پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ: روشن خوابوں کی تعبیر

پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ: روشن خوابوں کی تعبیر
پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ: روشن خوابوں کی تعبیر

  

قوموں کا تشخص ان کے تعلیم یافتہ ، باشعور اور مہذب معاشروں کی تشکیل میں ہی مضمر ہے، جبکہ ایسا معاشرہ مثبت رجحانات اورتعلیم دوست اقدامات کو فروغ دیئے بغیر ممکن نہیں۔ مملکتِ خداداد پاکستان، جس کی بنیاد اسلامی اصولوں پر رکھی گئی تھی، بھائی چارے، رواداری، قومی یکجہتی اور انسانیت پرمشتمل ایک ایسے معاشرے کا علمبردار ہے، جس میں مُلک کی سب اکائیوں کو تعلیم، صحت اور روزگار سمیت تمام بنیادی ضروریات زندگی مساوی بنیادوں پر حاصل ہوں،تاہم گزشتہ کچھ عرصے سے ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت ہمارے معاشرے میں ہر تعمیری عمل اورمثبت اقدام کے خلاف محض تنقید برائے تنقید اور منفی رویوں کو پروان چڑھایااور قوم کے مزاج کو بحیثیت مجموعی زوال اورمایوسی کی طرف مائل کیا جا رہا ہے۔یوں ظاہر کیا جا رہا ہے جیسے یہ مُلک خدانخواستہ صفحہ ہستی سے مٹنے جا رہا ہے، لیکن انشا اللہ دشمن کے یہ عزائم ملیامیٹ ہوں گے۔ مایوسی اور ناامیدی کے اندھیرے پھیلانے والوں کو شکست فاش ہو گی، کیونکہ یہ قوم اپنے تمام مذہبی ، گروہی، سیاسی و ذاتی اختلافات کو پس پشت ڈال کر اِس مُلک کی طرف میلی آنکھ سے دیکھنے والوں کے آگے آہنی دیوار ثابت ہونا جانتی ہے۔ہمارا پیارا وطن پاکستان ہر طرح کے وسائل سے مالا مال ہے۔ ہمارا نوجوان انتہائی ذہین، باصلاحیت اور پُرجوش ہے۔ دُنیا کے کسی بھی مُلک میں میڈیکل، انجینئرنگ، سائنس و ٹیکنالوجی ہو یا آرٹ اور فنون لطیفہ کی دُنیا، ہر شعبے میں پاکستان کا یہ سپوت اپنی بے پناہ صلاحیتوں، انتھک محنت اور لگن کے بل بوتے پر مُلک وقوم کا نام روشن کرتا نظر آتا ہے۔ یہ وہ نوجوان ہیں، جو ہمارے ماتھے کا جھومر ہیں۔ یہ وہ روشن چراغ ہیں، جو مُلک کے مثبت تشخص کے امین اور امن کے سفیر ہیں۔ ضرورت صرف ان باصلاحیت نوجوانوں کو درست وقت میں درست سمت کی طرف رہنمائی فراہم کرنے اور تعلیم و ترقی کے اِس سفر میں ان کا ہاتھ تھامنے کی ہے۔

حکومت پنجاب نے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی قیادت میں ایسے ہی دمکتے ہیروں کو تراشنے اور ان کی صلاحیتوں کو جلا بخشتے کا بیڑا اٹھایا اور 7سال قبل نہ صرف پاکستان، بلکہ دُنیا کی تاریخ کے سب سے بڑے تعلیمی فنڈ کے امدادی پروگرام ’’پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ‘‘ کا آغاز کیا۔ فلاحی ادارے ’’اخوت‘‘ کے سربراہ اس فنڈ کے وائس پرنسپل اور روح رواں ہیں،جنہوں نے دن رات ایک کر کے اِس پروگرام کو کامیاب بنایا۔ برطانیہ کا بین الاقوامی ترقی کا ادارہ ’’ڈیفڈ‘‘ بھی اِس پروگرام میں حکومت پنجاب کو تعاون فراہم کر رہا ہے، کیونکہ یہ تعلیمی فنڈ شفافیت اور میرٹ کی پالیسی پر گامزن اور کسی بھی سیاسی مداخلت سے قطعی پاک ہے۔اِس تعلیمی فنڈ کے ذریعے نہ صرف صوبہ پنجاب،بلکہ گلگت بلتستان، فاٹا اور آزاد کشمیر سمیت مُلک بھر کے تمام صوبوں کے سینکڑوں ہونہار اور باصلاحیت، لیکن نادار بچوں اور بچیوں کو اُن کے تعلیمی سلسلے کو جاری رکھنے کے لئے وظائف کی فراہمی کا سلسلہ شروع کیا گیا، جو خدا کے فضل و کرم سے بے حد کامیاب رہا اور 7سال قبل لگایا گیا یہ پودا آج تن آور درخت بن چکا ہے، جس کے ذریعے مُلک بھرکے نوجوان طلبہ طالبات اعلیٰ تعلیم کا خواب پورا کر رہے ہیں۔ مزید یہ کہ اس اقدام سے قومی یکجہتی کو فروغ حاصل ہو رہا ہے، کیونکہ اس تعلیمی فنڈ سے نہ صرف پنجاب، بلکہ پاکستان بھر کی تمام اکائیاں ترقی کے خواب کی تعبیر حاصل کر رہی ہیں۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے ذریعے ایک لاکھ غریب خاندانوں کے ذہین بچوں اور بچیوں کو میرٹ کی بنیاد پر وظائف دیئے جا چکے ہیں اور اگلے برس مزید ایک لاکھ مستحق اور ذہین طلبہ و طالبات کو تعلیمی وظائف دیئے جائیں گے، جس کے لئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے تعلیمی فنڈ کا سالانہ حجم 2ارب روپے سے بڑھا کر 4ارب روپے کر دیا ہے۔ بلاشبہ یہ اقدام محمد شہباز شریف کے تعلیم دوست وژن کا آئینہ دار ہے۔

پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے تحت اب تک 5ارب 61کروڑ روپے انتہائی ذہین اور قابل بچوں اور بچیوں میں تقسیم کئے جا چکے ہیں۔ اس فنڈ سے مستفید ہونے والے پیف سکالرز غریب اور بے وسیلہ گھرانوں کے چشم و چراغ ہیں جو اس تعلیمی پروگرام کے تعاون سے قائد ؒ اور اقبال کے پاکستان کے لئے دیکھے گئے خواب کی تعبیر حاصل کرنے کے لئے کوشاں ہیں۔ آج پیف پاکستان کا سب سے بڑا فنڈ بن چکا ہے، جس نے مُلک بھر میں تعلیم کے میدان میں انقلاب برپا کر دیا ہے۔ فروغ تعلیم کے حوالے سے حکومت پنجاب کو وائس چیئرمین پیف ڈاکٹر امجد ثاقب کی گرانقدر خدمات حاصل ہیں، جبکہ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی متحرک قیادت اور تعلیم دوست پالیسیوں کے وژن کے تحت پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ ترقی کی منازل تیزی سے طے کر رہا ہے، جس کے ذریعے آج غریب خاندانوں کے بچوں کے لئے اعلیٰ تعلیم کا حصول یقینی ہو گیا ہے۔ آج ایک رنگ ساز کا بیٹا ڈاکٹر، محنت کش کا بیٹا انجینئر، سبزی منڈی میں محنت مزدوری کرنے والا نوجوان امریکی ادارے میں ڈائریکٹر، خاکروب کا بیٹا الیکٹریکل انجینئر اور ایک غریب بیوہ کی بیٹی فاسٹ یونیورسٹی سے ماسٹرز کر رہی ہے۔ یہ صرف چند مثالیں ہیں۔ پیف سے مستقید ہو کر اپنا مستقبل تابناک بنانے والے طلبہ و طالبات کی تعداد سینکڑوں میں ہے۔نہ صرف صوبہ پنجاب، بلکہ فاٹا اور مہمند ایجنسی کے بچے اور بچیاں بھی اس ایجوکیشنل فنڈ سے مستفید ہو رہے ہیں۔

ضرور پڑھیں: سوچ کے رنگ

وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے تحت فاٹا سے تعلق رکھنے والے ذہین طلبہ و طالبات کو میرٹ کی بنیاد پر ایم ایس سی کی تعلیم کے لئے سکالر شپ دینے کا اعلان بھی کیا ہے، کیونکہ محمد شہباز شریف کے بقول قوم کے بچوں اور بچیوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے تعلیمی فنڈ کا یہ پروگرام درحقیقت مُلک کے روشن مستقبل کے لئے ایک سود مند سرماریہ کاری ہے، جس سے یہ نوجوان اعلیٰ تعلیم کے ذریعے اپنے قدموں پر کھڑے ہو کر نہ صرف اپنے اور اپنے خاندان کا معیار زندگی بہتر بنائیں گے،بلکہ پاکستان کی تعمیر و ترقی اور خوشحالی میں اہم کردار بھی ادا کریں گے۔ آج ان ہونہار نوجوان بچوں اور بچیوں کی کامیابی سے مُلک کا مثبت تشخص اقوام عالم میں اُجاگر ہوا ہے۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کو عالمی سطح پر بھی بے حد پذیرائی حاصل ہوئی ہے، کیونکہ یہ دنیابھر میں اپنی نوعیت کا انفرادی فلاحی پروگرام ہے۔ضرورت اس بات کی ہے کہ ایسے فلاحی پروگراموں پر تنقید کی بجائے ان کی بھرپور حوصلہ افزائی کی جائے تاکہ معاشرے میں منفی رویوں کی حوصلہ شکنی ہو سکے۔ تنقید برائے تعمیر اچھی بات ہے، تاہم صرف سیاست چمکانے اور ذاتی مفادات کے لئے بے جا تنقید کے ذریعے قوم کے ہونہار بچوں کے مستقبل سے کھیلنا یقیناًزیادتی ہے۔ اس بات کو بھی مدنظر رکھا جائے کہ یہی وہ حکومت ہے، جس نے اول روز سے تعلیم کے فروغ اور نوجوانوں کی ترقی کے لئے بے شمار منصوبے کامیابی سے شروع کئے،جن میں لیپ ٹاپس کی تقسیم، نئے تعلیمی اداروں کا قیام، سکولوں میں کمپیوٹر اور آئی ٹی لیبارٹریز کا قیام، پوزیشن ہولڈر طلبہ و طالبات کے لئے کروڑ روپے کے تعلیمی وظائف ، غیر ملکی تعلیمی دورے ، اساتذہ کی حوصلہ افزائی کے لئے انعامات، آئی ٹی یونیورسٹی کا قیام، ایجوکیٹرز و اساتذہ کی میرٹ پر بھرتیاں اور خود روزگار سکیم جیسے اقدامات شامل ہیں۔

امید واثق ہے کہ تعلیمی وظائف کے ذریعے اپنے خوابوں کی تعبیر حاصل کرنے والے ان طلبہ و طالبات کی ترقی کا یہ کارواں مزید آگے بڑھے گا اور اپنی منزل کو حاصل کر کے مُلک و قوم کے روشن مستقبل کی نوید بنے گا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کے تعلیم دوست اقدامات کی بدولت پنجاب میں تعلیمی شعبے میں نمایاں بہتری آئی ہے، جس کا اعتراف ان کے مخالفین بھی برملا کرتے ہیں۔ برطانیہ سمیت کئی غیر ممالک حکومت پنجاب کی ان تعلیم دوست پالیسیوں کا اعتراف کرتے ہیں۔ برطانیہ کے بین الاقوامی ترقی کے ادارے ڈیفڈ کی نمائندہ مسز جوڈتھ ہربرٹسن بھی حکومت پنجاب کی فروغ تعلیم کے لئے کاوشوں کو سراہ چکی ہیں۔مستحق اور باصلاحیت طلبہ و طالبات کی بھرپور حوصلہ افزائی معاشرے کے ہر فرد کی ذمہ داری ہے۔تعمیر و ترقی اور خوشحالی کا خواب نوجوانوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کئے بغیر ممکن نہیں۔امید کی جاتی ہے کہ دیگر صوبے بھی وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی تقلید کرتے ہوئے ہونہار اور مستحق طلبہ و طالبات کے لئے ایسے ہی فلاحی پروگرام شروع کریں گے تاکہ پورے مُلک کے بچے اور بچیاں تعلیم حاصل کر کے مُلک کی ترقی اور خوشحالی میں کردار ادا کرسکیں۔ *

مزید : کالم