بلدیاتی انتخابات کی راہ رکاوٹیں نہیں ڈالی جا رہی ہیں ،نثار کھوڑو

بلدیاتی انتخابات کی راہ رکاوٹیں نہیں ڈالی جا رہی ہیں ،نثار کھوڑو

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ کے سینئر وزیر اطلاعات نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کارکنان کو بلدیاتی انتخابات میں پارٹی کو سرخرو کرنے کی ہدایت کی ہے۔ بلدیاتی انتخابات میں وفاقی حکومت ٹھٹھہ سمیت سندھ کے مختلف علاقوں میں واپڈا کو استعمال کررہی ہے اور عوام کی جانب سے بل ادا کرنے کے باوجود گاؤں کے گاؤں بجلی سے محروم کئے جارہے ہیں اور عوام پر دباؤ ڈالا جارہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں ووٹ دیں تو بجلی فراہم کی جائے گی۔ مگر مخالفین کو بتانا چاہتے ہیں کہ انہیں نہ ووٹ واپڈا کی زیادتیوں کی وجہ سے ملیں گے اور نہ ہی واپڈا کو استعمال کر کے ووٹ لے سکتے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے جیسے وزیراعظم کسان پیکیج کو انتخابات پر اثر انداز ہونے کی وجہ سے مسترد کیا اس طرح سندھ میں بھی واپڈا کی زیادتیوں کا نوٹس لیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی صدارت میں ٹھٹھہ اور سجاول اضلاع کے پارٹی رہنماؤں کے اجلاس کے بعد پی پی پی میڈیا سیل سندھ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کی جانب سے الیکشن کمیشن کی راہ میں کوئی بھی رکاوٹیں نہیں ڈالی جارہی تاہم اگر کسی اور کی جانب سے رکاوٹیں ڈالی گئی تو سندھ بھرپور احتجاج کریگی اور کسی کو الیکشن کمیشن کی راہ میں رکاوٹیں ڈالنے نہیں دینگے۔ انہوں نے کہا کہ سول حکومتوں پر بلدیاتی انتخابات نہ کروانے کا صرف الزام ہے۔ سندھ حکومت تو جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کروانے کو تیار ہے اور سندھ واحد صوبہ ہے جس نے بلدیاتی قانون بنایا تاہم دیگر جماعتوں نے عدالت میں جا کر انتخابات میں رخنہ ڈالا۔ انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات کا شیڈول آنے اور کاغذات نامزدگی بھرے جانے کے دوران عدالت کی جانب سے الیکشن کمیشن کو نئے حلقہ بندیاں کرانے کا فیصلہ انتخابات میں رکاوٹ ہے اس لئے عدالت کے اس فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا اور امید ہے کہ سپریم کورٹ بلدیاتی انتخابات ضائع نہیں ہونے دیگی۔ انہوں نے کہا کہ جن جماعتوں کو بلدیاتی انتخابات میں اپنی شکست نظر آرہی ہے وہ پیپلز پارٹی پر لین دین کرکے امیدواروں کو دستبردار کروانے کے الزامات عائد کررہی ہیں۔ مخالفین بھلے الزام عائد کرتے رہیں پیپلز پارٹی عوام کے ووٹوں سے بلدیاتی انتخابات میں کامیابی حاصل کریگی۔ انہوں نے کہا کہ عمر کوٹ میں ایک ایم این اے نند لال مالی کی جانب سے آر او آفس میں غنڈہ گردی کر کے توڑ پھوڑ کی گئی جس کا آر او کی جانب سے مقدمہ بھی دائر کیا گیا ہے مگر تاحال نند لال مالی کو نااہل قرار نہیں دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی ایم پی اے کی امیدوار وحیدہ شاہ کو صرف بدتمیزی کرنے پر نااہل قرار دیا گیا تھا تو ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ نند لال مالی کو بھی نااہل قرار دیا جائے۔ ایک سوال کے جواب میں نثار احمد کھوڑو نے کہا کہ آمر جنرل پرویز مشرف شہید بینظیر بھٹو قتل کیس سے الگ نہیں ہوسکتے ۔ 18اکتوبر سانحہ کی جائے واردات کو ایک گھنٹے کے اندر دھو کر صاف کیا گیا جبکہ 27دسمبر کے واقعہ کی جائے واردات کو بھی ایسے ہی صاف کیا گیا جس پر پرویز مشرف نے معافی مانگی کہ انہیں اس کا علم نہیں اس لئے یہ بھی تحقیقات ہونی چاہئے اور بینظیر بھٹو قتل کیس میں مارگ سیگل کی گوائی پر عدالت کو فیصلہ دینے کا حق ہے اور اب بال عدالت کے کورٹ میں ہیں اور امید ہے کہ اب عدالت بینظیر بھٹو قتل کیس میں انصاف پر مبنی فیصلہ سنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں محترم عدالت تو بھٹو ریفرنس کیس میں بھی خاموش رہی اور اس وقت صدر آصف علی زرداری نے بھٹو ریفرنس کیس سننے کے لئے عدالت کو بھیجا ، ارسلان کو بچانے کے لئے تو فیصلہ دیا گیا مگر بھٹو ریفرنس کیس پر کوئی فیصلہ نہیں آیا ، اب عدالت سے بینظیر بھٹو قتل کیس میں بہتر فیصلے کی امید ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارا پہلے سے ہی یہی موقف ہے کہ ایم کیو ایم کو پہلے ہی استعفیٰ نہیں دینا چاہئے تھا کیونکہ استعفیٰ احتجاجی طور پر نہیں رضاکارانہ دیا جاتا ہے، اس لئے سینیٹ چیئرمین نے اپنی رولنگ میں ایم کیو ایم کے استعفیٰ منظور کرنے سے انکار کیا ہے رہی بات سندھ کی تو اس کے متعلق اسپیکر ہی کوئی فیصلہ کر سکتے ہیں تاہم ایم کیو ایم کو اگر کوئی خدشات ہیں تو اس پر بات چیت کی جاسکتی ہے۔

مزید : کراچی صفحہ آخر