ملک ٗوالدین ٗ دوستوں کو چھوڑنا مشکل فیصلہ تھا ٗ عمران طاہر

ملک ٗوالدین ٗ دوستوں کو چھوڑنا مشکل فیصلہ تھا ٗ عمران طاہر

  

جوہانسبرگ(این این آئی)جنوبی افریقہ کرکٹ ٹیم کے پاکستانی نژاد مایہ ناز اسپنر عمران طاہر نے کہا ہے کہ اپنے ملک، والدین اور دوستوں کو چھوڑ کر دوسرے ملک جانا بڑا مشکل فیصلہ تھا۔ایک انٹرویو میں عمران طاہر نے کہاکہ مجھے اپنے فیصلے پر کوئی پچھتاوا نہیں ہے کیونکہ جنوبی افریقہ نے مجھے پوری دنیا کے سامنے اپنی صلاحیتوں کے مظاہرے کا موقع دیا۔انہوں نے کہاکہ یہ میری منزل تھی کہ میں جنوبی افریقہ جاؤں گا اور جس طرح میرے حق میں کام ہوا ہے اس سے میں واقعی خوش ہوں۔ انہوں نے کہاکہ مجھے موقع دینے پر کرکٹ جنوبی افریقہ کا مشکور ہوں اور ہمیشہ شکرگزارہوں گا کہ انھوں نے مجھے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے کا موقع دیا۔پاکستان چھوڑنے کے فیصلے پر انہوں نے کہا کہ یہ میرے لئے آسان فیصلہ نہیں تھا لیکن کچھ مواقع ہر روز نہیں ملتے۔عمران طاہر نے کہا کہ مجھے اپنے خاندان خصوصاً میرے والدین، دوست اور میرے ملک کو چھوڑنا ایک بڑا مشکل فیصلہ تھا تاہم میری بیگم جنوبی افریقہ میں تھیں اسی لیے یہ فیصلہ مجھے لینا پڑا۔یہ ان مواقع میں سے ایک تھا جہاں آپ کچھ حاصل کرتے ہیں مگر کچھ کھونا پڑتا ہے۔ایک سوال پر عمران طاہر نے کہا کہ جب میں نے اپنے بچپن میں کرکٹ کھیلنا شروع کی اور جب گریڈز اور مختلف سطح سے ہوتے ہوئے فرسٹ کلاس میں آیا تو پاکستان کے لیے کھیلنا میرا خواب تھا تاہم یہ موقع کبھی نہیں آیا خیر کوئی بات نہیں اور یہ موقع جنوبی افریقہ کی جانب سے مجھے ملا۔پاکستان ٹیم کی انگلینڈ کے خلاف حالیہ سیریز پر بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ پاکستان ٹیم نے اچھی کرکٹ کھیلی جس پر میں انھیں مبارک باد دیتا ہوں کیونکہ انگلینڈ میں آکر ہوم ٹیم کے خلاف کھیلنا آسان نہیں ہوتا۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -