اور اب WiFi-6 آرہا ہے، اس میں کیا خاصیت ہے؟ جان کر انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

اور اب WiFi-6 آرہا ہے، اس میں کیا خاصیت ہے؟ جان کر انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی ...
اور اب WiFi-6 آرہا ہے، اس میں کیا خاصیت ہے؟ جان کر انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

  

سان فرانسسکو(نیوز ڈیسک)ٹیکنالوجی کی دنیا حیرتناک بھی ہے اور بلا کی تیز بھی، اگرچہ وائی فائی کی ٹیکنالوجی میں صارفین کو ایک عرصے سے تیز رفتار تبدیلیاں دیکھنے کی نہیں مل رہی تھیں۔ اب اس ٹیکنالوجی کے بھی آگے بڑھنے کا وقت آ گیا ہے، اور تبدیلی صرف ٹیکنالوجی میں نہیں آ رہی بلکہ نام میں بھی آ رہی ہے۔ وائی فائی ٹیکنالوجی کا اگلا ورژن ”وائی فائی 6 “ کہلائے گا، جواگلے سال 37 فیصد زیادہ تیز سپیڈ کے ساتھ منظر عام پر آرہا ہے، اور اس کی سگنل رینج بھی موجودہ ٹیکنالوجی کی نسبت کہیں زیادہ ہوگی۔

ٹائمز آف انڈیا کی ایک رپورٹ کے مطابق عالمی وائی فائی تنظیم نے اس ٹیکنالوجی کے لئے استعمال ہونے والے ناموں کو بدل کر سادہ شکل دے دی ہے۔ اب 802.11nکو WiFi-4 کہا جائے گا جبکہ 802.11acکا نام WiFi-5 ہو گا۔ اگلے سال وائی فائی کا نیا ورژن آرہا ہے جس کا نام پرانی ترکیب کے مطابق 802.11ax تھا مگر نئے نظام کے تحت اس کا نام WiFi-6ہو گا۔

جب وائی فائی کی علامت آپ کے کمپیوٹر یا موبائل فون پر ظاہر ہوگی تو روایتی ایک چوتھائی دائروں کے اوپر ٹیکنالوجی کا نمبر بھی لکھا ہوگا، یعنی اس کے اوپر4, 5, یا 6 لکھا ہوگا، جو بھی ٹیکنالوجی آپ کو دستیاب ہوگی اس کے مطابق۔ اس علامت سے آپ کو باآسانی معلوم ہوجائے گا کہ آپ کا ڈیوائس کون سی وائی فائی ٹیکنالوجی استعمال کررہا ہے۔ اگر اس پر جدید ترین ٹیکنالوجی ہوگی تو وائی فائی کے چوتھائی دائروں پر ظاہر ہونے والا نمبر 6ہوگا۔

اگلے سال WiFi-6کے متعارف ہوتے ہی کمپیوٹر اور موبائل فون پر ظاہر ہونے والی وائی فائی کی علامت بھی تبدیل ہوجائے گی۔ نئی وائی فائی ٹیکنالوجی بیک وقت 9 صارفین کو سروس فراہم کرسکے گی۔ اس میں 1024کواڈریچر ایمپلی ٹوڈ ماڈیولیشن موڈ استعمال کیا جائے گا جبکہ اپ لنک اور ڈاﺅن لنک کے لئے آرتھو گونل فریکونسی ڈویژن ملٹی پل ایکسیس (او ایف ڈی ایم اے) استعمال کی جائے گی۔ ان تبدیلیوں کے باعث WiFi-5کی نسبت نئی ٹیکنالوجی یعنی WiFi-6تقریباً 25 فیصد تیز ہوگی۔ ٹیکنالوجی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ 2019ءکے آتے ہی تقریباً ہر قسم کے سمارٹ فون، ہوم راﺅٹر، آئی او ٹی ڈیوائس اور آفس انٹرنیٹ سوئچنگ ڈیوائس WiFi-6پر منتقل ہوجائیں گے۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی