ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن کی ووٹرز لسٹوں میں تبدیلی کے حوالے سے کیس کا فیصلہ محفوظ

ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن کی ووٹرز لسٹوں میں تبدیلی کے حوالے سے کیس کا فیصلہ ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے قراردیا ہے کہ بادی النظر میں کلبوں کے معاملات میں پی سی بی کا کردار شفاف نظر نہیں آتا،اگر پی سی بی کے معاملات میں شفافیت ہوتی تو عدالتوں میں اتنی زیادہ تعداد میں معاملات نہ آتے۔جسٹس علی اکبر قریشی نے یہ ریمارکس ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن کی ووٹرز لسٹوں میں تبدیلی کے حوالے سے کیس کا فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے دیا۔درخواست گزار کے وکیل احسن بھون نے موقف اختیار کیا کہ انتخابی شیڈول جاری ہونے کے بعدبھی ووٹرز لسٹوں کو تبدیل کیا جاسکتاہے۔پی سی بی کے وکیل تفضل رضوی نے بتایا کہ پی سی بی الیکشن قوانین کے تحت انتخابی شیڈول جاری ہونے کے بعد ووٹرز لسٹ کو تبدیل نہیں کیا جا سکتا۔31 جنوری 2018ء کو انتخابی شیڈول جاری ہوگیا تھا،5 مارچ 2018ء انتخابات کی تاریخ مقرر ہوئی مگر فریقین کے درمیان قانونی جنگ شروع ہو گئی،معاملہ عدالت میں آنے کی وجہ سے انتخابات نہیں کرا ئے جاسکے اور انتخابات کی تاریخ تبدیلی ہوتی رہی۔فاضل جج نے کہا کہ عدالتی حکم امتناعی کو ختم کرانے کے لئے پی سی بی نے قانونی چارہ جوئی کیوں نہیں کی؟فاضل جج نے کہا کہ بادی النظر میں اس معاملے میں پی سی بی کا کردار شفاف نہیں ہے ،فریقین کے دلائل مکمل ہونے کے بعد عدالت نے اپنا فیصلہ محفوظ کرلیا۔

فیصلہ محفوظ

مزید : صفحہ آخر