پنجاب ایجوکیشن انڈومنٹ فنڈ

پنجاب ایجوکیشن انڈومنٹ فنڈ
پنجاب ایجوکیشن انڈومنٹ فنڈ

  

پاکستان میں تعلیم کمرشل ہو چکی ہے۔ قیام پاکستان سے لے کر آج تک مُلک میں یکسا ں نظام تعلیم کا نفاذ نہیں کیا جا سکا اور طبقاتی تعلیمی نظام کا خاتمہ بھی نہیں ہوا۔ تاریخ گواہ ہے کہ سائنس و ٹیکنالوجی پر عبور حاصل کرنے والی اقوام نے دُنیا پر حکمرانی کی ہے ۔ہمارے مُلک میں تعلیم غریب اور نادار طلبہ کی پہنچ سے باہر ہے۔ امراء کے بچے ایچی سن ،بیکن ہاؤس ،ایجوکیٹر ،لمز،کیڈٹ سکولوں اور کالجوں کے علاوہ امریکہ اور یورپ کے مہنگے کالجوں اور یونیورسٹیوں میں پڑھتے ہیں ۔عام آدمی کے ہونہار اور ذہین بچے ان اداروں میں تعلیم حاصل کرنے کا سوچ بھی نہیں سکتے۔ پاکستان میں مالی استعداد نہ رکھنے والے افراد کے بچوں پر مہنگے تعلیمی اداروں اور بیرونی ممالک میں تعلیم حاصل کرنے کے دروازے بند ہیں،جن کے پاس جتنی زیادہ دولت ہوتی ہے ان کے بچے اتنے ہی مُلک کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کرتے ہیں ۔

خادم پنجاب محمد شہباز شریف نے ناخواندگی کے خاتمے اور غریب ہونہار بچوں کو اعلیٰ تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کے لئے 2008ء میں ایک ارب روپے کی لاگت سے پنجاب انڈومنٹ فنڈ قائم کیا تھا اور آٹھ سال بعد اس کا حجم اب بیس ارب روپے تک پہنچ گیا ہے۔یہ خادم اعلیٰ کا ایسا انقلابی اقدام ہے، جس سے مُلک میں کوئی بھی ہونہار اور ذہین طالب علم اعلیٰ تعلیم کے حصول سے محروم نہیں رہے گا ۔خادم پنجاب محمد شہباز شریف نے غریبوں کے بچوں کا مُلک اور بیرونی ممالک کے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں پڑھنے کے مواقع مہیا کرنے کا جو خواب دیکھا تھا وہ حقیقت میں بدل گیا ہے ۔یہ ادارہ گزشتہ آٹھ برسوں سے مستحق طلبہ کو مالی اعانت فراہم کر رہا ہے اور اب تک اس سے مستفید ہونے والے طلبہ کی تعداد ڈیڑھ لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے ۔محمد شہباز شریف کے پنجاب انڈومنٹ فنڈ کے نوے فیصد سکالر شپ سرکاری سکولوں، جبکہ دس فیصد پرائیویٹ سکولوں کے طلبہ کو فراہم کرنے کے اقدام نے ہزار وں ہونہار اور غریب طالب علموں کے دل جیت لئے ۔وہ والدین جو اپنے بچوں کو غربت کی جہ سے اعلیٰ تعلیم نہیں دلوا سکتے ان کے بچے آج مُلک اور بیرونی ممالک کی اعلیٰ یونیورسٹیوں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں اور امراء کے بچوں کی طرح اب غریب کا بچہ بھی انجینئر، ڈاکٹر ،پروفیسر ،افسر اور جنرل بن سکے گا ۔انڈومنٹ فنڈ میں بیس فیصد کوٹہ یتیم،اقلیتی ،خصوصی بچوں اور گریڈ ایک سے لے کر چار کے سرکاری ملازمین کے بچوں کے لئے مختص ہے ۔یہ پاکستان میں اپنی نوعیت کا واحد پروگرام ہے، جس کے لئے ایسا نظام بنایاگیا ہے کہ طلباء و طالبات سے ان کے گھروں پر رابطہ کیا جاتا ہے۔

پنجاب انڈومنٹ فنڈ میں مُلک بھر کے طلبہ کو شامل کرنے کے اقدام سے ثابت ہو گیا ہے کہ پنجاب کے وسائل پر تینوں صوبوں سمیت آزاد کشمیر، گلگت بلتستان اور فاٹا کا بھی حق بنتا ہے ۔خادم پنجاب محمد شہباز شریف کے بڑے بھائی کا کردار ادا کرنے سے پنجاب کے وسائل سے مُلک کے ہزاروں ہونہار طلباء وطالبات مستفید ہوں گے اور اعلیٰ تعلیم حاصل کر سکیں گے ۔اس کے علاوہ بین الاقوامی تعلیمی وظائف کا اجراء بھی کیاگیا ہے ۔محنتی اور قابل طلبہ دنیا کے بہترین تعلیمی اداروں میں پڑھ سکیں گے ۔اب مُلک میں غریب اور بے سہارا طلبہ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ دن رات محنت کو اپنا شعار بنائیں اور امتحانات میں اعلیٰ پوزیشن حاصل کریں تاکہ اعلیٰ تعلیم کے حصول سے محروم نہ رہ سکیں ۔

خادم پنجاب نے دُنیا بھر کی اعلیٰ یونیورسٹیوں میں ماسٹر اور پی ایچ ڈی کی ڈگری کے حصول کے لئے ’’شہباز شریف میرٹ سکالر شپ‘‘سکیم کا آغاز کیا ہے ۔ذہین طلبہ جو غربت کی وجہ سے امریکہ اور یورپ کی یونیورسٹیوں میں ماسٹر اور پی ایچ ڈی کی ڈگریاں حاصل نہیں کر سکتے تھے اب خادم پنجاب نے سکالر شپ کا آغاز کر کے ان کے خواب کو حقیقت میں بدل دیا ہے ۔ذہین غریب طلبہ جن کے والدین کی ماہانہ آمدنی بیس ہزار سے زیادہ نہ ہو وہ سکالر شپ کے لئے درخواست دے سکتے ہیں اور اس سکالر شپ میں تینوں صوبوں کے علاوہ گلگت بلتستان اور فاٹا کے طلبہ بھی درخواست دے سکتے ہیں۔ خادم پنجاب محمد شہباز شریف ہر سال پورے مُلک سے میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانات میں پوزیشن ہولڈر طلباء و طالبات کو لاہور بلا کر نقد انعامات کی تقسیم کرتے ہیں۔پوزیشن حاصل کر نے والے تعلیمی اداروں کے اساتذہ میں بھی کروڑوں روپے کے نقد انعامات تقسیم کئے جا رہے ہیں۔اسی طرح پوزیشن ہولڈر طلباء و طالبات کو پولیس کی جانب سے گارڈ آف آنر پیش کیا جاتا ہے اور یورپی ممالک کے مطالعاتی دورے کرائے جاتے ہیں۔ 2009ء سے لے کر اب تک پاکستان بھر سے 300 کے قریب پوزیشن ہولڈرز طلباء و طالبات کو یورپ کے دورے کرائے گئے ہیں ۔

خادم پنجاب نے لوڈشیڈنگ کی وجہ سے طلبہ کی تعلیمی سرگرمیاں متاثر ہونے سے بچانے اور ان کی پڑھائی کو جاری رکھنے کے لئے ’’اُجالا پروگرام‘‘کے تحت دو لاکھ سولر لیمپس قابل اور محنتی طلبہ میں میرٹ کی بنیاد پر تقسیم کئے ہیں تاکہ طلبہ بجلی کی لوڈشیڈنگ میں پڑھائی کو جاری رکھ سکیں ۔ان سولر لیمپس کی خصوصیت یہ ہے کہ یہ18 گھنٹے بلا تعطل بجلی کی ترسیل ممکن بنا سکتے ہیں ۔خادم پنجاب محمد شہباز شریف ناخواندگی کے خاتمے اور تعلیم کے فروغ کے لئے انقلابی اقدامات اُٹھا رہے ہیں اور ان کی علم دوستی کی وجہ سے غریبوں کے ہونہار اور ذہین بچے بھی اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔

مزید :

کالم -