بھارت کا امریکی سینیٹر کو مقبوضہ وادی بھجوانے سے انکار،پاکستان کی آزاد کشمیر کے دورہ کی دعوت

بھارت کا امریکی سینیٹر کو مقبوضہ وادی بھجوانے سے انکار،پاکستان کی آزاد ...

  

ملتان (آئی این پی مانیٹرنگ ڈیسک) وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا کہ امریکی سینیٹرکومقبوضہ کشمیرکے دورے کی اجازت نہیں ملی لیکن امریکی سینیٹرکے آزادکشمیرجانے پرکوئی پابندی نہیں ہے،مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو اور محاصرہ جاری ہے،بھارت ایسا کیا چھپاناچاہتا ہے کہ  امریکی سینیٹر کو مقبوضہ کشمیر نہیں جانے دیا، امریکی سینیٹرزصرف مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کا جائزہ لینے جانا چاہتے تھے۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے امریکی سینیٹر کرس وان ہولین کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں میں ملوث ہے،61دنوں سے 80لاکھ بے گناہ کشمیریوں کو 9لاکھ بھارتی فوجیوں نے محاصرے میں لیا ہوا ہے۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے اقوام متحدہ میں مسئلہ کشمیر کو دنیا کے سامنے پیش کیا آج یورپی یونین، اقوام متحدہ سمیت تمام فورمز پر مسئلہ کشمیر پر بات ہورہی ہے۔ اس موقع پر امریکی سینیٹر کرس وان ہولین نے کہا کہ چاہتے ہیں کشمیرمیں قانون کی بالادستی ہو، انسانیت کا خیال رکھاجائے،مقبوضہ جموں و کشمیر اور خطے میں جو ہورہا ہے دنیا کو معلوم ہے، چاہتے ہیں کہ صحافیوں اور سیاستدانوں کو مقبوضہ کشمیر جانے کی اجازت ہو۔ انہوں نے کہا کہ سلامتی کونسل میں 54سال بعد مسئلہ کشمیر زیر بحث آیا، قیام امن کیلئے پاکستان کا کردار قابل ستائش ہے، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ثالثی کی پیش کش کی ہے،بھارت کے ساتھ بہت سے مسائل پر بات ہوئی ہے میں نے بھی کشمیر کے مسئلے پر بھارتی حکام سے بات کی ہے۔قبل ازیں پاکستان آمد سے پہلے بھارتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی سینیٹر کرس وان ہولین نے کہا کہ وہ مقبوضہ وادی کا دورہ کرکے وہاں کے زمینی حقائق جاننا چاہتے تھے۔امریکی سینیٹر نے بتایا کہ بھارتی حکومت نے انہیں یہ کہہ کر دورہ کرنے سے منع کردیا کہ مقبوضہ وادی کا دورہ کرنے کا یہ وقت درست نہیں۔انہوں نے کہا کہ جب چھپانے کی کوئی چیز نہیں تو وزیٹرز کو مقبوضہ وادی آنے سے کیوں روکا جارہا ہے؟ بھارتی حکومت ہمیں نہیں دکھانا چاہتی کہ مقبوضہ وادی میں کیا ہورہا ہے۔مزید برآں  عظیم روحانی پیشوا حضرت بہاؤالدین زکریاؒ کے 780ویں عرس مبارک کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ اولیاء کرام نے امن،محبت اوررواداری کادرس دیااورانہی کی کوششوں سے خطے میں اسلام کا پیغام عام ہوا،اولیاء کے آستانے آج بھی مرجع خلائق ہیں اورلوگ یہاں سے فیض حاصل کرتے ہیں۔اس موقع پر صوبائی وزیرتوانائی ڈاکٹر اختر ملک، وفاقی پارلیمانی سیکرٹری مخدوم زادہ زین قریشی، قومی اسمبلی کے چیف وہپ ملک عامرڈوگراورصوبائی پارلیمانی سیکرٹری ندیم قریشی بھی موجودتھے۔زائرین سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمودقریشی نے کہاکہ دنیاوی اقتدار عارضی ہوتا ہے اور روحانی سلسلے ابدی حیثیت رکھتے ہیں۔ مخدوم شاہ محمودقریشی نے مزید کہا کہ وزیرخارجہ کی حیثیت سے دنیا بھر کے فورمز پر کشمیریوں کے مسائل اجاگرکئے اور بھارتی جارحیت کو دنیا کے سامنے بے نقاب کیا۔

پاکستان/شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -