وزیر اعلیٰ محمود خان سے سابق سٹیٹ کے ملازمین کے وفد کی ملاقات

وزیر اعلیٰ محمود خان سے سابق سٹیٹ کے ملازمین کے وفد کی ملاقات

جندول نمائندہ(نمائندہ پاکستان) سب ڈویژن جندول سابق سٹیٹ ملازمین کے وفد کا وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ محمود خان کیساتھ وزیر اعلیٰ ہاوس میں ملاقات ، وزیر اعلیٰ کو پانچ نکاتی ایجنڈہ پیش کر دیا ۔ وزیر اعلیٰ نے مسائل حل کرانے کیلئے تین دن کا وقت مانگ لیا ،تفصیلات کے مطابق گذشتہ چھ روز سے ڈپٹی کمشنر کے دفتر کے سامنے دھرنہ پر بیٹھے سابق سٹیٹ ملازمین کا وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ نے نوٹس لے لیا ، تحریک انصاف کے ضلعی صدر محمد بشیر خان کی سربراہی میں وزیر اعلیٰ نے سابق سٹیٹ ملازمین کے وفد کو وزیر اعلیٰ ہاوس طلب کیا ۔ وفد میں ضلع دیر لوئر کے ممبران صوبائی اسمبلی ملک شفیع اللہ خان ، ہمایون خان ، لیاقت علی خان ، حاجی بہادر خان سابق سٹیٹ ملازمین کے صدر ملک عبد الستار خان جنرل سیکرٹری سربلند خان ،تحصیل منڈا کے ناظم ہمایون خان و دیگر مشران موجود تھے ۔ مشران نے وزیر اعلیٰ کو پان نکاتی ایجنڈہ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ سابق سٹیٹ ملازمین کے آراضیات پر ہونے والے تعمیرات سے پابندی اٹھائی جائے ،انتظامیہ نے جو املاک مسمار کئے ہیں ان کا ازالہ کیا جائے ، آراضیات1974کے شیخ رشید لینڈ کمیشن فیصلہ کے مطابق انہیں الاٹ کر دی جائے ، انتظامیہ کے ٹاوٹس کا داخلہ دفاتر میں بند کیا جائے ، رشوت لینے میں ملوث بد نام لوکل افسران کو ضلع بدر کیا جائے۔ وزیر اعلیٰ نے وفد سے تحریری درخواستیں لیکر تین دن میں مسئلہ کو دیکھنے نے بعد حل نکالنے کا وعدہ کیا اور کہا کہ کرپشن کے حوالہ سے پیش کئے جانے والے تجاویز کی روشنی میں کمیٹی تشکیل دی جائے گی اور کرپٹ عناصر کے خلاف سخت کاروائی ہوگی ۔دوسری جانب سابق سٹیٹ ملازمین نے وزیر اعلیٰ کی کاروائی تک دھرنہ جاری رکھنے کا اعلان کیا اور کہا کہ جب تک ان کے مسائل پر غور نہیں کیا جائے گا وہ دھرنے پر بیٹھے رہے گے۔

مزید : کراچی صفحہ اول