اپوزیشن قیادت مولانا فضل الرحمن کے کندھوں پر بندوق رکھ کر چلا نا چاہتی ہے، مولانا کا بیانیہ بنگلہ نمبر 22سے دوری:فردوس عاشق اعوان

اپوزیشن قیادت مولانا فضل الرحمن کے کندھوں پر بندوق رکھ کر چلا نا چاہتی ہے، ...
اپوزیشن قیادت مولانا فضل الرحمن کے کندھوں پر بندوق رکھ کر چلا نا چاہتی ہے، مولانا کا بیانیہ بنگلہ نمبر 22سے دوری:فردوس عاشق اعوان

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات ڈاکٹر فردوش عاشق اعوان نے کہاہے کہ مولانا فضل الرحمن کا بیانیہذاتی مفادات کیلئے ہے، 22نمبر بنگلے سے دوری فضل الرحمن کو حکومت مخالف تحریک چلانے پر اکسا رہی ہے،جیلوں میں قید اپوزیشن قیادت مولانا کےکندھوں پر بندوق رکھ کر چلا نا چاہتی ہے، حکومت گرانے اور لاک ڈاؤن کےارمان مولانا کے سینے میں دفن ہو جائیں گے ،ان کے کہنے پر مدارس کےطلباءبھی باہر نہیں آئیں گے، اس وقت مولانا کے پاس گیدڑ بھبھکیوں کے

علاوہ کچھ نہیں۔

سٹیٹ گیسٹ ہاؤس میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوش عاشق اعوان نے کہا کہ پرامن احتجاج سب کابنیادی حق ہے،تحریک انصاف نے آئین کی حکمرانی، اداروں کوبااختیار بنانےاورکرپشن کے خاتمہ کیلئےدھرنادیا تھا،فضل الرحمن حکومت کو گرانے کیلئےمدارس کےبچوں کو ڈھال کےطورپراستعمال کرناچاہتے ہیں،عمران خان کا بیانیہ قومی 

جبکہ فضل الرحمن کا بیانیہ ذاتی مفادات کیلئے ہے، جس وقتبھارت معصوم کشمیریوں کیخلاف تمام ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہو ایسے وقتمیں ملک کو یکجہتی کی ضرورت ہوتی ہے نہ کہ انتشار کی،اقوام متحدہ میں ملت اسلامیہ کا حقیقی چہرہ متعارف کرانے پر پاکستان عالمی سطح پر کلیدی حیثیتاختیار کر چکا ہے,ملک آگے کی طرف بڑھ رہا ہے اور معیشت کے اہداف پورے ہو رہے ہیں،بلاول اور زرداری کی باتوں میں تضاد ہے یوں لگ رہا ہے کہاپوزیشن مولاناکے ساتھ چوہے بلی کا کھیل کھیل رہی ہے،وزیر اعظم سوموارکو چین کا دورہ کر رہے ہیں جو دو طرفہ تجارت اورکشمیر کے ایشوپر نہایتاہمیت کا حامل ہے،وزیراعظم کی کوششوں سے کرکٹ دوبارہ پاکستان آئی ہے اوروہی سری لنکا کی ٹیم جس پر حملہ ہوا تھا آج محفوظ پاکستان میں کھیل رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملیحہ لودھی کو ان کے عہدے سے نہیں ہٹایا گیا بلکہ انکی مدت ملازمت ختم ہو گئی تھی جس پرانہیں واپس بلایا گیا،وزیر اعظم اقوام متحدہ میں ملت اسلامیہ کا حقیقی چہرہ متعارف کروا کر آئے ہیں جس سے پاکستان عالمی سطح پرکلیدی حیثیت اختیارکرچکا ہے اوراس وقت دنیا کے 5 براعظموں کی قیادت کی نظریں پاکستان کی طرف مرکوز ہوگئی ہیں،ملک آگے بڑھ رہا ہے،معیشت کے اہداف پورے ہورہے ہیں اورنحوست کے بادل چھٹ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگلے ماہ سے کرتار پورراہداری کوکھول دیا جائیگا جس سے پاکستان کا مثبت چہرہ پوری دنیا کےسامنے ہو گا،ہم ایئرپورٹس پر ایسے اقدامات کر رہے ہیں جس سے بیرون ملکآنیوالے سیاحوں اور تاجروں کوکوئی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔انہوں نےکہا کہ وزیر اعظم عمران خان کے ویژن کے مطابق پہلی دفعہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت مدرسہ ریفارمز پروگرام لایا گیا اور مدرسہ کے طلبہ کے ہاتھوں میں جدید ٹیکنالوجی اور یکساں نصاب تعلیم دیا گیا اور وہ مدارس کےطلباءوزیراعظم کے مشن کے ساتھ جڑ کر پاکستان کوترقی یافتہ ممالک کی صف میں شامل کررہے ہیں جبکہ دوسری طرف مولانا فضل الرحمان جب سے سیاست میں آئے ہیں مذہب کارڈ کوسیاست کیلئے استعمال کر رہے ہیں اور ایسی دوجماعتیں جو  نیب اور عدالتوں سے سزائیں کاٹ رہی ہیں اور جیلوں میں بیٹھ کر مولاناکے کندھوں پربندوقیں چلا رہی ہیں۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ اس وقت کشمیر پوری دنیا میں ایشو بناہوا ہے،وزیراعظم کی پالیسیوں سے مقبوضہ کشمیر میں قید مسلمان عمران خان کو نجات دہندہ سمجھ رہے ہیں اورایسے موقع پر ان کشمیریوں کے زخموں پر مرہم رکھنے کی بجائے بے وقت راگ الاپنے کاجوفیصلہ اپوزیشن نے کیا ہے وہ عوام کے جذبات کے منافی ہے،مولانا کابیانیہ قوم کا نہیں بلکہ اقتدار کی ہوس کا ہے اور حکومت ایسے تمام ہتھکنڈوں سے آگاہ ہے۔انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری کچھ کہتے ہیں جبکہ آصف زرداری کچھ کہتے ہیں،یوں لگ رہا ہے کہ جیسے اپوزیشن مولاناکے ساتھ چوہے بلی کاکھیل کھیل رہی ہے۔ فردوس عاشق ایوان نے کہاکہ چین ہمارا سٹرٹیجک پارٹنر ہے ،جہاں بھی ضرورت ہوئی چین نےہماری مشکلات دور کرنے

میں اہم کردارادا کیا اور اب وزیراعظم عمران خان سوموارکو چین جارہےہیں جہاں دوطرفہ تجارت اور سی پیک کے علاوہ کشمیر ایشو پر بات کی جائیگی،جہاں چین کی طرف سے ہمیں پہلے ہی سپورٹ حاصل ہے،یہ دورہ اس لحاظ سے بھی اہمیت کا حامل ہے کہ وہاں لائن آف کنٹرول پر خلاف ورزیاں اور شہری آبادی کونشانہ بنانے کے حوالے سے خدوخال طے کئے جائیں گے تاکہ ریجن اور دنیابھر میں ہم ایک موقف پیش کرسکیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے زراعت کےشعبہ میں ریکارڈ بجٹ مختص کیا اور صوبائی حکومتوں کو بھی اس میں اپناکردار ادا کرنے کیلئے پابند کیا تاکہ عام کسان کو سستے بیج،سستی کھادمہیاہو۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ آج کا پاکستان محفوظ پاکستان ہے اوروزیراعظم کی کوششوں سے کرکٹ دوبارہ پاکستان واپس لوٹ آئی ہے،وہی سریلنکا کی ٹیم جس پر حملہ ہوا تھا آج پاکستان میں کھیل رہی ہے،کھیل کےمیدان آباد ہونگے توہسپتال ویران ہونگے۔ ایک سوال کے جواب میں فردوس عاشقاعوان نے کہاکہ حکومت صحافیوں کے ساتھ ہے اور ان کے حقوق کیلئے مثبتاقدامات کر رہی ہے۔ایک اور سوال کے جواب میں فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ وزیراعظم اور وزرائے اعلیٰ ٹیم لیڈر ہوتے ہیں اور ان کو اختیار حاصل ہوتا ہےکہ وہ کسی وقت بھی ٹیم کے کسی بھی ممبر کوتبدیل کرسکتے ہیں۔

مزید :

قومی -