اپنی سرحدیں بچانے کے لئے بھارتی حکومت نے اسرائیل سے رابطے شروع کردیئے

اپنی سرحدیں بچانے کے لئے بھارتی حکومت نے اسرائیل سے رابطے شروع کردیئے
اپنی سرحدیں بچانے کے لئے بھارتی حکومت نے اسرائیل سے رابطے شروع کردیئے

  

لاہور( سپیشل ایڈیٹر)اُڑی حملہ کے بعد اسرائیل نے بھارت کو پاکستان کے ساتھ ملحقہ سرحد کو جدید باڑھ سے بند کرنے اور اسکی حفاظت کے لئے جدید ٹیکنالوجی مہیا کرنے کا عندیہ دیا ہے جس کے بعد بھارت نے پاکستان کے ساتھ طویل سرحد بند کرنے کا اٹل فیصلہ کرلیا ہے ۔

ذرائع کے مطابق اسرائیل نے اڑی واقعہ کے بعد بھارت کو مشورہ دیا ہے کہ وہ پاکستان سمیت اپنے دیگر14مشکل ترین بارڈرز پوائنٹس کی مانیٹرنگ کے لئے اسرائیل کی مدد حاصل کرسکتا ہے۔اڑی حملہ کے بعد بھارت کے ہوم منسٹر راجناتھ سنگھ نے اسرائیل کا دورہ کیا تو انہیں اسرائیل کے بارڈرز کا دورہ کرایا گیا اور انہیں بتایا گیا کہ اسرائیل کن کن ملکوں کے بارڈرز کو بیرونی حملہ آوروں سے محفوظ بناچکا ہے۔اسرائیل کو بارڈر مینجمنٹ میں دنیا کی ایک مقبول اتھارٹی سمجھا جاتا ہے ۔اس نے حال ہی میں مغربی یورپ ،امریکہ اور بھارت کو بارڈرز کی جدید ٹیکنالوجی مہیا کرنے کے سودوں کا اعلان کیا ہے۔بھارت کے متعدد دفاعی ماہرین نے رواں سال کئی بار اسرائیل کا دورہ اسی غرض سے کیا اور اسرائیل اور مصر کے درمیان واقع باڑھ سسٹم دیکھ کر اسے سراہاتھا۔بھارتی حکومت اسطرز کی باڑھ پاکستان کے ساتھ بنانے کا معاہدہ کررہی ہے ۔

امریکہ نے بھی اسرائیل کے جدید ترین بارڈر سکیورٹی سسٹم کا جائزہ لیتے ہوئے اسے دنیا کا بہترین نظام قرار دیا ہے جس کے تحت لوہے کی دیواروں کے پرتوں کو جوڑ کر فولادی باڑھ بنانے کے لئے ہائی ٹیک استعمال ہوتی ہے۔بھارتی ماہرین کا کہنا ہے کہ بھارت کے لئے مکمل سرحد کو اسرائیل کی طرز پر باڑھ سے محفوظ بنانا مشکل اور مہنگا ترین سودا ہوگا ۔

مزید :

بین الاقوامی -