اسکولوں کی سکیورٹی ،سندھ ہائی کورٹ کا حکومتی رپورٹ پر عدم اطمینان

اسکولوں کی سکیورٹی ،سندھ ہائی کورٹ کا حکومتی رپورٹ پر عدم اطمینان

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ میں صوبہ سندھ کے اسکولوں کی سیکورٹی کا معاملہ ، عدالت نے حکومتی رپورٹ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے سماعت 20 اکتوبر تک ملتوی کردی سندھ ہائیکورٹ میں این جی او کی جانب سے درخواست دائر کی گئی تھی کہ اے پی ایس حملہ کے بعد بھی صوبے میں اسکولوں میں سیکورٹی کے مناست اقدامات نہیں ہیں، درخواست کی سماعت سندھ ہائیکورٹ کے جسٹس سجاد علی شاہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے کی، عدالتی حکم پر اسپیشل سیکریٹری تعلیم عدالت میں پیش ہوئے جس پر انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اسکولوں میں سیکورٹی کے انتظامات کیلئے 7636 ملین روپے کی رقم مختص کی گئی ہے جبکہ 18 ڈسٹرکٹ کی سروے رپورٹس بھی آچکی ہے، عدالت نے سرکاری رپورٹ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ٹھوس اقدامات نہ کیے گئے تو آپ کو شوکاز نوٹس دے کر معطل کردیا جائے گا، پرائیویٹ اسکولوں نے سیکورٹی کے نام بھاری فیس وصول کر رہے ہیں اور اضافی چارجز لگا دیے گئے ہیں لیکن سیکورٹی کے انتظامات نہیں کیے گئے ہیں، عدالت نے تفصیلی رپورٹ 8 اکتوبر تک طلب کرتے ہوئے سماعت 30 اکتوبر تک ملتوی کردی۔

مزید : کراچی صفحہ اول