والد کی گرفتاری ، نیب نیازی گٹھ جوڑ : حمزہ شہباز ، نواز شریف سے رابطہ ، تازہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال ، گرفتاری کیخلاف لیگی کارکنوں کا شدید احتجاج

والد کی گرفتاری ، نیب نیازی گٹھ جوڑ : حمزہ شہباز ، نواز شریف سے رابطہ ، تازہ ...

لاہور (جنرل رپورٹر)مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈ ر محمد شہباز شریف کے صاحبزادے حمزہ شہباز نے نیب کی جانب سے شہباز شریف کی گرفتاری کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ والد کی گرفتاری نیب، نیازی گٹھ جوڑ کا نتیجہ ہے،ہر الیکشن سے قبل مسلم لیگ (ن) کے ہی لوگوں کو گرفتار کیا جاتا ہے، حکومت میں بیٹھے لوگ جو ابھی کنٹینر کلچر سے باہر نکلے انکی زبان میں گفتگو نہیں کروں گا، چوہدری لطیف اصل مجرم ہے نیب سے پلی بارگین جان چھڑائی اور اینٹی کرپشن کیسز میں مفرور ہے اسکو پشاور میٹرو بس کا ٹھیکہ نیازی صاحب نے دے دیا، نندی پور منصوبے میں اربوں روپے خرد برد ہے اسکے خلاف انکوائری کی جائے۔ آج تک کسی کو جرات نہیں ہوئی کہ بابر اعوان کو کوئی گرفتار کرسکے، دھاندلی میرے سینے پر زخم نہیں بلکہ جمہوریت کے سینے پر زخم ہے، دھاندلی کا زخم مٹانہیں کہ آ پ نے دھونس بھی جمانا شروع کردی، ہم نے اپوزیشن ، مارشل لاء اور جیلیں بھی دیکھیں لیکن مجھے فخر ہے کہ میں شہبا ز شریف کا بیٹا ہوں اور نواز شریف کا بھتیجا ہوں ، عمران خان کو ضمنی الیکشن میں بھی مسلم لیگ (ن) سے ڈر لگتا ہے، پی ٹی آئی ابھی تک خوف زدہ ہے۔ وہ جمعہ کو لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے ۔ حمزہ شہباز شریف نے کہا کہ ہر الیکشن سے قبل مسلم لیگ (ن) کے ہی لوگوں کو گرفتار کیا جاتا ہے خواہ عام انتخابات ہوں یا ضمنی انتخابات ہوں ٹارگٹ ہمیشہ مسلم لیگ (ن)ہی ہوتی ہے اور یہ فرض نیب سرانجام دیتی ہے۔ ہم شہباز شریف کی گرفتاری کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔ حکومت میں بیٹھے لوگ جو ابھی کنٹینر کلچر سے باہر نکلے انکی زبان میں گفتگو نہیں کروں گا۔ انہوں نے کہا کہ جس کیس میں شہباز شریف کو گرفتار کیا گیا اور الزام لگایا گیا کہ آپ نے اس ٹھیکیدار کا ٹھیکہ منسوخ کردیا۔ پاکستانی قوم نوٹ کرے کہ یہ وہ ٹھکیدار ہے جس کا نام چوہدری لطیف ہے، اورنج لائن کیس میں خرد برد کی اور نیب نے نوٹس لیا، سرگودھا کے ایک منصوبے میں خرد برد ہوئی اور اس بندے نے پلیبارگین میں نیب کی مطلوبہ رقم سے 10گنا زیادہ رقم دے کر اپنی جان چھڑائی۔ محمد شہباز نے یہ ٹھیکہ کینسل نہیں کیا تھا بلکہ پی ایل ڈی سی بورڈ کی فائنڈنگ کے اوپر یہ ٹھیکہ کینسل کیا گیا۔ چوہدری لطیف مجرم ہے نیب سے پلی بارگین جان چھڑائی اور اینٹی کرپشن کیسز میں مفرور ہے اسکو پشاور میٹرو بس کا ٹھیکہ نیازی صاحب نے دے دیا۔ حمزہ شہباز نے کہا کہ چوہدری لطیف آج بھی نیب میں پیشیاں بھگت رہا ہے مگر کوئی اسکو گرفتار نہیں کرتا۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ نندی پور منصوبے میں اربوں روپے خرد برد ہے اسکے خلاف انکوائری کی جائے۔ آج تک کسی کو جرات نہیں ہوئی کہ بابر اعوان کو کوئی گرفتار کرسکے۔ ہیلی کاپٹر ریفرنس میں عمران خان پر اسکو بھی نیب بلاتی ہے۔ جعلی مینڈیٹ کے تحت عمران خان وزیر اعظم بن کر چیئرمین نیب سے ملاقات کرتا ہے۔ آج تحریک انصاف نے نیب کو خراج عقیدت پیش کرنے کی قرار داد پنجاب اسمبلی میں جمع کروادی ہے۔ وزیراطلاعات فواد چوہدری کہتا ہے کہ ابھی اور بھی بہت سی گرفتاریاں ہونی ہیں۔ یہ باتیں ہمارے لیے نئی نہیں۔ پاکستانی قوم جانتی ہے کہ 10سال نواز شریف اور شہباز شریف کے احتساب کے نام پر مجھے لاہور سے باہر جانے کی اجازت نہیں دی گئی۔ اس دور میں بھی 16، 16گھنٹے نیب کی پیشی کیلئے دفتر کے باہر بیٹھتا تھا۔ مشرف دور میں نیب چیئرمین نے مجھے نیب دفتر میں بلا کر کہا کہ مشرف صاحب نے نیب پر دباؤ ڈالا ہوا ہے۔ نیب نے خود اعتراف کیا تھا کہ نواز فیملی کے خلاف کوئی بھی ثبوت حاصل نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان آپ سے تو دودن بھی حوالات میں نہیں رہا جاسکتا۔ دھاندلی میرے سینے پر زخم نہیں بلکہ جمہوریت کے سینے پر زخم ہے۔ دھاندلی کا زخم مٹانہیں کہ آپ دھونس بھی جمانا شروع کردی۔ جو مرضی کرلیں آپ کچھ بھی صیحح سے نہیں کرسکتے۔ وزیر اعظم ہاؤس کی بھینسیں بیچنے کے معاملے پر پاکستان کی تذلیل کے سوا اور کچھ نہیں ملا۔ سیاست کرکٹ کا میدان نہیں۔ اس میں جلاوطنی ، جیلیں اور پھانسی کے پھندوں پر بھی چڑھنا پڑتا ہے۔ اپوزیشن کی جانب سے آپ تنقید تک برداشت نہیں کرسکتے۔ ہم نے اپوزیشن ، مارشل لاء اور جیلیں بھی دیکھیں لیکن مجھے فخر ہے کہ میں شہبا ز شریف کا بیٹا ہوں اور نواز شریف کا بھتیجا ہوں جنہوں نے مجھے ہمیشہ سکھایا کہ اقتدار کی سیڑھی نہیں چڑھتی بلکہ یہ سکھایا کہ کفن کی جیب نہیں ہوتی۔ حمزہ شہباز نے کہا کہ لوگ ابھی بھی نواز شریف کے حق میں بولتے ہیں۔ نواز شریف نے اپنی فیملی کی بھی پرواہ نہ کی اور قومی فریضے کو بخوبی نبھایا ۔ احتساب عدالت کے جج نے بھی اعتراف کیا کہ نواز شریف کیخلاف کوئی کرپشن ثابت نہیں ہوسکی۔ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوکررہے گا۔ قوم ابھی بھی ہمارے ساتھ ہے ۔ اللہ کا کرم ہے کہ ہم ابھی بھی لوگوں کے دلوں میں بستے ہیں۔ عمران خان کو ضمنی الیکشن میں بھی مسلم لیگ (ن) سے ڈر لگتا ہے۔ پی ٹی آئی ابھی تک خوف زدہ ہے۔ چین ابھرتی طاقت ہے جنہوں نے پاکستان میں 50ارب کی سرمایہ کاری کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ علیم خان قبضہ گروپ کی علامت ہے۔ عمران خان نے ہمشیہ کہا کہ ہم شفافیت پر یقین رکھتے ہیں لیکن آپ نے ایسے لوگوں کو اقتدار میں لایا جو لوگ کرپٹ ہیں اور انہیں نیب کے نوٹسز آنے ہیں۔ مجھے فخر ہے کہ شہباز شریف اور نواز شریف نے اربوں کے منصوبوں میں کوئی ڈیل نہیں کی۔ وزیراعلیٰ پنجاب قتل کے مقدمے میں دیت دے کر بری ہوئے ہیں۔ اگر نیازی صاحب نے روش نہ بدلی تو ایوانوں اور سڑکوں پر جنگ لڑیں گے۔ آپ کا تماشہ زیادہ دیر تک چلنے والا نہیں ہے۔ کیا فواد چوہدری کو خواب آیا کہ مزید گرفتاریاں ہونگی۔ غیر قانونی تعمیرات کیخلاف آپریشن میں ایک نوٹس نیازی صاحب کو بھی ملا۔ جعلی مینڈیٹ والوں نے بلدیاتی نظام پر شب خون مارنے کی بھی کوشش کی ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد و سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف سے حمزہ شہباز نے رابطہ کر کے اپنے والد شہباز شریف کی گرفتاری سے متعلق صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔ماڈل ٹاؤن سیکرٹریٹ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے حمزہ شہباز نے بتایا کہ نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ سپیکر قومی اسمبلی کو ریکوزیشن کی جائے اور درخواست کی جائے کہ وہ قائد حزب اختلاف محمد شہباز شریف کے پروٹیکشن آرڈر جاری کریں۔

حمزہ شہباز

اسلام آباد،لاہور (جنرل رپورٹر )مسلم لیگ (ن) نے پارٹی صدر واپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی محمد شہباز شریف کو نیب کی جانب سے گرفتار کئے جانے پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپیکر قومی اسمبلی کی اجازت کے بغیر قائد حزب اختلاف کی گرفتاری خلاف قانون ہے،شہباز شریف نے اپنی زندگی قوم کی ترقی اور خوشحالی کے لئے وقف کی، عوامی خدمت گاروں کو محض سیاسی مخالف ہونے پر عبرت کا نشان بنانے کی روش پہلے بھی ملک و قوم کا نقصان کرچکی ہے،مسلم لیگ (ن) کیلئے یہ ہتھکنڈے نئے نہیں،آمر مشرف کا دور جبروستم مسلم لیگ (ن) کی قیادت، کارکنوں اور حامیوں نے جرات، و بہادری اور دلیری سے گزارا ہے، ضمنی الیکشن کے موقع پر گرفتاری سے ثابت ہوگیا حکومت مسلم لیگ (ن) سے کتنی خوفزدہ ہے، تمام صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں ،قائدین کی مشاورت کے بعد آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیاجائے گا۔پارٹی صدر واپوزیشن لیڈر محمد شہباز شریف کی گرفتاری پر مسلم لیگ (ن) کی پارلیمانی پارٹی نے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ہوئے کہا ہے کہ سپیکر قومی اسمبلی کی اجازت کے بغیر قائد حزب اختلاف کی گرفتاری خلاف قانون ہے۔پارلیمانی پارٹی نے کہا ہے کہ عوامی خدمت گاروں کو محض سیاسی مخالف ہونے پر عبرت کا نشان بنانے کی روش پہلے بھی ملک و قوم کا نقصان کرچکی ہے۔چین، ترکی سمیت جس کو ساری دنیا نے شاباش دی، اس کی مثال دی، نیب نے اسے گرفتار کرلیا ہے ۔مسلم لیگ (ن)کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ حکومت ڈرامے کر کے اپنی ملک دشمن کارکردگی سے عوام کی نظریں نہیں ہٹا سکتی، فواد چوہدری قوم کو یہ بھی بتاتے کہ شہباز شریف نے کبھی سرکاری رہائش گاہ یا ملٹری سیکرٹری کا گھر استعمال نہیں کیا، شہباز شریف کینسر میں مبتلا رہے لیکن علاج سرکاری خرچے پر نہیں کروایا،فواد چوہدری ذاتی کاموں کیلئے عمران خان کے خیبرپختونخوا کا سرکاری ہیلی کاپٹر استعمال کرنے پر جواب دیں۔ جمعہ کو مریم اورنگزیب نے کہا کہ شہبازشریف کے زیراستعمال پنجاب حکومت کا جہاز سول ایوی ایشن اتھارٹی نے ناقابلِ پرواز قرار دیا تھا، لیکن استحقاق کے باوجود سابق وزیراعلی پنجاب نے 4 ارب روپے مالیت کا نیا ہیلی کاپٹر نہ خریدا اور قومی بچت کی خاطر زندگی کا خطرہ مول لے کر ناکارہ ہیلی کاپٹر استعمال کرتے رہے، یہ جہاز بعد میں گر کر تباہ بھی ہوگیا تھا۔دریں اثناء گزشتہ روز مسلم لیگ (ن) کے رہنماء ملک محمد احمد خان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف نے وفاق سے لئے گئے جہاز کا خرچ جیب سے ادا کیا، حکومت کو چیلنج کرتے ہیں 35کروڑ کا الزام ثابت کرے،35کروڑ والی بات پی ٹی آئی حکومت کے گلے کا پھندا ہے، نواز شریف کی حکومت میں بھی بہت سی گاڑیاں نیلام کی گئی تھیں۔انہوں نے کہا ہے کہ شہباز شریف نے وفاق سے لئے گئے جہاز کا خرچ جیب سے ادا کیا، حکومت کو چیلنج کرتے ہیں 35کروڑ کا الزام ثابت کرے،35کروڑ والی بات پی ٹی آئی حکومت کے گلے کا پھندا ہے۔جمعہ کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے ملک احمد خان نے کہا کہ وفاقی وزیر نے 35کروڑ کا بیان بالکل غلط دیا، اگر یہ بات ثابت ہو گئی توہم اپنی جیب سے دیں گے، اگر یہ بات درست نہ ہوئی تو پھر تحریک انصاف کو اس پر معافی مانگنا ہو گی،نواز شریف کی حکومت میں بھی بہت سی گاڑیاں نیلام کی گئی تھیں۔وفاقی وزیر اطلاعات نے حقائق کے برعکس گفتگو کی ہے، فواد چوہدری نے دو سو گنا غلط اعداد و شمار کئے ہیں۔ہمیں نیب کے بلانے پر کوئی اعتراض نہیں، فواد چوہدری عمران خان کے نقش قدم پر چل رہے ہیں، شہباز شریف نے کرپٹ مافیا کو پکڑ کر مقدمات درج کرئے تھے، حکومت بتائے کہ محمود الرشید استعفےٰ کیوں نہیں دے رہے۔

مسلم لیگ (ن)

لاہور( این این آئی) مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں نے سابق وزیر اعلیٰ شہباز شریف کی گرفتاری کیخلاف نیب کے دفتر کے باہر احتجاج کیا ، کارکن ظلم کے ضابطے ہم نہیں مانتے ، غنڈہ گردی بند کرو، میاں تیرے جانثار بے شمار بے شمار ، شیر شیر کے نعرے لگاتے رہے۔ تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی گرفتاری کی اطلاع ملتے ہی کارکنوں کی ایک بڑی تعداد ٹھوکر نیاز بیگ پر واقع نیب کے دفتر کے باہر پہنچ گئے اور قیادت سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے نعرے لگائے ۔ کارکنوں نے میاں تیرے جانثار بے شمار بے شمار، ظلم کے ضابطے ہم نہیں مانتے ، غنڈہ گردی بند کرو اور شیر شیر کے نعرے لگاتے رہے ۔ اس موقع پر پولیس کی بھاری نفری بھی نیب کے مرکزی درواز ے اور اطراف میں تعینات رہی تاہم کارکنوں کے احتجاج کو روکنے کیلئے کسی طرح کی مداخلت نہ کی گئی ۔اس موقع پر شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ہم پر پہلے بھی الزامات لگائے گئے لیکن ہم خدا کے فضل سے بری ہوئے ۔ عام انتخابات سے قبل نواز شریف کو گرفتار کیا گیا اور اب جیسے ہی ضمنی انتخابات قریب آئے ہیں شہباز شریف کو گرفتار کر لیاگیا ہے ۔ ان گرفتاریوں سے بوکھلاہٹ واضح ہے ۔ پاکستان میں جو بھی شخص ملک وقوم کی خدمت کرتا ہے اسے گرفتار کر لیا جاتا ہے اور عدالتوں میں گھسیٹا جاتا ہے اور یہ ملک کی بد قسمتی ہے ۔ لیگی رہنماؤں چوہدری عامر صدیق اور میاں عثمان نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے کارکن اس طرح کے ہتھکنڈوں سے نہ پہلے مرعوب ہوئے اور نہ آئندہ ہوں گے ۔ ہم میدان میں ہے اور ڈٹ کر مقابلہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہباز شریف کی گرفتاری سے کارکنوں کے حوصلے پست نہیں ہوں گے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول