کرپشن پرقابوپائے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرتا ،سی پیک میں بلوچستان کے تحفظات کا ازالہ کیاجائےگا:وزیراعظم عمران خان

کرپشن پرقابوپائے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرتا ،سی پیک میں بلوچستان کے تحفظات ...
کرپشن پرقابوپائے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرتا ،سی پیک میں بلوچستان کے تحفظات کا ازالہ کیاجائےگا:وزیراعظم عمران خان

  

کوئٹہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ پاکستان 28 ہزارارب روپے کامقروض ہے، کرپشن پرقابوپائے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرتا ، بلوچستان میں بہت وسائل موجودہیں جن پر کام کیا جاسکتا ہے،وفاق بلوچستان حکومت کی پوری مدد کرے گا کیونکہ یہ صوبہ ترقی کرے گا توپاکستان ترقی کرے گا،سی پیک میں بلوچستان کے تحفظات کا ازالہ کیاجائےگا۔

نجی ٹی وی چینل ’’جیونیوز‘‘ کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے کوئٹہ میں تقریب سے خطاب کر تے ہو ئے کہا ہے کہ اقتدارمیں آکرسیاسی پارٹیوں نے بلوچستان کانہیں سوچا، ماضی میں بلوچستان کی ترقی پر توجہ نہیں دی گئی،بلو چستان کی ترقی کے لیے پھرپور تعاون کر یں گے،بلوچستان کو ترقی کے دھار ے میں لائیں گے اورسی پیک میں بلوچستان کے تحفظات کا ازالہ کیاجائےگا۔وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہپاکستان 28 ہزارارب روپے کامقروض ہے،کرپشن کی وجہ سے اس ملک کے ادارے تباہ ہوئے،جب تک کرپشن پرقابونہ پایاگیا ہمارا ملک ترقی نہیں کرےگا،چین نے تب ترقی کی جب اس نےکرپشن کے خلاف کام کیا، چین میں کئی وزراکوکرپشن کی وجہ سے سزائیں ملیں،کرپشن پرقابوپائے بغیرکوئی ملک ترقی نہیں کرتا، پاکستان بھی اس وقت ترقی کرے گا جب کرپشن ختم ہوگی کیونکہ کرپشن اداروں کو تباہ کردیتی ہے اور پاکستان کے ساتھ آج تک یہی ہوتا آیا ہے،اب تک نااہل لوگوں نے اداروں کو لوٹا لیکن اب ایسا نہیں ہوگا کیونکہ پاکستان کی ترقی کا انحصار کرپشن کے خاتمے پر ہے۔وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ سی پیک کے منصوبوں کا ازسر نو جائزہ لے رہے ہیں اور بلوچستان کو اس کا جائز حق دیں گے،سیاسی جماعتیں صرف ووٹ کےلیے بلوچستان کا رخ کرتی ہیں،ہم بلوچستان کی ترقی کےلیے کام کریں گے، بلوچستان میں انسانی وسائل کی ترقی حکومتی ترجیحات میں شامل ہے، عوام کی فلاح وبہبودکیلئے وزیراعلیٰ بلوچستان کی مددکریں گے۔انہوں نے کہا کہ بلوچستان معدنی وسائل سے مالا مال ہے،اس صوبے کو بھر پور توجہ کی ضرورت ہے، ،پنجاب اورکے پی میں نیا بلدیاتی نظام آرہا ہے،بلدیاتی نظام کی وجہ سے خیبرپختونخوا میں عوام کی حالت بدلی،خیبرپختونخوا طرز کا بلدیاتی نظام بلوچستان کیلیے ناگزیر ہے،خیبرپختونخوامیں اختیارات نچلی سطح پرمنتقل کیےگئے، بلدیاتی نظام کی وجہ سےگاؤں کی سطح پراختیارات منتقل ہوئے۔وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ سی پیک کے منصوبوں کا ازسر نو جائزہ لے رہے ہیں،سی پیک میں بلوچستان کے تحفظات کا ازالہ کیاجائےگااور سی پیک میں بلوچستان کوپوراحق دیاجائےگا،توجہ دینےکی ضرورت ہے، بلوچستان ترقی کرےگاتوپاکستان ترقی کرےگا، وفاقی حکومت بلوچستان کی ہرممکن مددکرےگی، دہشت گردی کی وجہ سےبلوچستان کابہت نقصان ہوا، بلوچستان میں کینسرہسپتال کی بہت ضرورت ہے،کھچی کینال سےبلوچستان کی لاکھوں ایکڑاراضی سیراب ہوگی۔

مزید : اہم خبریں