ایڈورڈز کالج کے طلباء کا احتجاجی کیمپ دوسرے روز بھی جاری

    ایڈورڈز کالج کے طلباء کا احتجاجی کیمپ دوسرے روز بھی جاری

  



پشاور(سٹی رپورٹر)  ایڈورڈزکالج  کے طلبہ کا پرنسپل ایڈورڈز کالج کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی  کیمپ دوسرے روز بھی جاری رہا۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جس پر انکے مطالبات درج تھے۔ احتجاجی کیمپ کی قیادت  احمد شاہ،سلطان احمد اور دیگر کالج کے طلبہ نے کی جبکہ نارتھرن  ڈائیوسس کے جیمی میتھیو اور اقلییتی برادری کے اے ایم این اے جمشید ٹومس نے بھی احتجاجی کیمپ کا دورکیا۔اس موقع پر مطاہرین کا کہنا تھا کہ ایڈورڈز کالج میں پرنسپل کی وجہ سے ادارے کے حالات خراب ہو چکے ہے جس سے کالج کی ساکھ بھی متاثر ہوئی ہے اور طلبہ کا قیمتی وقت ضائع ہو رہا ہے جبکہ پرنسپل پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کے باوجود عہدے پر برجمان ہے اور کالج کے امور میں مداخلت کر رہے ہے  انہوں نے کہا کہ پرنسپل ایڈورڈز کالج مذہب کی اڑ میں منفی پروپیگنڈہ کر رہا ہے جسکی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔انہوں نے گورنر خیبرپختونخوا اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کرتے ہوئے کالج کے پرنسپل کو فوری عہدے سے ہٹایا جائے بصورت دیگرپشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی کیمپ جاری رکھیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر