آئی ایف سی ٹیکسٹائل کے شعبہ کی استعدادکار میں بہتری کیلئے کام کریگی

آئی ایف سی ٹیکسٹائل کے شعبہ کی استعدادکار میں بہتری کیلئے کام کریگی

اسلام آباد (اے پی پی) مجموعی قومی برآمدات میں ٹیکسٹائل کے شعبہ کی برآمدات کا حصہ 60 فیصد تک ہے جبکہ پاکستان کپاس پیدا کرنے والا دنیا کا چوتھا بڑا ملک ہے اور ملک کی معیشت میں ٹیکسٹائل کے شعبہ کا کردار بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔ عالمی بینک گروپ کا ادارہ انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن (آئی ایف سی) پاکستان میں ٹیکسٹائل کے شعبہ کی استعدادکار میں بہتری، توانائی کے ضیاع کو روکنے اور گرین ہاؤس گیسز کے اخراجات میں کمی کیلئے معاونت فراہم کرے گا۔ آئی ایف سی پاکستان کے کنٹری مینجر ندیم صدیقی نے کہا ہے کہ آئی ایف سی نے امریکہ کی ایک کمپنی سے معاہدہ کیا ہے جس کے تحت پاکستان میں ٹیکسٹائل کی صنعت کی کارکردگی میں بہتری اور لمبی مدت کیلئے پائیدار استحکام کے حوالے سے اقدامات کئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ منصوبہ کے تحت توانائی کی بچت اور اس سے زیادہ سے زیادہ استفادہ سمیت پانی کے استعمال میں کمی کیلئے اقدامات کئے جائیں گے جبکہ ماحولیاتی آلودگی میں کمی کے سلسلہ میں صنعتوں سے گرین ہاؤس گیسز کے اخراج میں بھی کمی لائی جا سکے گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کپاس پیدا کرنے والا دنیا کا چوتھا بڑا ملک ہے اور اس کی برآمدات میں ٹیکسٹائل مصنوعات کا حصہ 60 فیصد کے قریب ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تجارتی اعدادوشمار کے مطابق پاکستان کی مجموعی قومی پیداوار (جی ڈی پی) میں شعبہ کا حصہ 9 فیصد ہے تاہم پاکستان کے صنعتی شعبہ میں استعمال ہونے والا 70 فیصد پانی ٹیکسٹائل کا شعبہ استعمال کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایف سی شعبہ کی اہمیت اور عالمی ترقیاتی مقاصد کے حصول کیلئے شعبہ کی پائیدار ترقی اور فروغ میں معاونت فراہم کرے گا۔

مزید : کامرس