مسلح افراد جغرافیائی سرحدوں اور اساتذہ نظریاتی سرحدوں کے محافظ ہیں: ماہرین تعلیم

مسلح افراد جغرافیائی سرحدوں اور اساتذہ نظریاتی سرحدوں کے محافظ ہیں: ماہرین ...

لاہور( پ ر ) جماعۃ الدعوۃ شعبہ اساتذہ کے زیر اہتمام ورلڈ ٹیچرز ڈے کے موقع پر نامور ماہرین تعلیم،اساتذہ رہنماؤں نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ مسلح افواج جغرافیائی سرحدوں کی محافظ اور اساتذہ نظریاتی سرحدوں کے محافظ ہیں۔ مقبوضہ کشمیر میں جاری تحریک میں اساتذہ کا اہم کردار ہے۔پروفیسر شبیر شہید و دیگر اساتذہ کو بھارتی فوج نے شہید کیا۔ اپنے حقوق کے لئے آواز بلند کرنے والے قوم کے معماروں کو کشمیریوں کے حقوق پر بھی بات کرنی ہو گی۔گزشتہ نوے دنوں سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو نافذ ہے۔پاکستان کلمہ طیبہ کے نام پر حاصل کیا گیا ملک ہے ۔اساتذہ ایک نظریئے پر طلباء کی تربیت کریں گے تو پھر اس قوم کو دنیا کی کوئی طاقت شکست نہیں دے سکتی۔جماعۃ الدعوۃ کی کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی قابل تحسین ہے۔ان خیالات کا اظہار اساتذہ جماعۃ الدعوۃ پاکستان کے مسؤل پروفیسر حافظ محمد طلحہ سعید، تنظیم اساتذہ پاکستان کے صدرمیاں اکرم،جماعۃ الدعوۃ اساتذہ کے رہنمامحمد بلال حیدر،متحدہ اساتذہ محاذ پاکستان کے صدرتاج حیدر،سٹار کالج کے سی ای او میاں عادل،چیف کو آرڈینیٹر پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن میاں سہیل،سابق صدر اکیڈمک ایسوسی ایشن پاکستان معروف ماہر تعلیم مہر اختر سعید،جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنمامولانا احسان الحق شہباز،آل ٹیچر میونسپل کیڈر پنجاب کے نائب صدرآصف گوہر ، سابق ای ڈی او لاہورقاضی خالد فاروق ،جماعۃ الدعوۃ کے مرکزی رہنما علی عمران شاہین نے لاہور پریس کلب میں سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اساتذہ جماعۃ الدعوۃ پاکستان کے مسؤل پروفیسر حافظ طلحہ سعید نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں جار ی تحریک میں اساتذہ کا کردار ہے۔برہان وانی کے جنازے میں لاکھوں لوگ شریک تھے جن میں سب سے زیادہ تعداد طلباء کی تھی۔پروفیسر شبیر کو بھارتی فوج نے شہید کیا۔کشمیر پاکستان کا حصہ ہے۔بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے کشمیر کو شہہ رگ کہا تھا۔ پوری دنیا میں جو حالات چل رہے ہیں بالخصوص پاکستان اور بالعموم عالم اسلام میں بڑے بڑے چیلنجز کا سامنا ہے جن کا مقابلہ کرنے کے لئے تعمیری انداز میں سوچیں گے تو اساتذہ کا کردا ر سامنے آتا ہے۔بھارت نے مکتی باہنی کی تحریک کو اٹھا یا اور مشرقی پاکستان کو الگ کیااس تحریک میں ہندو اساتذہ نے بڑا کردار ادا کیا ۔طلباء کی پاکستان کے خلاف ذہن سازی کی گئی تھی۔دنیا میں جتنے بڑے انقلاب برپا ہوئے ہیں ان میں اساتذہ کا بڑا کردار ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ معاشرے میں استاد سب سے زیادہ اہمیت و عزت والا ہے کیونکہ استادقوموں کی اصلاح،تربیت کرتے ہیں۔حکومت کو اساتذہ کو پریشان نہیں کرنا چاہئے۔مہذب قومیں اساتذہ کو اپنے حقوق کے لئے سڑکوں پر نہیں آنے دیتیں۔حکومت اساتذہ کا احترام ملحوظ خاطر رکھے اور انکے مسائل حل کئے جائیں۔انہوں نے کہا کہ عالم کفر پاکستان کے خلاف متحد ہو رہا ہے اگر انکا مقابلہ کرنا ہے تو اساتذہ کرام کی قدر کیجئے۔اساتذہ کوبھی اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرنا چاہئے کیونکہ انہوں نے قوموں کی تعمیر و ترقی میں کردار ادا کرنا ہے۔تنظیم اساتذ ہ پاکستان کے صدر میاں اکرم نے کہا کہ یوم تکریم اساتذہ منانے کے لئے اکٹھے ہیں۔کشمیری اساتذہ پر بھارت سرکار کی جانب سے ظلم و تشدد کی انتہا کر دی گئی۔مقبوضہ کشمیر میں جدوجہد آزادی کی آبیاری کرنے والے اساتذہ تھے جنہوں نے آزادی کا جذبہ نوجوانوں کے دلوں میں ڈالا ۔ہزاروں نوجوان نکلے اور میدان میں ہیں۔کشمیر کے مسئلے کو اجاگر کرنے پر جماعۃ الدعوۃ کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔تنظیم اساتذہ پاکستان جماعۃ الدعوۃ کے ساتھ کھڑی ہے۔ہم کشمیر کے اساتذہ و طلباء کے ساتھ ہیں اور امید رکھتے ہیں کہ جلد انہیں آزادی ملے گی۔

مزید : صفحہ آخر