پہلی مرتبہ کسی قومی رہنما نے مسئلہ کشمیر پر اجلاس کا بائیکاٹ کیا،طلا ل چوہدری

پہلی مرتبہ کسی قومی رہنما نے مسئلہ کشمیر پر اجلاس کا بائیکاٹ کیا،طلا ل ...

  

اسلام آباد(اے پی پی) مسلم لیگ (ن) کے رہنما رکن قومی اسمبلی طلال چوہدری نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس مسئلہ کشمیر ، بھارتی جارحیت اور پاکستان کی سلامتی کیلئے بلایا گیا، آج افسوسناک بات یہ ہے کہ 1947ء کے بعد پہلی مرتبہ کسی قومی رہمنا نے کشمیر کے معاملے پر اجلاس کا بائیکاٹ کیا۔ بدھ کو پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے اصرار پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلایا گیا لیکن مشترکہ اجلاس پر پی ٹی آئی نے بہت اصرار کیا، حکومت نے آج کا اجلاس وزیراعظم کو اور حکومت مضبوط بنانے کیلئے نہیں بلایا بلکہ قومی سلامتی متعلق تھا۔ انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو نے سنجیدگی کا مظاہرہ کیا لیکن عمران خان نے بائیکاٹ کیا، دھرنے سے پارلیمنٹ پر قبضہ سول نافرمانی کا نعرہ لگایا گیا، پی ٹی وی پر حملہ کیا گیا اس پر نہ صرف ملک و قوم کا نقصان ہوا بلکہ اقتصادی راہداری منصوبے کی راہ میں رکاوٹ ڈالی گئی۔ طلال چوہدری نے کہا کہ عمران خان نے کشمیر کاز پر بائیکاٹ کیا جب سنجیدہ بات ہوتی ہے وہاں شرکت ضروری نہیں، سیر سپاٹا ضروری ہے، عمران نے پہلے بھی جھوٹا پروپیگنڈہ کیا، اب پھر پروپیگنڈہ کر رہے ہیں، اپنے اوپر الزامات کا جواب دینے کے بجائے اسلام آباد کو بند کرنے کی باتیں کرتے ہیں۔عمران خان کے کل کے بیان سے سر شرم سے جھک گیا، پاکستان کو ان کی وجہ سے ندامت اٹھانی پڑی، آج قوم ان سے سوال پوچھتی ہے کہ آپ کا مشترکہ اجلاس سے بائیکاٹ کا نقصان کس کو ہوا، نوازشریف کی حکومت کو یا کشمیر کاز کو ہوا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے امید ہے عمران خان ہوش مندی کا مظاہرہ کرکے پارلیمنٹ کے دوسرے روز کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔ طلال چوہدری نے کہا کہ عمران خان پارٹی کے اندر فرعون بنے ہوئے ہیں، کسی دوسرے رہنما کی بات نہیں سنتے بلکہ ڈانٹ دیتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ 2018ء کے عام انتخابات میں وزیراعظم کا فیصلہ عوام کریں گے اگر مسلم لیگ (ن) کی حکومت کا ترقی کا عمل جاری رہا تو نوازشریف کی دوبارہ حکومت بن جائے گی۔

مزید :

صفحہ اول -