سوٹ کیس سے ملنے والی خاتون کی لاش ورثا کے سپرد قتل میں منہ بولے بھائی کی تلاش

سوٹ کیس سے ملنے والی خاتون کی لاش ورثا کے سپرد قتل میں منہ بولے بھائی کی تلاش

  

 لا ہور (سٹی ر پو رٹر ) سوٹ کیس سے ملنے والی خاتون کی لا ش کو پو لیس نے پوسٹ ما رٹم کے بعد و رثا کے حوالے کردیا ، خاتون کے قتل میں پو لیس کو اسکے منہ بولے بھا ئی کی تلا ش ہے ۔ سمیرا کی سوٹ کیس سے لاش ملنے پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے نوٹس لے کر تحقیقات کے لئے انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ پو لیس کا کہنا ہے کہ سمیرا گھر یلو ملازمہ تھی اور وقوعہ سے تقریبا15 روز قبل اغوا ہو ئی تھی ،اس کے اغوا کا مقد مہ شوہر سیف اللہ کے مد عیت میں تھا نہ ستو کتلہ میں در ج ہے جبکہ اسکے قتل میں ایک ملزم کو حرا ست میں لیا گیا ہے ۔ تفصیلا ت کے مطا بق لٹن روڈ کے علاقہ چوبرجی سے دوروز قبل ویران جگہ پر پڑے سوٹ کیس کو دیکھ کر شہری نوید نے پولیس کواطلاع دی۔پولیس نے سوٹ کیس کھولا تو اس میں خاتون کی لاش تھی۔ قتل کی تحقیقات کرنیوالے ہومی سائیڈ یونٹ کے پاس گاڑیاں نہ ہونے کے باعث لاش کئی گھنٹے جائے وقوعہ پر پڑی رہی۔ سب انسپکٹرنے چار گھنٹے بعد فون کرکے ایدھی ایمبولینس کو بلوایا، چار گھنٹے گزرنے کے بعد لاش مردہ خانے منتقل کی گئی تواسٹاف نے لینے سے انکار کر دیا۔میڈ یا پر خبر نشر ہونے کے بعد لاش مردہ خانے والوں نے وصول کر لی۔ پولیس کے مطابق لاش جوہر ٹاؤن کی رہائشی 25سالہ سمیرا کی ہے جو شادی شدہ تھی اور مقامی گھرؤں میں کا م کا ج کرتی تھی ۔پو لیس کے مطا بق سمیرا کے اغوا کا مقدمہ نمبر 919\16 تھانہ ستوکتلہ میں شوہر کی مد عیت میں وقوعہ سے 15روز قبل درج کیا گیا تھا۔ مقتولہ کے شوہر کا کہنا تھا کہ اس کی بیوی گھر سے سودا سلف لینے گئی مگر واپس نہ آئی جس پر اس نے تھانہ ستو کتلہ میں غلام رسول نامی شخص پر اغوا کا مقدمہ درج کرایا تھا جبکہ غلام رسول نے 7 اکتوبر تک عبوری ضمانت کرا رکھی ہے۔اس حوالے سے ایس پی سول لائنز علی رضا کا کہنا تھا کہ ایک ملزم کو گرفتار کرکے کارروائی شروع کردی ہے۔ دوسری جا نب وزیر اعلی ٰ میا ں شہباز شریف نے نو ٹس لے کر تحقیقات کیلئے ڈی آئی جی ابو بکر خدا بخش کی سربراہی میں انکوائری کمیٹی تشکیل دی ہے۔ادھر پولیس نے پو سٹ مارٹم کے بعد لاش ورثا کے حوالے کردی جسے مقامی قبرستان میں سپرد خا ک کردیا گیا ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ایک ملزم کو گرفتار کر لیا ہے جبکہ شبہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ سمیرا کے قتل میں دو سے تین افراد ملوث ہو سکتے ہیں۔خاتون کی لاش کوبیگ میں بند کرکے پھینکنے کایہ دوسراواقعہ ہے۔ اس سے قبل سیالکوٹ کی رہائشی ما ڈل عبیرہ کی لاش کوسوٹ کیس میں بند کرکے شیراکوٹ کے علاقے میں بس اڈے پر چھوڑدی گئی تھی۔ واضح ر ہے تین روز قبل بھی لاہور کے علاقہ ڈیفنس بی میں 13 سالہ گھریلو ملازمہ پرُاسرار طور پر ہلاک ہو گئی۔ پولیس نے لاش تحویل میں لے کر تحقیقات شروع کر دی ہیں۔پو لیس کے مطا بق گھوٹکی کی رہائشی 13 سالہ بابرہ ایس بلاک ڈیفنس بی کے رہائشی ظفر نامی شخص کے گھر پر ملازمہ تھی۔ وہ سٹور روم سے مردہ حالت میں ملی تو اہلخانہ نے پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر لئے ہیں ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ متوفیہ کے گلے پر پھندے کا نشان ہے۔ اس حوالے سے قتل سمیت مختلف پہلوؤں پر تحقیقات جاری ہیں۔

مزید :

علاقائی -