سرحدی کشیدگی ، لائن آف کنٹرول کے قریب ہزاروں خاندان گھر بار چھوڑنے پر مجبور

سرحدی کشیدگی ، لائن آف کنٹرول کے قریب ہزاروں خاندان گھر بار چھوڑنے پر مجبور

  

سری نگر ( اے این این ) سرحدی علاقوں میں کشیدہ صورتحال کے باعث لائن آف کنٹرول کے قریب بسنے والے ہزاروں خاندان گھر بار چھوڑنے پر مجبور ٗ اکھنور اور پلانوالہ سیکٹر سے 12 ہزار سے زائد خاندان محفوظ مقامات پر منتقل ٗ دہشت زدہ کسانوں نے مال مویشی اور پکی ہوئی فصلیں حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیں ٗ 300 کے قریب خاندانوں نے عارضی کیمپ میں پناہ لے لی ٗ سہولتیں ناپید ٗ کیمپ میں مقیم خاندانوں کی بھارتی فوج پر کڑی تنقید ٗ الفاظ کی جنگ لڑنے کے بجائے مسئلے کو ہمیشہ ہمیشہ کیلئے حل کرنے کا مطالبہ ۔ تفصیلات کے مطابق سرحدی علاقہ میں حالات بدستور کشیدہ بنے ہوئے ہیں ، دونوں ممالک کے درمیان ہونے والی گولہ باری کا خمیازہ یہاں کے مکینوں کو بھگتنا پڑرہا ہے ،کنٹرول لائن کے قریب بسنے والے لوگ اپنے گھر بار چھوڑ کر کئی کلو میٹر پیچھے آگئے ہیں لیکن ان کے مال مویشی اور پکی ہوئی فصلیں اس علاقہ میں ہیں جن کی دیکھ بھال کے لئے لوگ صبح جان جوکھم میں ڈال کر اپنے گھروں کی طرف جاتے ہیں اور شام ڈھلے واپس لوٹ آتے ہیں۔اکھنور سیکٹر کے گگریال، سیری پلائی، بھٹوال، دھکر، بلودھ، گرار، سینتھ، مگیال، کھروٹہ گاؤں کے قریب 300کنبے رادھا سوامی ست سنگھ ویاس بھون کھوڑ میں پناہ لئے ہوئے ہیں۔ اگر چہ ان لوگوں کے طعام کا خاطر خواہ انتظام کیا گیا ہے لیکن قیام کی سہولیات نا پید ہیں۔ ر

مزید :

صفحہ اول -