شبقدر میں 20 گھنٹوں کے دورانیہ کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری

شبقدر میں 20 گھنٹوں کے دورانیہ کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری

شبقدر (نمائندہ خصوصی )شبقدر میں بجلی کی 20 گھنٹے کی بدترین لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری،ناروا لوڈشیڈنگ کے باعث پانی کا بحران پیدا ہو گیا ہے ،سکول اور کالج طلباء بہت متاثرہو رہے ہیں کاروبار ی حضرات آئے روز گھاٹے میں جا رہے ہیں ہسپتالوں میں مریض تڑپنے لگے منتخب ایم این اے اور ایم پی اے سے لوگ ناراض سوشل میڈیا پر منتخب ایم این اے و ایم پی اے کے خلاف عوام کا شدید غصہ اور اپنے کیے پر شرمندگی ظاہر کی شبقدر کے عوام کا صوبائی حکومت پر شدید تنقید ،کہتے ہیں اگر صوبائی حکومت مرکزی حکومت کے خلاف دھرنے نہ دیتے تو آج ہمیں یہ دن نہ دیکھنا پڑتا ایک مضبوط صوبائی حکومت صرف بجلی لوڈشیڈنگ کا مسئلہ حل نہیں کر سکتے تو پھر فوری مستعفی ہو جائیں جماعت اسلامی اور پی ٹی آئی کے قائدین عوام کو مذید دھوکہ نہ دیں دونوں جماعتیں مسلسل احتجاجی جلسے منقعد کر رہے ہیں عوامی مسائل حل نہیں ہو رہے بجلی کی بد ترین لوڈشیڈنگ نے عوام کو ذہنی امراض میں مبتلا کر دیا ہیں جماعت کے امیر سراج الحق اور پی ٹی آئی کے چیر مین عمران خان صرف بجلی کے ناروا لوڈشیڈنگ کی طرف توجہ دیں خالی نعرے اور دھرنے گانے بجانے بہت ہو گئے تین سال مسلسل دونوں جماعتوں کے قائدین نے صرف احتجاجی مظاہرے کیے بجلی لوڈشیڈنگ کے مسئلے سے عوام کی توجہ ہٹانے کے لیے۔ یہ باتیں شبقدر کے عوامی اور سماجی حلقوں کے نمائندوں جن میں زبیر خان ،دیار خان،ملک ممتاز خان،نصرواللہ خان،ملک ارشاد خان،رحیم داد خان۔رحمان گل ،ملک ذکریا خان،نسیم خان ملک مشتاق خان اور دیگر نے اخباری نمائندوں سے کہی انہوں نے کہا کہ شبقدر میں عرصہ دراز سے بجلی کی ناروا لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے جبکہ منتخب نمائندے اور صوبائی حکومت نے مسلسل خاموشی اختیار کی ہے اور ایک ہی بہانہ کر رہی ہیں کہ بجلی کا مسئلہ پورے پاکستان میں ہے انہوں نے کہا کہ بجلی کی ظالمانہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے ہم زندگی کے تمام سہولیات سے محروم ہیں ہمارے بچوں کا مستقبل تباہ ہو رہا ہیں پینے کے پانی کے لیے ترس رہے ہیں جبکہ شدید گرمی میں بجلی نہ ہونے کی وجہ سے فریج میں برف بھی نہیں بن سکتی جس کے باعث غریب عوام کے جیب خرچ پر اضافی بوجھ پڑ رہا ہیں اور روزانہ بازار سے برف خریدنے کی استطاعت نہ رہی انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت حیلے بہانے اور اخباری بیانات بند کریں عوام جماعت اسلامی اور پی ٹی آئی سے سخت ناراض ہیں کیونکہ دونوں جماعتیں جھوٹ بول رہی ہیں ہمیں پانامہ لیکس اور کرپشن کے نام پر دھوکہ دے رہی ہیں ہمیں صرف بجلی چاہیں انہوں نے کہا کہ بجلی ہوگی ہو تو ہمارے بچے بھی پڑھینگے کاروبار بھی چلے گا پینے کا پانی بھی دستیاب ہو گا صحت کے سہولیات بھی بروقت میسر ہونگے اور دیگر مسائل بھی نہیں رہینگے انہوں نے کہا محلوط حکومت میں شامل تمام جماعتیں صرف اور صرف بجلی کی بحالی پر توجہ دیں عوام کو دھوکے میں رکھیں انہوں نے کہا کہ بجلی لوڈشیڈنگ میں نمایاں کمی لائی جائیں بصورت دیگر ہم بھر پور احتجاج بھی ریکارڈ کر ائینگے اور آئندہ عام انتخابات میں ووٹ کا بائیکاٹ بھی کرینگے

مزید : پشاورصفحہ آخر