امریکہ میں نائب صدارت کے دونوں امیدواروں کا مباحثے میں مقابلہ برابر رہا

امریکہ میں نائب صدارت کے دونوں امیدواروں کا مباحثے میں مقابلہ برابر رہا

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) ڈیموکریٹک پارٹی کے نائب صدارت کے امیدوار سینیٹر ٹم کین نے اپنے حریف ری پبلکن پارٹی کے اسی عہد ے کے امیدوار گورنر مائیک پنس پر سخت نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا ہے کہ روس اور تارکین وطن کے حوالے سے ٹرمپ کی پالیسی قابل قبول نہیں ہے۔ گزشتہ رات امریکی ریاست ورجینیا کے شہر فارم ویل میں نائب صدارت کے امیدواروں کے درمیان 90 منٹ کے واحد مباحثے میں انہوں نے یہ ریمارکس اتنے جارحانہ انداز میں ادا کئے۔ تاہم غیر جانبدار مبصرین کا کہنا تھا کہ مباحثے میں دونوں کا مقابلہ کم و بیش برابر رہا۔ ری پبلکن پارٹی کے نائب صدارت کے امیدوار گورنر پنس کا رویہ اپنے صدارتی امیدوار ٹرمپ کے برعکس پر تحمل تھا لیکن وہ ٹرمپ کی کمزوریوں کا مناسب دفاع کرنے میں ناکام رہے۔ کچھ مقامات پر گورنر پنس نے ٹرمپ سے مختلف پوزیشن اختیار کی۔ مثال کے طور پر ان کا کہنا ہے کہ اگر ری پبلکن امیدوار وائٹ ہاؤس میں گئے تو وہ غیر قانونی تارکین وطن کو فوری طور پر ملک بدر نہیں کریں گے۔ انہوں نے شام کے شہر ایلیپو میں فوجی کارروائی کی حمایت کی اور روس کو ایک خطرناک ملک قرار دیا۔ ڈیمو کریٹک پارٹی کے امیدوار ٹم کین نے واضح کیا کہ میں ٹرمپ کے خیالات بیان کرنا چاہتا ہوں جو روس کو بہت پسند کرتے ہیں اور مسلمانوں سمیت تارکین وطن کے بارے میں سخت نکتہ چینی کرتے رہے ہیں کیونکہ ایک مرحلے پر ٹرمپ نے کہا تھا کہ پیوٹن اوبامہ سے زیادہ طاقت ور لیڈ رہے۔ ری پبلکن امیدوار نے الزام لگایا کہ ڈیمو کریٹک امیدوار توہین آمیز رویہ اختیار کئے ہوئے ہیں۔ تاہم وہ بھی روسی صدر کو ایک چھوٹا منہ پھٹ لیڈر قرار دے رہے تھے جو ٹرمپ کی رائے سے بہت مختلف بات تھی۔ڈیمو کریٹک امیدوار ٹم کین نے اپنے حریف پر جارحانہ انداز اختیار کرتے ہوئے کہا کہ ٹرمپ نے صدر اوبامہ کے امریکہ میں پیدائش کے حوالے سے جو بیان بدلے ہیں اس سے ان کی ساکھ بری طرح متاثر ہوئی ہے۔ میکسیکو کے باشندوں کے خلاف جو ٹرمپ نے نفرت انگیز بیانات دئے تھے ڈیمو کریٹک پارٹی کے امیدوار نے اس پر بھی سخت نکتہ چینی کی۔ توقع کے مطابق ری پبلکن امیدوار نے ہیلری کلنٹن کے وزارت خارجہ کے دور کے ریکارڈ اور ای میل کے حوالے سے غیر ذمہ داری برتنے پر نشانہ بنایا اور کہا کہ شام میں شہریوں کو جو مسائل پیش آرہے ہیں ، ہیلری کلنٹن کی ناکام اور کمزور خارجہ پالیسی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -