ڈپٹی کمشنر لاہور اور محکمانہ ایس او پی

ڈپٹی کمشنر لاہور اور محکمانہ ایس او پی

  

ڈپٹی کمشنر لاہور محمد اصغر جوئیہ نے ضلعی حکومت لاہورکو کرپشن فری بنانے کا عزم کر لیا۔میرٹ کی بنیاد پر ناصرف ضلعی انتظامیہ کا خود احتسابی کا عمل شروع کردیا ہے بلکہ اب ضلعی انتظامیہ عوام کے حقوق اور عوام کی ذمہ داریوں پر بھی خصوصی توجہ دے گی۔

ضلع لاہور میں بطور ڈپٹی کمشنر لاہور کے فرائض کی ادائیگی نبھانے میں مصروف آفیسر محمد اصغر جوئیہ جہاں محکمہ اینٹی کرپشن میں بطورڈائریکٹر اینٹی کرپشن بہترین کام کرنے اور اپنی سخت گیر پالیسی کے باعث صوبے بھر کے مقبول ترین افسر بن گئے وہاں ایڈیشنل ڈی جی پی ایچ اے کے بعد ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اور پھر دیکھتے ہی دیکھتے ڈپٹی کمشنر لاہورکے اہم عہدے پر تعیناتی نے ان کی شخصیت اور ڈویژن کو بھی سب پر ظاہر کر دیا،ان کی انتھک محنت سے کام کرنے کی پریکٹس، پبلک انٹرسٹ کے لئے حقیقی معنوں میں اٹھائے جانے والے اقدامات اور عملی طور پر محکمہ کی خامیوں کو دور کرنے کی جدوجہد بھی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے۔ کراچی، سندھ اور پنجاب کے دیگر اضلاع میں کام کر نے کے بعد صوبے پنجاب کے ضلع لاہور کی سب سے اہم ترین پوسٹ کی ذمہ داری پر براجمان ہونا درحقیقت اللہ تعالیٰ کی ان پر خاص کرم نوازی ہے ڈینگی، ٹی 20انٹرنیشنل کرکٹ میچزز کی سکیورٹی اور انتظامات کے علاوہ پرائس کنٹرول سمیت ہر روز ضلعی انتظامیہ، ریونیو کے معاملات پر بھی اس وقت گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔

ڈپٹی کمشنر لاہور محمد اصغر جوئیہ کے پاس ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو کا بھی چارج ہے اور صبح سے لیکر شام تک ان کے کام کرنے اور بطور ڈپٹی کمشنر کام لینے کے انداز سے میرا دعویٰ ہے کہ محمد اصغر جوئیہ بھی نسیم صادق کی طرح غیر معمولی طور پر مقبولیت اختیار کر جائیں گے اگر محمد اصغر جوئیہ 3سے 4ماہ بطور ڈپٹی کمشنر ضلع لاہور میں تعینات رہے تو محکمہ ریونیو اور ضلعی انتظامیہ کے وہ تمام کام جو تاخیری حربوں سے سست روی کا شکار کر دیئے جاتے ہیں جان بوجھ کر التوا میں ڈالے جاتے ہیں وہ تمام کاموں کی برق رفتاری سے لوگ دنگ رہ گئے ہیں۔ اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر لاہور محمد اصغر جوئیہ نے ضلعی حکومت کو زمینی حقائق قواعد و ضبط اور محکمانہ قوانین کے مطابق ڈھالنے کے لئے نئی ایس او پی متعارف کروا دیئے ہیں۔

میری اطلاعات کے مطابق آنیوالے دنوں میں ضلع لاہور میں ریونیو ریکارڈ کی اپ گریڈیشن کے لئے جہاں اسسٹنٹ کمشنرز صاحبان ماہانہ بنیادوں پر ریونیو ریکارڈکی انسپکشن کرتے ہوئے دیکھائی دیں گے وہاں اراضی ریکارڈ سنٹرز کی مانیٹرنگ اور ایس او پی پر بھی سو فیصد عمل کرواتے ہوئے نظر آئے، ریکوری،ریونیو افسران کے انتقالات کے دورہ پروگرام،اور سرکاری جائیداوں کے تحفظ کی سو فیصد بھی ذمہ داری بھی اسسٹنٹ کمشنرز کے اوپر عائدہو گی اور وہ اس کے جواب دے ہوں گے،اس طرح پولیو،شجر کاری، تجاوزات کا خاتمہ کے علاوہ بھی بے تحاشہ منصوبہ جات ہیں جن پر تیزی سے ورکنگ کی جا رہی ہے میری دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ ڈپٹی کمشنر لاہور کے نیک نیتی سے کئے جانے والے اقدامات پر ان کو ثابت قدم رکھے اور وہ ضلع لاہو ر میں بطور ڈپٹی کمشنر لاہور ایسے اقدامات کر جائیں کہ عوام الناس کیساتھ ساتھ حکومت کے لوگ بھی ان کی مثالیں دیں تاہم بہت سارے چیلنجز کا ان کو اب بھی سامنا ہے اور ان کی ناک کے نیچے بہت سارے کام اب بھی ایسے ہو رہے ہیں جن پر فوری نوٹس لینا اور ان غیر قانونی کاموں کی روک تھام کرنا بھی بہت ضروری ہے جن کی آئندہ کالم میں واضح نشاندہی کرتے ہوئے آگاہ بھی دوں گا۔محمد اصغر جوئیہ کا شمار ان افسران میں ہوتا ہے جو اپنے ملک سے انصاف کرتے ہوئے قوم کی امنگوں کے مطابق حکومتی ویژن کو ڈھالتے ہیں۔میری اطلاعات کے مطابق آئندہ آنے والے دنوں میں مار دھاڑ، کرپشن کی پالیسی اختیار کرنے والے افسران کا محاسبہ کیا جائے گا۔لینڈ ریونیو ایکٹ، رجسٹریشن ایکٹ پر سو فیصد عمل کروایا جائے گا۔پرچہ رجسٹری قانون پر عمل کرتے ہوئے ایک نئی مثال قائم کر دی جائے گی۔صوبائی دارالحکومت کو وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار ویژن کے مطابق پاک صاف اورکلین اینڈ گرین بنایا جائے گا۔

مزید :

رائے -کالم -