اللہ کی یاد سے محرومی آخرت کی تباہی کا سبب ہے:امیر محمداکرم اعوان

اللہ کی یاد سے محرومی آخرت کی تباہی کا سبب ہے:امیر محمداکرم اعوان

لاہور(پ ر)کچھ لوگ آخرت کو بھول کر صرف دنیا میں کھو جاتے ہیں۔جن کے دل اللہ کی یاد سے محروم ہو گئے آخرت کی تباہی کا سبب بن گئے۔ایسے لوگ کھلی گمراہی میں ہیں۔ان خیالات کا اظہار شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ مولانا امیر محمد اکرم اعوان نے احباب سے خطاب کرتے ہو ئے کیا ۔انہوں نے مزید کہا کہ لوگ مادی حیات میں اتنے کھو گئے کہ دل پتھر بن گئے اگر دل میں احساسیت نہیں رہی کہ کلام الٰہی محسو س کر سکے احساس وادراک ہی نہیں رہا،اگر کلام الٰہی کی کیفیت وارد نہیں ہوتی تو ہم پتھر ہو چکے ہیں۔جب انسان پید ا ہوتا ہے تو مادی حواس خمسہ کے ساتھ پیدا ہوتا ہے۔

اس لیے اس مادی دنیا کو جلد سمجھ جاتا ہے۔اور اس دنیا کی لذت اور تکلیف سمجھ جاتا ہے۔لیکن انسان جسم اور روح کا مرکب ہے انسان ساری عمر مادی تگ ودو میں لگا رہتا ہے چاہیے تو یہ تھا جس طرح مادی چیزیں دریافت کیں اسی طرح روحانی بھی کرتا۔اچھا کام روح میں لذت پیدا کرتا ہے جبکہ برا کام روح کو نقصان پہنچاتا ہے۔اللہ کریم نے احسان فرمایا کہ نبی ﷺ مبعوث فرمائے اپنا ذاتی کلام انسانیت کی اصلاح کے لیے اُتارا۔جس چیز سے کام لینا چھوڑ دیں وہ ختم ہو جاتی ہے ضائع ہو جاتی ہے۔

اگر روح کی طرف توجہ نہیں دیں گے وہ کمزور ہو کر آخر کار مر جائے گی۔ انھوں نے مزید کہا کہ جو بھی حلال جانور اللہ کے نام پر ذبح ہو جاتاہے اُس نے اپنا مقصد حیات پا لیا۔ایک جانور پر ہم سواری کرتے ہیں وہ ہے ہی سواری کے لیے وہ بھی اپنا مقصد حیات پا گیا۔اللہ کریم نے ساری مخلوق کو انسان کے ساتھ منسو ب کیا ہے۔ جس کے اندر یہ تمنا پیدا ہو جائے کہ میرے اندر اتنی بڑی کائنات بس رہی ہے اسے آسمانوں اور زمینوں پر غور کرے کہ یہ سب کس نے پیدا کیا یہ سب بے نتیجہ نہیں ان سب کا کوئی نتیجہ ضرور ہو گا پھر اُس کی تلاش کرے اسے انابت کہتے ہیں اللہ کریم پھر راستے آسان کر دیتے ہیں اللہ کریم اپنی معرفت نصیب فرمائے۔عمل کی توفیق عطا فرمائے۔ آخر میں انہوں نے ملکی سلامتی اور بقا کی اجتماعی دعا فرمائی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4