جہد اور تاجر حکومت معاہدے کا خیر مقدم کیا اور امید ظاہر کی کہ معاہدے کے بعد ملکی معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے اور معاشی جمود ٹوٹے گا۔ انہوں نے حکومت اور تاجر معاہدے پر تاجر برادری کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ جماعت اسلامی تاجروں کی جدو جہد میں ان کے ساتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی بحران کا اصل محرک حکومت اور آئی ایم ایف کے معاہدے اور اس کے دباؤ کے باعث بننے والی سودی نظام پر مبنی معاشی پالیسیاں ہیں۔ جس کے باعث تاجر سمیت ہر طبقہ بری طرح متاثر ہے۔ سود درسود  وصولی کی وجہ سے مہنگائی اور بے روزگاری میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور ایسا محسوس ہو تا ہے کہ حکومت کو عوامی مسائل سے کوئی سروکار نہیں۔ ملک اور قوم کو آئی ایم ایف کے شکنجے میں مزید جکڑا رہا ہے۔ مسائل کے  حل اور حقیقی تبدیلی کے لیے مسلسل جدو جہد کی ضرورت ہے۔ ملک کے موجودہ سیاسی منظر نامے میں مسئلہ کشمیر پیچھے چلا گیا ہے اور مظلوم و نہتے کشمیریوں کی آواز دب گئی ہے۔ حکومت کی جانب سے بھی کشمیریوں کے حقوق کے تحفظ اور آزادی کے لیے زبانی جمع خرچ سے زیادہ کچھ نہیں کیا جا رہا۔اس موقع پر وفد نے کے الیکٹرک کی شہریوں کے ساتھ مبینہ بلیک ملینگ کے خلاف جماعت اسلامی کی مثالی جدوجہد کو سراہتے ہوئے کہاکہ جماعت اسلامی نے اقتدا رمیں نہ ہونے کے باوجودکراچی کے عوام کا مقدمہ بھرپور انداز میں پیش کیا،وفد نے حافظ نعیم الرحمن سے حالیہ دنوں میں شہر میں اسٹریٹ کرائمز میں غیر معمولی اضافے کے حوالے سے تشویش کا اظہار کیا اور بتایاکہ شہر میں لوٹ مار کی وارداتوں کے باعث عوام بالعموم اور تاجر برادری بالخصوص عدم تحفظ کا شکار ہے۔حافظ نعیم الرحمن نے وفدکو جماعت اسلامی کی جانب سے ان کی کے مسائل کے حل کے حوالے سے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر