زکریا یونیورسٹی ایمپلائز ایسوسی ایشن کے متنازع الیکشن کے مسئلہ نے پھر سر اٹھا لیا ‘ انتظامیہ کا اپوزیشن کے ذریعے ملک صفدر گروپ سے نمٹنے کا فیصلہ

زکریا یونیورسٹی ایمپلائز ایسوسی ایشن کے متنازع الیکشن کے مسئلہ نے پھر سر ...

  

ملتان( سٹاف رپورٹر ) زکریا یونیورسٹی ایمپلائز ایسوسی ایشن کے متنازع الیکشن کے مسئلے نے پھر سر اٹھا لیا‘ یونیورسٹی انتظامیہ نے اپوزیشن کے ذریعے سابق رجسٹرار ملک منیر کے بھا ئی ملک صفدر گروپ سے نمٹنے کا فیصلہ کرلیا‘ ملک صفدر کو یونیورسٹی (بقیہ نمبر25صفحہ12پر )

میں ہونے والی ہنگامہ آرائی کا ذمہ دار ٹھہرا دیاگیا‘ ملک صفدر کو اپنے بھائی سابق رجسٹرارملک منیر کی حمایت میں ہڑتال کے سلسلے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ گیا۔تفصیل کے مطابق زکریا یونیورسٹی ایمپلائز ایسوسی ایشن کی متنازع باڈی کے اجلاس کو مخالف گروپ نے غیر قانونی قرار دے دیاہے‘ نائب صدر کے امیدوار ملک ندیم عباس بوسن اور فنانس سیکرٹری کے امیدوار سرفراز خان نے وائس چانسلر زکریا یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر طاہر امین کو دی گئی درخواست میں الزام عائدکیا ہے کہ 11اگست کو ایمپلائز ویلفیئر ایسوسی ایشن کے الیکشن میں بیلٹ پیپرز پر چیف الیکشن کمشنر کی ملی بھگت سے ہمارے نشان کے سامنے ڈبل مہر لگا کر جعلی رزلٹ تیار کیا گیاحالانکہ پولنگ سٹیشنز پر موجود پریذائیڈنگ آفیسرز کے دستخط شدہ رزلٹ کے مطابق ہم جیت چکے تھے‘اب 5اکتوبر کو غیر فعال صدر ملک صفدر (جنہوں نے تاحال حلف نہیں لیا) نے ایسوسی ایشن کا غیر آئینی اجلاس طلب کیا جس میں ہمارے جیتے ہوئے سینئر نائب صدر اور دیگر 7ممبران مجلس عاملہ نے حقائق کی نشاندہی کی جس پر غیر فعال صدر نے اس معاملے کو نظر انداز کرتے ہوئے ہڑتال کی قرارداد پر بحث شروع کر دی ‘ہمارے ممبران نے اس اجلاس کا بائیکاٹ کرکے واک آؤٹ کیااور باور کرایاکہ ہم خاص طور پر ایک ذاتی معاملے کی وجوہ پر ہڑتال یا کسی اور کارروائی کا حصہ نہیں بنیں گے‘انہوں نے مزید کہا کہ آج کا اجلاس غیر قانونی اور غیر آئینی ہے ‘کسی بھی عہدیدار نے ابھی تک اپنے عہدے کا حلف نہیں اٹھایا‘اس لئے اجلاس کی کارروائی کو کالعدم تصور کیا جائے اور چیف الیکشن کمشنر /اسسٹنٹ زرعی کالج رانا لیاقت کو ہدایت کی جائے کہ متنازع نوٹیفکیشن کو کینسل کرکے 8افراد کے ساتھ ہماری جیت کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -