ہائیکورٹ کاتوہین عدالت کی درخواست کا جواب نہ دینے پر چیف سیکرٹری پر اظہار برہمی

ہائیکورٹ کاتوہین عدالت کی درخواست کا جواب نہ دینے پر چیف سیکرٹری پر اظہار ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کا توہین عدالت کی درخواست کا جواب داخل نہ کرنے پر چیف سیکرٹری پر اظہار برہمی کرتے ہوئے قرار دیا کہ صوبہ کے اعلیٰ ترین افسر کی اس رویہ کو پسندیدگی کی نظر سے نہیں دیکھا جاسکتا ۔مسٹرجسٹس فیصل زمان خان نے محکمہ آبپاشی کے 22ملازمین کی درخواستوں پر سماعت کی۔ درخواست گزاروں کی جانب سے ملک اویس خالد ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ ان ملازمین کو محکمہ آبپاشی میں کنٹریکٹ پر بھرتی کیا گیا۔ حکومتی پالیسی کے مطابق انہیں مستقل نہیں کیاگیا۔ مستقل نہ کرنے پر انہوں نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا جس پر عدالت نے یکم اپریل 2015ء کو چیف سیکرٹری کو ان کی درخواستوں پر ایک ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دیا۔ عدالتی حکم کے باوجود چیف سیکرٹری نے فیصلہ نہیں کیا جو توہین عدالت کے زمرے میں آتا ہے۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ حکم عدولی کرنے پر چیف سیکرٹری خضر حیات گوندل کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے۔ سرکاری وکیل نے عدالت سے جواب دینے کے لئے مہلت کی استدعا کی توہین عدالت درخواست میں جواب داخل نہ کرانے پر چیف سیکرٹری خضر حیات گوندل پر عدالت نے اظہار برہمی کرتے ہوئے 26اکتوبر تک جواب طلب کرلیاہے۔

مزید : صفحہ آخر