روس کے ’ایٹمی طیارے‘ نے ایسا کام کردیا کہ پورے یورپ میں کھلبلی مچ گئی، 4 ممالک کے جنگی جہاز تعاقب میں نکل آئے کیونکہ۔۔۔

روس کے ’ایٹمی طیارے‘ نے ایسا کام کردیا کہ پورے یورپ میں کھلبلی مچ گئی، 4 ...
روس کے ’ایٹمی طیارے‘ نے ایسا کام کردیا کہ پورے یورپ میں کھلبلی مچ گئی، 4 ممالک کے جنگی جہاز تعاقب میں نکل آئے کیونکہ۔۔۔

  

میڈریڈ(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ اور دیگر مغربی ممالک کے ساتھ شدید کشیدگی کے باوجود گزشتہ دنوں روس کے ایٹمی طیاروں نے ایک ایسا کام کر دیا کہ پورے یورپ میں کھلبلی مچ گئی۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق روس کے 2بلیک جیٹ ایٹمی طیاروں نے ناروے کی طرف سے سپین تک پروازیں کی۔ یورپی ممالک کو ان روسی طیاروں کی اپنی فضاﺅں میں موجودگی کا اس وقت پتا چلا جب وہ شمالی سپین میں تھے۔ روسی طیاروں کا پتہ چلتے ہی فرانس، سپین، برطانیہ اور ناروے کے کئی جنگی جہاز وقفے وقفے سے حرکت میں آئے کیونکہ روسی طیارے ان چاروں ممالک کی فضائی حدود کو چھوکر گزرے تھے۔دوسری طرف آئس لینڈ نے بھی روس روسی طیاروں کے فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے کی شکایت کی ہے۔

”اوباما ،تم جہنم میں جاﺅ“ صدر نے ایسی بات کہہ دی کہ پوری دنیا میں ہنگامہ ہوگیا

رپورٹ کے مطابق یہ واقعہ ایک ایسے وقت پیش آیا جب روس اور مغربی ملکوں کے درمیان شدید کشیدگی پائی جاتی ہے۔ حالیہ کچھ عرصے سے روسی جنگی جہازوں کی نیٹو ممالک کے طیاروں سے مڈبھیڑ کے واقعات میں بہت اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔مذکورہ واقعہ 22 ستمبر کو پیش آیا تھا تاہم اس کی تفصیلات اب منظرعام پر آئی ہیں۔ اس سلسلے میں فرانسیسی وزارت دفاع کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ”سب سے پہلے ناروے نے روسی بلیک جیٹ بمباروں کو شمال کی طرف جاتے ہوئے دیکھا اور اپنے 2 ایف 16 طیاروں کوان کا تعاقب کرنے کا حکم دیا جو روسی طیاروں کے ساتھ ساتھ سکاٹ لینڈ کے شمال تک پرواز کرتے رہے۔

اس کے بعد برطانوی فضائیہ نے ایک تائفون طیارے کوان کے پیچھے لگایا جس نے شیٹ لینڈ کے مغرب میں ان طیاروں کو جا لیا۔برطانوی رائل ائیر فورس کے مطابق کسی بھی موقع پر روسی طیارے برطانیہ کی فضائی حدود میں داخل نہیں ہوئے۔فرانس کی وزارت دفاع کا کہنا تھا کہ ” اس کے بعد روسی طیارے آئرلینڈ کے مغرب سے ہوتے ہوئے آگے بڑھے اور ان کا سامنا فرانس کے دو رافیل جنگی جہازوں سے برٹنی کے ساحل سے 100 کلو میٹر دور ہوا۔فرانس کے دو مزید طیاروں نے بعد میں اس وقت روسی طیاروں کا پیچھا کیا جب وہ جنوب کی طرف پرواز کر رہے تھے۔“آخر میں سپین نے دو ایف 18 طیارے اڑائے جن کا روسی طیاروں سے بلبائو کے شمال میں سامنا ہوا۔ اس کے بعد روسی طیارے واپس چلے گئے۔آئس لینڈ نے بھی روس سے شکایت کی ہے کہ اس کے ٹی یو 1600 بلیک جیک بمباروں نے اسی دن اس کے دو سویلین جہازوں کے انتہائی قریب سے پرواز کی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -