گورنمنٹ سول لائنز کالج: سابق پرنسپل کیخلاف کرپشن الزامات، انکوائری رپورٹ تیار

    گورنمنٹ سول لائنز کالج: سابق پرنسپل کیخلاف کرپشن الزامات، انکوائری ...

  



ملتان(سٹاف رپورٹر)گورنمنٹ سول لائنز کالج کے سابق پرنسپل پر کرپشن کے الزامات ثابتہوگئیمعطل کرنے، ایف آئی آر درج کرانے اور ریکوری کرنے کی سفارشات پیش کردی گئیں، تفصیل کے مطابق گورنمنٹ سول لائنز کالج ملتان کے سابق پرنسپل باقر جعفری کے خلاف ہونے والی انکوائری (بقیہ نمبر32صفحہ12پر)

رپورٹ سامنے آگئی، جس میں اس کیس میں ملوث افراد کے خلاف سخت اقدامات کرنے کی سفارشات کی گئیں ہیں، پروفیسر باقر جعفری کے خلاف اگست میں انکوائری شروع ہوئی جو تین ماہ جاری رہی، کمیٹی کے ممبران پروفیسر رانا خلیل احمد، پروفیسر محمد یعقوب، ڈاکٹر فرید شریف، پروفیسر سلیم اعظم اور ایسوسی ایٹ پروفیسر محمد سلیم ڈوگر شامل تھے انکوائری رپورٹ کیمطابق کالج کی کنٹین، سائیکل سٹینڈ کے ٹھیکوں میں غبن کیا گیا۔ ان کا کوئی ریکارڈ نہیں، بولی دینے والوں کے دستخط ہیں اور نہ ہی کالج کمیٹی کی طرف سے کوئی منظوری دی گئی، کالج کی کمپیوٹر لیب کیلئے سکینڈ ہینڈ کمپیوٹر خریدے گئے جبکہ فی کمپیوٹر10ہزارروپے کمیشن لیا گیا، ایسوسی ایٹ ڈگری کے آنیوالے لاکھوں روپے کے فنڈز ہڑپ کرلئے گئے اس کا کوئی ریکارڈ نہیں کہ وہ کہاں خرچ کئے گئے، کالج کی بسوں کی مد میں لاکھوں روپے کا ڈیزل کاغذوں میں خرچ کردیا گیا جبکہ ٹرانسپورٹ فیس وصولی کا کوئی ریکارڈ نہیں رکھا گیااور اس کے فنڈز کابھی کوئی ریکارڈ نہیں ہے، عارضی طلبا کو بھی بڑی تعداد میں داخلہ دیا گیا اور ان سے بھاری فیس وصول کی گئی مگر یہ خزانے میں جمع نہیں کرائی گئی بلکہ جیب میں رکھ لی گئی، گزشتہ دس برسوں میں کالج کے درجنوں درخت کاٹ دئے گئے اور ان کو فروخت کردیاگیا جس کی کوئی باقاعدہ نیلامی نہیں ہوئی۔ کالج کی ٹربائین کے تمام پائپ، مشنیری اور سامان فروخت کردیا جس کا کوئی ریکارڈ موجود نہیں ہے، طلبا کے جم کے آلات بھی جمنیزیم سے اکھاڑ کر فروخت کردئے گئے، مین گیٹ ساتھ سرونٹ کوارٹر گراکر ان کاملبہ پرنسپل کے ذاتی گھر پہنچایا گیا، کاغذات میں ا?ٹھ سکیورٹی گارڈ بھرتی کئے گئے جبک دو گارڈ موجود تھے باقی چھ گارڈزکی تنخواہ بھی نکلوائی جاتی رہی، کالج میں پرائیویٹ اداروں کے ہونے والے امتحانات سے ا?نے والی رقم بھی خورد برد کی گئی ہے جو خزانے میں موجود نہیں ہے، کالج کی چھت سے گزرنے والی تارمیں کنڈا ڈال کراپنے اے سی چلائے گئے، کالج کی مسجد کا فنڈ اور اس کا ریکارڈ بھی غائب ہے، انکوائری کمیٹی سفارش کرتی ہے کہ پروفیسر باقر جعفری کے خلا ف پیڈاایکٹ کے تحت باقاعدہ انکوائری شروع کی جائے، کالج کا بیرونی ا?ڈٹ کرایا جائے، سابق پرنسپل کے خلاف ایف ا?ئی ا?ر درج کرائی اوران سے ریکوری اور ریکارڈ بھی برا?مد کیا جائے، باقر جعفری کاساتھ دینے والے ہیڈ کلرک محمد عتیق، سینئر کلرک محمد شہزاد، جونیئرکلرک مجاہد اقبال کے خلاف فوری ایف ا?ئی ار درج کرائی جائے اور ریکوری کرائی اور پیڈاایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے، انکوائری کمیٹٰی نے تمام سفارشات اور رپورٹ ڈائریکٹوریٹ کالجز ملتان میں جمع کرادی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر