نیب ان ایکشن ، پنجاب کانسٹیبلری ملتان میں 23کروڑ کرپشن کیس ، ایس پی محمد باقر لیہ سے گرفتار

نیب ان ایکشن ، پنجاب کانسٹیبلری ملتان میں 23کروڑ کرپشن کیس ، ایس پی محمد باقر ...

ملتان(وقائع نگار)نیب ملتان ان ایکشن پنجاب کانسٹیبلری ملتان میں 23 کروڑ سے زائد کی کے کرپشن سکینڈل میں سابق ڈی ڈی او محمد باقر کو لیہ سے گرفتار کرلیا۔ واضح رہے کہ محمد باقر ان دنوں ایس پی انوسٹیگیشن لیہ تعینات تھے،گزشتہ روز نیب ملتان کی ٹیم نے لیہ پہنچ کر انہیں اس وقت(بقیہ نمبر48صفحہ7پر )

حراست میں لیا جب وہ اپنے دفتر میں سرکاری امور کی سرانجام دہی میں مصروف تھے۔ان پر الزام ہے کہ انہوں نے بطور ڈی ڈی او کروڑوں روپے کی بے ضابطگیاں کیں۔باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سابق کمانڈنٹ پنجاب کانسٹیبلری ایس ایس پی محمود الحسن کو بھی گرفتار کیے جانے کا امکان ہے۔اس کی وجہ یہ کہ بعض چیک اور دستاویزات پر ان کے دستخط پائے گئے ہیں۔ ایس ایس پی محمود الحسن کی گرفتاری جلد متوقع ہے۔واضح رہے کہ اس سے قبل نیب نے ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفیسر باسط مقبول ہاشمی ، سینئر آڈیٹر طاہر گجر،ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفیسر قمر مگسی،‘ ڈپٹی ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفیسر سعید احمد، محمد علی جعفری ‘ اسسٹنٹ اکاؤنٹس آفیسر ملک وقاص ‘ ‘ آڈیٹرز مدثر دریشک، احمد بخش جسکانی ،کی پنچ آپریٹر شکیل احمدکو گرفتار کر کے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا ہے۔تاہم بشیر احمد اور طاہر بخاری کو تاحال گرفتار نہ کیا گیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر