غریب آبادیوں، ریڑھی بانوں کو تختہ مشق بنانا قابل مذمت ہے،نصیر احمد

غریب آبادیوں، ریڑھی بانوں کو تختہ مشق بنانا قابل مذمت ہے،نصیر احمد

لاہور( نمائندہ خصوصی )پیپلزپارٹی انسانی حقو ق ونگ لاہور کے رہنماء نصیر احمد، عبدالکریم میو نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا کہ تجاوزات کا خاتمہ درست عمل ہے۔ لیکن غریب آبادیوں، ریڑھی بانوں، خوانچہ فروشوں، سیحی آبادیوں، کو تختہ مشق بنانا قابل مذمت فعل ہے۔

غریب بستیوں کے مکینوں نے یہ مکانات 30 سال سے بھی زائد عرصہ پہلے خرید ے تھے۔ اس وقت بھی ایل ڈی اے اور دیگر ادارے موجود تھے اور ان محکموں نے ان افراد کو نہ صرف مکانات بنانے کی اجازت دی بلکہ سوئی گیس، واسا اور بجلی کے حکام نے انہیں تمام تر سہولتیں فراہم کی۔ پنجاب بجلی کے حکام نے انہیں تمام تر سہولتیں فراہم کی پنجاب حکومت ان تجاویزات کو قائم کروانے والوں کو کھلی چھٹی دی ہوئی ہے اور ان کے خلاف کسی بھی قسم کی کوئی کاروائی نہیں ہو رہی ہے۔

انہون نے کہا کہ ان تجاوزات اور کچی آبادی بنانے والے افسران کو عبرتک انشان بنایا جائے تاکہ آئندہ کسی بھی آفیسر کو غیر قانونی قائم کرنے کی جرات نہ ہو۔ غریب افراد عمر بھر کی کمائی سیس 2-3 مرلے کا گھر بنائے ہیں اور بعد میں پتہ چلتا ہے کہ یہ سوسائٹی اور علاقہ غیر قانونی ہے۔ محنت مزدوری کرنے والے افراد ٹھیلے اور بازاروں میں گھوم پھر کر محنت مزدوری کرتے ہیں کارپوریشن واولے ان سے روزانہ بھتہ وصول کر کے کام کرنے کی اجازت دیتے ہیں۔ لیکن افسران بالا اور حکومت کا پریشر آنے پر آپریشن کرتے ہیں انہوں نے مطالبہ کیا کہ غریبوں کا مکان کرانے پر انہیں متبادل مکان فراہم کیا جائے اور ریڑھی بانوں اور خوانہ فروشوں کے لیے متبادل روز گار کا انتظام کیا جائے اور متبادل انتظامات نہ ہونے تک آپریشن ملتوی کیا جائے۔

ف

Ba

مزید : میٹروپولیٹن 1