پی ایس ایل فائیومیں وائلڈ کارڈپک کا قانون متعارف کروادیا گیا

پی ایس ایل فائیومیں وائلڈ کارڈپک کا قانون متعارف کروادیا گیا

  



لاہور (سپورٹس رپورٹر) پاکستان سپر لیگ کی ٹرانسفر اور ریٹینشن ونڈو باضابطہ طور پر کھول دی گئی۔ایچ بی ایل پی ایس ایل 2020کے ڈرافٹ کے لیے مکمل پک آرڈرترتیب دے دیا گیا، مقررہ طریقہ کار کے مطابق دفاعی چیمپئن کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی پہلی، لاہور قلندرز کی دوسری، ملتان سلطانز تیسری، دومرتبہ کی چیمپئن اسلام آباد یونائیٹڈ چوتھی، پشاور زلمی پانچویں اور کرا چی کنگز کو چھٹی باری ملی ہے، خصوصی طور پر تیار کردہ ماڈل سے باقی ماندہ 17 راونڈز کے لیے پک آرڈر کی ترتیب طے کی گئی۔ڈرافٹ کے لیے پک آرڈر کی ترتیب طے ہونے کے بعد پی ایس ایل کی ٹرانسفر اور ریٹینشن ونڈو باضابطہ طور پر کھول دی گئی، پالیسی کے مطابق رواں سال ہر فرنچائز گذشتہ ایڈیشن میں شامل زیادہ سے زیادہ 8کھلاڑیوں کو اسکواڈ میں برقرار رکھ سکتی ہے۔ گذشتہ سال کی طرح اس سال بھی ہر فرنچائز کے 16رکنی اسکواڈ میں 5غیر ملکی کھلاڑی شامل ہوں گے۔رواں سال فرنچائززکو سپلمنٹری کیٹیگری میں شامل 2کھلاڑیوں میں سے ایک غیرملکی کرکٹر کو چننے کا اختیار دے دیا گیا ہے۔کوئی فرنچائز چاہے تو اس سے فائدہ اٹھاسکتی ہے، تاہم پلئینگ الیون میں کم ازکم 3اور زیادہ سے زیادہ 4غیرملکی کھلاڑیوں کو شامل کرنے کی اجازت ہوگی۔قانون کے مطابق ایچ بی ایل پی ایس ایل ڈرافٹ میں ڈائمنڈ اور گولڈ راونڈ کے دوران فرنچائز چاہے تو کسی ایک کھلاڑی کا انتخاب اس کی مقررہ کیٹیگری سے اوپر لے جاکر بھی کرسکتی ہے، بورڈ آفیشل وسیم خان نے کہا کہ ایچ بی ایل پی ایس ایل کے مداحوں کے لیے آئندہ چند روز بھی بہت اہم ہیں کیونکہ اس دوران ہرفرنچائز اپنے اسکواڈ میں شامل کھلاڑیوں کی ری ٹینشن اور ٹریڈ کا اعلان کرے گی، ایونٹ کا آغاز آئندہ سال فروری میں ہوگا۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی