پاکستان میں چھاتی کا کینسر بہت نمایا ں ہو رہا ہے،فوزیہ بہرام

پاکستان میں چھاتی کا کینسر بہت نمایا ں ہو رہا ہے،فوزیہ بہرام

چکوال( ڈسٹرکٹ رپورٹر)پاکستان میں چھاتی کا کینسر بہت نمایا ں ہو رہا ہے جس کی بنیادی وجہ ماؤں کا بچوں کو اپنا دودھ نہ پلانا ہے ۔اسلامی تعلیمات کے مطابق کے بھی حکم ہے کہ ’’مائیں اپنے بچوں کو دو سال تک اپنا دودہ پلائیں ‘‘ ان خیالات کا اظہارایم این اے فوزیہ بہرام بریسٹ فیڈنگ اینڈ نیوٹریشن ویک منانے کے سلسلے میں ضلع کونسل ہال میں منعقدہ ایک سیمینا رسے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پراے ڈی سی جی قدیر باجوہ ،سی ای او ہیلتھ ڈاکٹر محتار احمداعوان،ایم ایس ڈی ایچ کیوڈاکٹر اسلم اسد،ڈسٹرکٹ کوارڈینیٹرRMNCH ڈاکٹرانجم قدیر،ڈاکٹرز،ایل ایچ ویزاور عوام کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ڈسٹرکٹ کوارڈینیٹرRMNCH ڈاکٹرانجم قدیرنے بتایا کہ محکمہ صحت یونیسف اورIRMNCHمل کریکم سے 6اکتوبر تک پورے پنجاب میں بریسٹ فیڈنگ اینڈ نیوٹریشن ویک منایاجارہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ چکوال کی کل آبادی15لاکھ کے لگ بھگ ہے اس ہفتے کا ٹارگٹ 5سال سے کم عمر کے بچے اندازاً225000ہیں اورغذائی قلت کا شکار بچوں کی تعداد تقریباً ایک لاکھ ہے۔6ماہ سے 2سال تک کے بچوں کی تعدادساٹھ ہزار ہے اورحاملہ خواتین 32000،جبکہ دودھ پلانے والی ماؤں کی تعدا ساٹھ ہزارہے۔ 240000کے قریب خواتین ایسی ہیں جو فیملی پلاننگ کے مختلف طریقے استعمال کر رہی ہیں۔اس ہفتے میں2سے5سال کے بچوں کو پیٹ کے کیڑوں کی گولیاں دی جائیں گی جبکہ غذائی قلت کے شکار بچوں کو غذائیت سے بھرپورچاکلیٹ اور ساشے بانٹے جائیں گے جو بچے اسہال کی کمی کے شکار بچوں کو ORSاورZincکے سیرپ دیے جائیں گے اس کے علاوہ حاملہ عورتوں اور غذائی کمی کی شکار دودھ پلانے والی ماؤں کا بھی علاج کیا جائے گا۔غذائی قلت کے شکار بچوں کے علاج کیلئے ضلع بھر میں 19 BHU،10 RHC،4 THQکے علاوہ ڈی ایچ کیو میںOPTسنٹر بنائے گئے ہیں اور بچوں کو OPTسنٹر سے DHQلانے کیلئے1034فری ایمبولینس سروس بھی استعمال کی جائے گی ور عوام کی آگاہی کیلئے بروشر اور رسالہ جات تقسیم کیے جا رہے ہیں ۔نیوٹریشن سپروائزر ،ایل ایچ ڈبلیواورایل ایچ ایس مل کر اس تمام کام کو سرانجام دے رہی ہیں۔اس وقت ضلع چکوال کی کل 33سائٹس پریہ ویک بنایا جا رہا ہے جن میں ایل اے ڈبلیوز کی تعداد 970،ایل ایچ ایس 50نیو ٹریشن سپروائزرکام کر رہے ہیں۔5اور6اکتوبر کو ہماری ٹیمیں سلمز ایریازجھگی والوں اور بھٹوں پر جاکر بچوں کوکور کریں گی ۔تمام ہسپتالوں میں بریسٹ فیڈنگ اور غذائی قلت کے حوالے سے سٹالز لگائے جا چکے ہیں اور ایل سی ڈی پر عوام کی آگاہی کیلئے ویڈیوز اور میسجزکے کلپس چلائے جا رہے ہیں۔سیمنار میں مقررین جس میں ڈاکٹر شائستہ ، ڈاکٹر احسن افضل ،نیوٹریشن مریم زیدی اے ڈی سی جی اور ایم این اے فوزیہ بہرام نے ماں کے دودھ کی افادیت اور اہمیت پر تفصیلی بات کی ۔ سیمنار سے خطاب کرتے ہوئے نیوٹریشن مریم زیدی نے کہا کہ نوجوان بچوں کی خوراک اچھی ہونی چاہئے ان کو جنک فوڈ اور فاسٹ فوڈ کی بجائے دودھ ،دہی ،گوشت ،انڈا ،فروٹ ،سبزیاں کھلائی جائیں کیونکہ جنک فوڈ کینسر کا باعث بنتے ہیں ۔عروج تبسم سکول آف نرسنگ سی ایم ڈبلیو کی بچیوں نے ایک خوبصورت پیغام بذریعہ سکٹ دیا ۔ڈاکٹر شائستہ ناہید نے کہا کہ حملہ عورت کو کھجور ،پالک ،اور بہتر غذا کے ساتھ ساتھ فولک ایسڈ دینا چاہئے اور پیدائش کے ۳ما ہ بعد ائرن اور کیلشیم دوائی کے طور پر دینا چاہئے ڈاکٹر احسن اقبال نے کہا کے کسی قسم کا ڈبے کا دودھ ماں کے دودھ کا نعم البدل نہیں ہو سکتا حکومت پنجاب بچوں کو 45ساشے ایک ہفتے کے لئے فری فراہم کر رہی ہے۔اے ڈی سی جی قدیر باجوہ نے ماں کے دودھ کی اہمیت اور افادیت پر زور دیتے ہوئے کہا کے اپنے بچوں کو ان کا حق ضرور دیں بچوں کو صرف اپنا دودھ پلائیں جو بچوں کی صحت اور نشونماء بہت ضروری ہے

Back to Conversion Tool

 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر