کلرسیداں،نجی تعلیمی اداروں کی کینٹین بچوں میں بیماریاں پھیلانے لگیں

کلرسیداں،نجی تعلیمی اداروں کی کینٹین بچوں میں بیماریاں پھیلانے لگیں

کلر سیداں(تحصیل رپورٹر)کلر سیداں اور گردونواح میں نجی تعلیمی اداروں میں قائم کینٹینیں بچوں کی مختلف بیماریوں کا سبب بننے لگیں جنہیں آج تک کسی ادارہ نے چیک کرنے کی ضرورت ہی محسوس نہیں کی۔کلر سیداں میں بعض والدین نے شکایت کی ہے کہ ان کے بچے پیچش اور الٹیوں کے عارضے میں مبتلا ہو گئے ہیں اور ان کی بنیادی وجہ نجی تعلیمی اداروں میں قائم کینٹینیں ہیں جہاں مضر صحت اشیاء بچوں کو فروخت کی جاتی ہیں ۔والدین نے بتایا کہ اکثر زائد العیاد اشیاء کو کینٹینوں میں فروخت کر دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے بچے پیٹ کی بیماریوں میں مبتلا ہو جاتے ہیں۔تحصیل انتظامیہ اور فوڈ اتھارٹی نے کبھی ان کینٹینوں کا رخ کرنے کی ضرورت ہی محسوس نہیں کی جس کی وجہ سے سکول انتظامیہ بھی بچوں میں ایسی مضر صحت اشیاء فروخت کر کے ان کی بیماریوں کے فروغ میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔سکول انتظامیہ ایک طرف سٹیشنری سمیت یونیفارم اور دیگر اشیاء سکول کی مخصوص شاپوں سے خریدنے پر مجبور کرتی ہے تو دوسری جانب پاپڑ ،ٹافیاں اور دیگر سستی اور مضر صحت اشیاء فروخت کر کے بچوں میں بیماریاں پھیلانے کا بھی سبب بن رہی ہے۔عوامی حلقوں نے اس امر پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے تحصیل انتظامیہ کو نجی تعلیمی اداروں میں قائم کینٹینوں کو اچانک چیک کرنے اور ذمہ دار وں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر