کشمیر پر جنگ دنیا کیلئے خطرنا ک ہو گی، پاکستان اور بھارت کو مذاکرات کی میز پر آنا ہو گا: آسیان ممالک 

      کشمیر پر جنگ دنیا کیلئے خطرنا ک ہو گی، پاکستان اور بھارت کو مذاکرات کی ...

  



اسلام آباد (این این آئی)آسیان ممالک کے پارلیمانی وفد نے کہاہے کہ کشمیر متنازعہ علاقہ ہے، کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد ہونا چاہئے، مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن اور کرفیو فوری ختم ہونا چاہئے،کشمیر میں معمول کے حالات بہت ضروری ہیں،آسیان ممالک سمجھتے ہیں مسئلہ کشمیر کا حل سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے،خدا نہ کرے کشمیر کی وجہ سے کوئی جنگ شروع ہو، یہ دنیا کے لئے خطرناک ہوگا،بھارت اور پاکستان کو مذاکرات کی میز پر آنا ہوگا۔ منگل کو آسیان ممالک کے پارلیمانی وفد نے چیئر مین کشمیر کمیٹی فخر امام کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کترے ہوئے کہاکہ بھارت کے پانچ اگست کے بعد کے اقدامات سے صورتحال میں کشیدگی آئی ہے۔ حاجی محمد عظمی الحمید نے کہاکہ کشمیر متنازعہ علاقہ ہے، کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمد ہونا چاہئے، کشمیر کے تنازعہ کا حل خطے کی سلامتی کے لئے بہت ضروری ہے،مقبوضہ کشمیر میں لاک ڈاؤن اور کرفیو فوری ختم ہونا چاہئے،کشمیری عوام پر مظالم کا فوری خاتمہ ہونا چاہیے، کشمیر میں معمول کے حالات بہت ضروری ہیں۔انہوں نے کہاکہ آسیان ممالک سمجھتے ہیں مسئلہ کشمیر کا حل سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے،کشمیر بارے آسیان ممالک ایم مہم چلائیں گے، ہم خطے میں امن چاہتے ہیں،آسیان ساری صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ فخر امام نے کہاکہ کشمیر کمیٹی کی طرف سے آسیان ممالک کے شکر گزار ہیں، کشمیر اس وقت سلگتا ہوا مسئلہ ہے، سلامتی کونسل کی قراردادیں کشمیر کے تناعہ کو تسلیم کرتی ہیں، کشمیریوں کے حقوق سلب کئے جارہے ہیں، کشمیر کو ایک بڑی جیل میں تبدیل کردیا گیا ہے۔فخر امام نے کہاکہ پاکستان آسیان کا ڈائیلاگ ممبر ہے، مودی حکومت کی طرف سے کشمیر میں فاشزم کا مظاہرہ کے جارہا ہے، کشمیر پر آسیان کی کمیٹی بنانے کے اعلان پر شکرگزار ہیں، کشمیر میں نوجوانوں کو گھروں سے اٹھالیا جاتا ہے۔آسیان وفد نے کہاکہ کشمیر ایک طویل عرصہ سے حل طلب معاملہ ہے، سلامتی کونسل اسے حل کرنے میں ناکام ہوگئی ہے، اقوام متحدہ میں اصلاحات بہت ضروری ہوگئی ہیں، خدا نہ کرے کشمیر کی وجہ سے کوئی جنگ شروع ہو، یہ دنیا کے لئے خطرناک ہوگا۔

آسیان وفد

اسلام آباد(آئی این پی)آسیان اراکین پارلیمنٹ نے مسئلہ کشمیر کو ایک عالمی مسئلہ قرار دیتے ہوئے اس کے حل تک علاقائی و بین الاقوامی فورمز پر کشمیر عوام کی حالت زار کو اجاگر کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے مظلوم کشمیری عوام جنہیں بھارتی حکومت نے انسانی حقوق اور شناخت سے محروم کر رکھاہے کیخلاف بھارتی جارحیت و بربریت کی مذمت کی۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے آسیان ممبر ممالک کے اراکین کے وفد نے پارلیمنٹ ہاؤس میں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے منگل روز ہونے والی ملاقات کیا۔ آسیان ممبر ممالک کا وفد مسئلہ کشمیر اور کشمیر میں جاری بھارتی ظلم و بربریت کے اصل حقائق کو جاننے کے لیے محمد اعظمی عبدالحمید صدر مجلس پروندگان ملائشیا کی سربراہی میں پاکستان کا دورہ کر رہا ہے۔وفد میں ملائیشیا، انڈونیشیا، برونائی دالااسلام کمبوڈیا، تھائی لینڈ، میانمار اور سنگاپور کے اراکین پارلیمنٹ شامل ہیں۔وفد کو کشمیر کی موجودہ صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے بتایا کہ کشمیر کی عوام کو عالمی تاریخ کے بدترین لاک ڈن کا نشانہ بنایا جارہا ہے اور مقبوضہ وادی کے عوام اس وقت بنیادی انسانی حقوق تک سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 93دنوں سے جاری لاک ڈاؤن نے وادی کو جیل میں تبدیل کر دیا ہے اور وادی میں ذرائع مواصلات کے تعطل، اشیا خوردنوش، ادویات اور روزمرہ کی دیگر اشیا ضروری کی عدم فراہمی نے مقبوضہ وادی کے عوام کی زندگیوں کو انتہائی اجیرین بنادیاہے۔ سپیکر نے مزید کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں ہزاروں بیگناہ نوجوانوں حبس بے جاہ میں رکھ کر بہیمانہ تشدد کیا جارہا ہے اور بغیرکسی عدالتی کاروائی قتل کیاجارہا ہے۔

 اسد قیصر 

مزید : صفحہ آخر