شہباز شریف گرفتار ، صاف پانی سکینڈل میں بیان ریکارڈ کرانے گئے نیب نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکیم کیس میں پکڑ لیا ، آج احتساب عدالت میں پیش کیا جائیگا

شہباز شریف گرفتار ، صاف پانی سکینڈل میں بیان ریکارڈ کرانے گئے نیب نے آشیانہ ...

لاہور(جنرل رپورٹر)قومی احتساب بیورو(نیب) لاہور نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکینڈل میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب و قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو گرفتار کرلیا ،شہباز شریف صاف پانی کمپنی اسکینڈل میں نیب کو بیان ریکارڈ کروانے گئے تھے، شہباز شریف کو آج لاہور کی احتساب عدالت پیش کر کے ان کا جسمانی ریمانڈ حاصل کیا جائے گا،سابق وزیراعلیٰ پنجاب کو گرفتار ملزم فواد حسن فوادکے بیان کی روشنی میں گرفتار کیا گیا ہے، آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکینڈل میں حکومت پنجاب کی طرف سے من پسند کمپنی کو ٹھیکہ دینے کا الزام ہے، نیب نے شہباز شریف کی گرفتاری سے متعلق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو آگاہ کر دیا ہے۔جمعہ کو نیب ترجمان کے مطابق سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو آشیانہ اقبال ہاؤسنگ سکینڈل میں گرفتار کرلیا گیا ہے اور انہیں آج احتساب عدالت میں پیش کر کے جسمانی ریمانڈ حاصل کیا جائے گا۔ نیب ذرائع کے مطابق سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف صاف پانی کمپنی اسکینڈل میں نیب کو بیان ریکارڈ کروانے گئے تھے اور صاف پانی کمپنی سکینڈل میں ان کابیان بھی ریکارڈ کیا گیا ۔ نیب ذرائع کے مطابق شہباز شریف کی گرفتاری آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکینڈل میں من پسند کمپنی کو ٹھیکہ دینے کے نتیجے میں عمل میں لائی گئی ہے، شہبازشریف کے سابق پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد نے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکیم کا ٹھیکہ ٹینڈر جیتنے والی کمپنی کے مالک پر دباؤ ڈال کر واپس لیا اور اپنی من پسند کمپنی کو یہ ٹھیکہ دیا، جس کی وجہ سے ناصرف منصوبے میں تاخیر ہوئی اور منصوبے کی لاگت بڑھ گئی بلکہ منصوبے کے اجراء میں بھی بے ضابطگی ہوئی،جس کمپنی سے فواد حسن فواد اور دیگر افسران نے دباؤ ڈال کر یہ ٹھیکہ واپس لیا اس کمپنی کے مالک نے نیب لاہور میں ایک درخواست دی جس پر نیب نے کاروائی کرتے ہوئے آشیانہ اقبال ہاؤسنگ اسکینڈل میں باضابطہ طور پر انکوائری شروع کی تھی، جب فواد حسن فواد کو اس سکینڈل میں گرفتار کیا گیا تو اس نے نیب کے سامنے ایک ہی موقف رکھا کہ جو کچھ بھی میں نے کیا وہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کے حکم پر کیا۔ ذرائع کے مطابق شہباز شریف سے اس کیس میں پہلے بھی بیانات ریکارڈ کئے گئے لیکن اب کی بار شہباز شریف جب بیان ریکارڈ کروانے نیب کی تفتیشی ٹیم کے سامنے پیش ہوئے تو اس وقت انہیں بتایا گیا کہ آپ کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ ذرائع کے مطابق نیب نے شہباز شریف کی گرفتاری سے متعلق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو آگاہ کر دیا ہے۔ دوسری جانب شہباز شریف نے مریم نواز کے وکیل امجد پرویز کی خدمات حاصل کرلی ہیں جو آج ان کی طرف سے احتساب عدالت میں پیش ہوں گے۔ شہباز شریف کی آشیانہ ہاؤسنگ سکینڈل میں گرفتار ی سے قبل کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کے لئے نیب کی عمارت کے باہر رینجرز اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کر دی گئی ۔ شہباز شریف اپنی ذاتی گاڑی پر نیب لاہور کے دفتر پہنچے جہاں پر انہیں پہلے حراست میں لیا گیا اور کچھ دیر بعد باضابطہ گرفتار کر لیا گیا۔ اس سے قبل شہباز شریف کی پیشی کے بعد نیب کے دفتر کو آپریشنل طور پر بند کر دیا گیا اوردور دراز سے آنے والے درجنوں سائلین کو مرکزی دروازے پر ہی روک لیا گیا ۔ ۔قومی احتساب بیورو ( نیب )کی جانب سے سابق وزیر اعلیٰ و مسلم لیگ (ن) کے صدر محمد شہباز شریف کی گرفتاری کے بعد ان کی ذاتی گاڑی واپس بھیج دی گئی ۔ شہباز شریف سفید رنگ کی پراڈو میں پیشی کیلئے نیب دفتر پہنچے تھے۔

مزید : صفحہ اول