30اکتوبر کو اسلام آباد بند کردیں گے، نوازشریف کے احتساب تک اسلام آباد میں ہی بیٹھے رہیں گے:عمران خان

30اکتوبر کو اسلام آباد بند کردیں گے، نوازشریف کے احتساب تک اسلام آباد میں ہی ...
30اکتوبر کو اسلام آباد بند کردیں گے، نوازشریف کے احتساب تک اسلام آباد میں ہی بیٹھے رہیں گے:عمران خان

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ 30اکتوبر کو اسلام آباد بند کردیں گے، نوازشریف کے احتساب تک اسلام آباد میں ہی بیٹھے رہیں گے۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی سے کہتاہوں آصف زرداری کوپارٹی سے مائنس کردیں،اعتزازاحسن درحقیقت وزیراعظم کااحتساب چاہتے ہیں،ہم نے پوری کوشش کی ادارے احتساب کریں کسی ادارے نے اب تک کچھ نہ کیا ،پیپلزپارٹی اندرسے حکومت کےساتھ ملی ہوئی ہے،آصف زرداری نہیں چاہتے کہ نوازشریف کااحتساب ہو،حکمرانوں نے باریاں لےکرکرپشن کی،اخلاقیات تباہ کردی،نوازشریف مجرم ثابت ہوچکے ہیں

انہوں نے کہا ہے کہ اسمبلی میں جوآج ہوااس سے غلط تاثرگیا،مجھ سے یہ منافقت نہیں ہوتی،خورشیدشاہ سے زیادہ فرینڈلی اپوزیشن نہیں ہوسکتی،آج جواسمبلی میں ہوامجھے اسی بات کاڈرتھا،اسی لیے نہیں گیا،میں نوازشریف کو وزیراعظم ماننے کےلیے تیارنہیں،اے پی سی میں اپنامو¿قف واضح طورپرپیش کرچکے تھے،واضح پیغام دیاتھاکہ مسئلہ کشمیر پرسب ایک ہیں،آج پارٹی کے سینئر رہنماﺅں کا اجلاس طلب کیا تھا پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں نہ آنے پرتنقیدہوئی۔

انہوں نے کہا ہے کہ دھرنے میں شرکت کی دعوت نہیں دے رہا عوام سے اپیل کر رہا ہوں ، میں ایسی منافقت نہیں کرسکتا،میں اتنااچھاسیاستدان نہیں،بلاول وزیراعظم نوازشریف کو چورکہہ کر پھرمسکراکرملتے ہیں،ان لوگوں نے ہماری اخلاقیات کو تباہ کر دیا ہے،نوازشریف کاجرم ثابت ہوچکا،ان کووزیراعظم ماننے کیلیے تیارنہیں،ملک سے پیپلزپارٹی کاوجودختم ہوتاجارہاہے،عوام سے دھرنے میں شرکت کی اپیل کرتاہوں۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم نے اب سپریم کورٹ سے امیدرکھی ہوئی ہے،پاناماپرتمام جماعتیں ملی ہوئی ہیں،یہ احتساب نہیں چاہتے،وزیراعظم کےاحتساب سے جمہوریت مزیدمضبوط ہوگی،نوازشریف آئس لینڈکے وزیراعظم کی تقلیدکرتے ہوئے مستعفی ہوجائیں،نوازشریف خودکواحتساب کےلیے پیش کریں۔

اہم ترین عہدیداروں کی خفیہ ملاقات، کیا واقعی آئی ایس آئی کے سربراہ اور شہبازشریف کے درمیان بحث ہوئی، حٰیران کن جواب آگیا

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے احتساب تک اسلام آباد میں ہی بیٹھے رہیں گے،30اکتوبر کو اسلام آباد بند کردیں گے،پوری کوشش کی کہ ادارےاحتساب کریں کسی نے اب تک کچھ نہ کیا،خورشید شاہ کے پیچھے بھی کھڑا ہوا اس کے باجود کے وہ خود حکومت کے پیرول پرہیں،خورشید شاہ پر خود کرپشن کے الزامات ہیں ،خورشید شاہ وغیرہ کہتے ہیں کہ انہوں نے سولو فلائٹ لے لی ہے،جب دیکھا کے ٹی او آرپر پیش رفت نہیں ہورہی تو سڑکوں پر آئے ،اعتزاز احسن نے بہت کوشش کی کہ احتساب ہو،ان کی ملی بھگت ہے پیپلزپارٹی کے کچھ لوگ ہیں جو احتساب چاہتے ہیں ،ہم نے اب سپریم کورٹ سے امیدرکھی ہوئی ہے،پاناماپرتمام جماعتیں ملی ہوئی ہیں،یہ احتساب نہیں چاہتے،وزیراعظم کے احتساب سے جمہوریت مزیدمضبوط ہوگی۔

عمران خان نے کہا ہے کہ موٹوگینگ جھوٹےالزامات لگارہاہے،تحریک انصاف دھرنےکی پلاننگ کررہی ہے،،اپنے مطالبوں کے حصول تک اسمبلی کابائیکاٹ جاری رکھیں گے،مودی ہرجگہ پاکستان کو تنہا کرتا رہا اور انہوں نے دوستی کی،اگریہاں سے غلط سگنل نہ دیا ہوتا تو آج مودی ایسا نہ ہوتا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -